تین بار تاج محل بیچ ڈالنے والا ٹھگ مسٹر نٹور لعل

متھلیش کمارانڈیا کی ریاست بہار کے ضلع سیوان کے ایک گاؤں بانگڑہ میں 1912 میں پیدا ہوا۔ متھلیش کے والد ریلوے میں ایک چھوٹے ملازم تھے اور خود پیشے کے اعتبارسے وکیل تھا۔ پڑھنے کے حوالے سے کوئی بہت لائق بچہ نہیں تھا اس کا زیادہ وقت فٹ بال اور شترنج کھیلنے میں نکلتا تھا۔ جب وکالت سے اس کا کچھ نہ بنا تو اس نے وکالت چھوڑ کر ایک نیا کام شروع کیا تھا وہ تھا لوگوں کو ٹھگنے کا کام۔ وہ بھارت کا سب سے مشہور ٹھگ بن گیا تھا اس کے ٹھگنے کے انداز ایسے تھے کہ جیسے آپ کسی ناول میں پڑھ رہے ہوں لوگوں کو کروڑوں کا چونا لگانے والا کہتا تھاکہ میرا کیا قصور ہے کہ میں تو جھوٹ بول کر پیسے ٹھگتا ہوں لوگ خود ہی پیسے دے دیتے ہیں۔

وہ ایک ایسا شاطر انسان تھا جس نے بھارت کی سب سے مشہور بلڈنگز کو بیچ دیا۔ تین بار تاج محل، دو بار لال قلعہ، راشٹرپتی بھون، سنست بھون اور اس میں موجود 545 ممبرز کے ساتھ بیچ دیا۔ متھلیش بھیس بدلنے کا ماہر انسان تھا ایک دفعہ اس نے انڈیا کے صدر ڈاکٹر راجندر پرساد کا بھیس بدل کرلوگوں کو ٹھگ لیا تھا۔ جعلی ڈگری بنوا کر وہ ایک گورنمنٹ سکول میں پرنسپل بن گیا وہاں موجود بچوں کے بارے میں معلومات لے کر ان کے گھر والوں سے لاکھوں روپے بٹور لیے تھے۔

Read more

اساتذہ کا عالمی دن اور پاکستان

5 اکتوبر کو ہر سال دنیا میں اساتذہ کا عالمی دن منایا جاتا ہے اس دن کے منانے کا مقصد دنیا بھر کے اساتذہ کو سلام پیش کرنا ہے اور ان کے مقام کو معاشرے میں اجاگرکرنا ہے۔ ایک انگریزی مقولہ ہے کہ استاد وہ مینارہ نور ہے جو بچے کو راستے کو روشن کرتا…

Read more