نظریاتی چوہا دوڑ میں، میں بھی اک چوہا تھا

مجھے اپنے گھر میں، اک مناسب سا آزاد ماحول ملا۔ مگر ریاست کا تخلیق کردہ بیانیہ گھر سے باہر پوری شدت سے موجود تھا۔ اس بیانیہ کے تحت، ہندوستان ہمارا دشمن تھا، ہندو بہت برے، تنگ ذہن اور سازشی لوگ تھے جو اپنے گھر بھی تنگ بناتے تھے، جبکہ مسلمان کشادہ دل تھے اور ان کے گھر بھی کھلے ہوتے تھے (مطالعہء پاکستان)، سکھوں اور ہندوؤں نے تخلیقِ پاکستان کے وقت مسلمانوں کو چن چن کر کاٹ مارا، جبکہ بٹوارہ کی لکیر کے اِس جانب، مسلمانوں نے اپنی حفاظت میں سکھوں اور ہندوؤں کو اس پار پہنچایا (مطالعہء پاکستان و عام فہم خیال تھا)، پاکستان کو اللہ نے سب کچھ دیا ہوا تھا (میری مٹی میں لعلِ یمن)، پاکستان اسلام کا قلعہ تھا اور مسلم دنیا کا رہنما تھا (اسلامی سربراہی کانفرنس 1974)، پاکستانی افواج دنیا کی بہادر ترین افواج تھیں جس میں ایک مسلمان سپاہی، دس ہندوؤں پر بھاری تھا اور اگر وہ مسلمان سپاہی مجھ جیسا نکما مسلمان نہ ہو، بلکہ محترم جنرل ضیاءالحق غازی شہید جیسا مسلمان ہو تو وہ سو ہندوؤں پر بھاری تھا (اے مردِ مجاہد جاگ ذرا، اب وقت شہادت ہے آیا)، پاکستانی قوم دنیا کی ذہین و محنتی ترین قوم تھی جس کے مقدر میں مسلم دنیا اور اس خطے کے لیے اک رہنما کردار ادا کرنا تھا (ہم تا بہ ابد سعی و تغیر کے ولی ہیں)۔

Read more

روحانی جمہوریہ پاکستان، الحمدللہ!

آج کل میری ریاست پیر پرست بریلوی یاروں کے ویسے ہی وارے وارے جا رہی ہے جیسے پچھلے چالیس سال سے دیوبندی اور سلفیوں کے وارے وارے جا رہی تھی۔ میں چونکہ اک ڈرپوک اور گمراہ انسان ہوں، تو اسلام آباد کی برستی ہوئی رومانوی بارش میں سوچا کہ کیوں نہ ریاست کی ہاں میں…

Read more

احمدیوں کو معاف کر دیجیے

تحریر سے قبل، پیشِ تحریر: میں احمدی نہیں، شکریہ۔ مہاتما گاندھی کہہ گئے تھے کہ کسی بھی معاشرے کے مہذب ہونے کا اک پیمانہ یہ ہے کہ دیکھا جائے وہ معاشرہ اپنے ہاں موجود جانوروں کو کیسے ٹریٹ کرتا ہے۔ انسانی تہذیب تھوڑا آگے بڑھی تو جدید جمہوریت کی پٹڑی پر چڑھے ممالک نے یہ…

Read more

لڑکیاں شادی کب کریں؟

یہ خیال میں اپنی دونوں بیٹیوں، یسریٰ فاطمہ اور نور فاطمہ کے نام کرتا ہوں۔ مجھے ابھی تک باپ-بیٹی سے زیادہ خوبصورت رشتے کی تلاش ہے۔ اس تلاش میں، میں ناکام ہوں اور سوچ کا اک گوشہ کہتا ہے کہ میں ناکام ہی رہوں گا۔ ہمارے معاشرے کے بہت دلدر ہیں۔ بہت۔ شاید ہر اس…

Read more

پاکستان کا کوئی جمہوری مستقبل نہیں ہے

وقار بن الہٰی اپنی کتاب ”ماں میں تھک گیا ہوں“ میں لکھتے ہیں کہ (ماخوذ) ہم اساتذہ، جنرل ایوب کے مارشل لا کے خلاف راولپنڈی میں اک مسلسل بھوک ہڑتالی احتجاجی کیمپ لگا کر بیٹھے ہوئے تھے اور اس بات کو بہت سے دن ہو چکے تھے۔ تھکن تھی، پیاس تھی، بھوک تھی، مگر اک…

Read more

پاکستان کی ضائع شدہ نسلیں اور انقلاب

پاکستان کو پاکستانی الیکشن کے ذریعہ فتح کر لینے پر راقم محمکہ زراعت اور پاکستان ڈیمز ڈیپارٹمنٹ کو بالخصوص مبارکباد پیش کرتا ہے اور پرسوں سے اس انتظار میں ہے کہ سیٹھ۔ میڈیا کے اک المشہور اینگر پرسن کے بچوں کا چوری ہونے والا دودھ اب نہر کی شکل میں کب میرے گھر کے سامنے…

Read more

پاکستان بچانا ہے تو خلائی مخلوق کو ہرانا ہے!

سنہ 2005 میں، میں محترمی شاہد پرویز گیلانی، جو تب جماعت اسلامی میں تھےکی میزبانی میں، اسلام آباد کے اک مشہور ریسٹورنٹ، پاپا سالِس میں جناب لیاقت بلوچ صاحب سے ملا۔ گپ شپ کے دوران بات جماعت کی پرویز مشرف صاحب کے لیے حمایت، اور پھر اک شارٹ کٹ کے ذریعے سے فوجی آمروں کی…

Read more

پاکستانیو: اپنے ووٹ کا پہرہ دو!

عام احمقانہ بیانیہ کے برعکس، جو پچھلے ستر سال سے جاری ہے، پاکستان آج کل واقعتاً ہی نازک دور سے گزر رہا ہے۔ یہ دور حقیقت میں پُرخطر ہے اور اس بات کو بار بار ثابت کرتا چلا جا رہا ہے کہ میرے دیس اور میرے لوگوں کے غم، باہر والوں کی زیادتیوں سے زیادہ،…

Read more

پاکستان تحریک انقلاب کا الیکشن ہارنا کیوں ضروری ہے؟

محترم جناب جنرل حمید گل مرحوم نے سنہ 1996 اور 1997 میں پاکستان کی ”نظریاتی سرحدوں“ کے خود ساختہ ترجمان اور محافظ اک لاہوری اخبار میں کالمز کی اک سیریز شروع کی اور پاکستان کو ”نرم انقلاب“ کی اصطلاح دی۔ پنشن سے پیار ہو، سماج میں، بھلے بے سمت جذباتیت پر ہی کھڑی مگر عقیدت…

Read more

میں بلوچستان سے محبت کرتا ہوں

تین برس قبل، بلوچ یاروں کی گالیاں اور اپنے بارے میں سازشی نظریات سُن سُن اور سہہ سہہ کر یہ فیصلہ کیا تھا کہ بلوچستان جانے، بلوچ جانیں کہ جب حسن ظن کا جواب دشنام ہو اور خلوص کے نامے بھی مسلسل طنز کے نشتر سے کھولے جائیں تو خاموشی ہی بہتر محسوس ہوتی ہے۔…

Read more