پاکستان تحریک انقلاب کا الیکشن ہارنا کیوں ضروری ہے؟

محترم جناب جنرل حمید گل مرحوم نے سنہ 1996 اور 1997 میں پاکستان کی ”نظریاتی سرحدوں“ کے خود ساختہ ترجمان اور محافظ اک لاہوری اخبار میں کالمز کی اک سیریز شروع کی اور پاکستان کو ”نرم انقلاب“ کی اصطلاح دی۔ پنشن سے پیار ہو، سماج میں، بھلے بے سمت جذباتیت پر ہی کھڑی مگر عقیدت…

Read more

میں بلوچستان سے محبت کرتا ہوں

تین برس قبل، بلوچ یاروں کی گالیاں اور اپنے بارے میں سازشی نظریات سُن سُن اور سہہ سہہ کر یہ فیصلہ کیا تھا کہ بلوچستان جانے، بلوچ جانیں کہ جب حسن ظن کا جواب دشنام ہو اور خلوص کے نامے بھی مسلسل طنز کے نشتر سے کھولے جائیں تو خاموشی ہی بہتر محسوس ہوتی ہے۔…

Read more

جنرل قمر جاوید باجوہ صاحب کے نام دوسرا اور آخری کھلا خط

محترم جناب جنرل باجوہ صاحب: اسلام علیکم۔ آپ کے نام یہ میرا دوسرا مکتوب ہے۔ پہلے کھلے خط کے بھی آپ تک پہنچنے کی امید نہ تھی اور اس کی بھی نہیں۔ مگر سیاست اور تاریخ کے ساتھ رومانویت کا اک مزاج ہے جو مجھے کم از کم اپنی حد تک ہی اپنے تئیں تاریخ…

Read more

میرا ووٹ اب نواز شریف کی امانت ہے

جب 1956 میں باڑ نے کھیت کو کھانا شروع کیا تو اس وقت پاکستان میں اصلی اور زمین سے جڑے ہوئے سیاستدانوں کی اک فصل موجود تھی، جن کی اپنی کمیاں، کوتاہیاں اور ساتھ ساتھ میں خوبیاں بھی تھیں۔ تسمے کی نوک سے لکھی گئی تاریخ میں پاکستانی بچوں کو مگر یہ پڑھایا گیا کہ…

Read more

غلاظت سے بنا ہوا پلاسٹک شاپنگ بیگ اور ہم پاکستانی

پلاسٹک کے سمندر پر تیرتا پاکستان اسلام، قومیت، حب الوطنی کے جذبات اور قومی ترانے کا تو بالکل بھی معلوم نہیں، مگر جن چیزوں کے بارے میں بھرپور یقین ہے کہ یہ پاکستانیوں کو اک دوسرے کے ساتھ جوڑتی ہیں، ان میں سرِ فہرست ”شاپڑ بیگ“ سے محبت، اشیاء کو استعمال کر کے انہیں اک…

Read more

کشمیر: کیا جنگ ہی حل ہے؟

مجھے ایجنٹ وغیرہ ڈیکلئیر کرنے سے پہلے، آئیے ذرا حقائق دیکھتے ہیں۔ انڈیا کے زیرتسلط کشمیر کی آبادی تقریبا سوا کروڑ ہے۔ اور اس خطہ نے پچھلے تیس سالوں، یعنی سنہ 1989 سے مسلسل تشدد کا سامنا کیا ہے۔ گویا تقریبا دو نسلیں ہیں جو تشدد کی فضا میں بڑی اور بڑھی ہیں۔ پچھلے تیس…

Read more

جنرل قمر جاوید باجوہ صاحب کے نام اک کھلا خط

محترم جناب جنرل صاحب: میری عمر اب چھیالیس برس ہے اور میں عین اسی نسل سے تعلق رکھتا ہوں جس کے ضائع ہونے کے بارے میں آپ نے چند ماہ قبل جرمنی میں خطاب کرتے ہوئے کہا تھا کہ (ماخوذ) چالیس سال قبل افغانستان میں تشدد کی حمایت کرنا پاکستان کی غلط پالیسی تھی اور…

Read more

میرے چند پچھتاوے

میری زندگی کا اک بہت دلچسپ مرحلہ مارچ 2015 سے شروع ہوا اور فروری 2017 پر ختم ہوا۔ اس مرحلے کے دوران چند اک بہت کلیدی سبق سیکھے اور ان تمام میں سے سب سے عمدہ سبق یہ پڑھا کہ اب ساری عمر بات جو بھی ہو، جیسی بھی ہو، کسی قسم کی جھجھک کے…

Read more

گولی سب پر چلے گی

خالد حسن، پرائم منسٹر بھٹو کے پہلے پریس سیکریٹری تھے۔ سنہ 2002 میں انہوں نے اپنی زندگی کی چار محبتوں پر اک کتاب تحریر کی اور اس کا ٹائٹل A Rearview Mirror رکھا۔ کتاب میں وہ پرائم منسٹر بھٹو کے ساتھ اپنی اک مختصر گفتگو کا ذکر کرتے ہیں جو اس موقع پر تھی جب…

Read more

ایک پنجابی، بلوچ کو خدا حافظ کہتا ہے

میرے بلوچ بھائی، اسلام علیکم: تم نہیں جانتے، مگر بلوچستان سے میرا رشتہ، میری پیدائش سے بھی پہلے کا ہے۔ میری والدہ، محترمہ نسیم اختر بتایا کرتی تھیں کہ انکے بڑے بھائی، میرے مرحوم ماموں، محترم مقبول احمد بٹ صاحب کوئٹہ میں ریلوے کی جانب سے گارڈ بھرتی ہو کر وہاں شاید انیس سو پچاس…

Read more