نوناری صاحب سے سوال ہے

یہ ایک لمبی مسافت ہے۔ تھکا دینے والی، مستقل بے یقینی سے منسلک۔ آپ ستمبر میں کاغذ بھجواتے، ایک ابتدائی طبی معائنہ کیا جاتا، اکتوبر کی آخری تاریخوں میں امتحان ہوا کرتے، دسمبر کے وسط میں انٹرویو ہوتا پھر ایک تفصیلی طبی معائنہ ہوتا اور اگر آپ ان سب مراحل میں کامیاب ہوئے ہوتے تو…

Read more

سروور کی رنگین مچھلیوں کو جان کا خوف نہیں ہے

گریندر پال سنگھ جوسن کی درخواست تھی کہ میں پشاور کے کسی چرنجیت سنگھ سے سر پہ اوڑھنے والے رومال وصول کروں اور ریاض صاحب تک پہنچا دوں جو امریکہ میں ان کے ہمسائے تھے اور ان دنوں پاکستان میں تھے۔ میں نے چرنجیت سنگھ کو فون کیا تو انہوں نے میرے لہجے میں سفر…

Read more

جب ہیر، باہو، چندر بھان اور عبدالسلام سے جھنگ چھوٹا

جھنگ کی زرخیزی کو وقت کے علاوہ بھی کوئی کلر چاٹ رہا ہے۔ جس مٹی سے صوفی سرشار ہوئے ، وہاں قبروں کے کتبے اکھاڑنے کی نوبت کیونکر آئی۔ یہ شہر جیسا تھا ویسا کیوں نہیں رہا اور جیسا ہے ویسا کیوں ہے، اس سوال کے جواب میں اور بھی بہت سے جواب پوشیدہ ہیں۔…

Read more

صوبے دار شبیر، منظور پشتین اور سرخ جھنڈی

شبیر صاحب، ایک ایسے حوالدار تھے جن کی فراست اور نقشہ بینی پہ کرنل صاحب کو پورا اعتماد تھا۔ ان کی دو باتیں مجھے کبھی نہیں بھولتیں، گرقستان اور لال جھنڈی ۔ پنوں عاقل میں سال کے تین موسم ہوتے تھے۔  گرمی، مزید گرمی اور شدید گرمی۔ 2003 کی گرمیوں کا موسم، 2003 کی مزید…

Read more