لبرل آنٹی کی ولگر کہانی

بدھسوا تنہا بیٹھی سوچ رہی تھی کہ سدھارت بدھا کیسے بن گیا۔اس کو نروان کیسے مل گیا۔ برہمنیت کا غرور خاک میں ملا نا کو ئی آسان کام نہیں تھا ۔ نا ہی بدھی ریاضت میں کو ئی آسانی تھی ۔ ضبط کے بھی روزے کی انتہا ، تو پھر نروان کیسے اور کیونکر مل…

Read more

کتاب میلہ ۔۔۔ نئے مانجھی اور نئے زمانے کے پتوار

نومبر کا آغاز ہے۔ خنک ہوائیں میدانی علاقوں میں ہوائی آلودگی کے باعث میلی میلی سی ترقی کے نام پہ اتراتی پھر رہی ہیں۔ موسم نے قوم کی دکھتی رگ پہ مسیحائی ہاتھ رکھ دیا ہے۔ مگر ساتھ ہی بجلی اور گیس کے یونٹ کی بڑھتی ہوئی قیمت نے گویا زخم پر نشتر بھی رکھ…

Read more

اپنے بچو ں کی عزت کیجئے

بچے وہ ان دیکھے بیج ہیں جن کا پھل ہم سب بہت عمدہ کھانا چاہتے ہیں۔ نہ صرف توقع کرتے ہیں کہ وہ ہمارا نام روشن کریں گے، ہماری خدمت کریں گے، ہمارے تابعددار ہوں گے بلکہ ہم یہ دعوی کرتے ہیں۔ کیونکہ ہم خود کو اپنے والدین سے اچھا والدین سمجھ رہے ہوتے ہیں۔…

Read more

بانیہ

یہ بہت حسین خنک و نم رات تھی۔ ستارے آسمان پر مسکرا رہے تھے۔ چاند آسما ن پر اور زمین پر بہت دن بعد آیا تھا۔ سو مست مسرور سے نیم سفید بادل اس کے گرد مدھر رومانوی رقص میں اِترا رہے تھے۔ وہ چاند تھا اپنی مستی میں مست، نازاں۔ کہ چاہے جانے کا…

Read more

حجلہ عروسی میں لب بستہ دلہن اور محاذ جنگ پر کامرانی کی لب ریز دعا

ہم فوج میں کپتان ہوئے تو گھر والوں نے ہماری شادی کی ٹھان لی، مگر بڑے بھائیوں نے عجب ظلم ڈھائے، کہ ایک نے شادی کا رِسک ہم پہ لینے کے بعد، اپنی شادی کا فیصلہ کرنے کا ارادہ ظاہر کیا اور دوسرے نے شادی نہ کرنے کا اعلانِ عام سنا دیا۔ ہم چھوٹے تھے…

Read more

حور اور لنگور کی تصویر

چھوٹی سی بیٹی کھیل رہی تھی۔ شوہر نے بیوی سے کہا دیکھو ایک دن کو ئی لنگور دولہا بن کے آئے گا اور اسے بیاہ کر لے جائے گا۔ بیوی نے بہت پیار سے کہا ”آپ کو یاد ہے ایک دن آپ بھی یونہی دولہابن کے آئے تھے“ لیکن جب یہ لمحہ آتا ہے۔ رشتے…

Read more

پری پیڈ میٹر۔۔۔۔۔۔نان ڈیجیٹل عوام

’’ ابے یار بس تو دیکھ تیرا جگر تیرے لئے کیا کرتا ہے ۔ایک بار اپنے بھائی کو حکومت میں آلینے دے پھر دیکھنا گنے کے کھیت میں چنے بھی اْگنے لگیں گے،چاولو ں کی فصل بغیر پانی کے لہلہائے گی،، یہ بات اس نے نجانے کس بے اعتمادی سے کہی تھی ۔ مگر کوئی…

Read more

حکومت کی بْو ہوتی ہے

’’حکومت کی بْو ہوتی ہے۔ جو پھیلتی رہتی ہے۔ مشامِ جاں میں سوئیوں کی طرح چبھتی ہے۔ شریانیں اڈھیر دیتی ہے۔ نسلیں پھاڑتی ہے۔ سوچ مفلوج کرتی ہے۔ ضمیر کا گلا گھونٹتی ہے۔ قوی مضحمل کرتی ہے۔ حکومت مردار جسم کی طرح ملک کے تمام شہروں، گاؤں قصبو ں، کھلیانو ں، صحراؤں، پہاڑوں، ندیو ں،…

Read more

میرے پاپا سُپر ہیرو ہیں

 ”میرے پاپا سُپر ہیرو ہیں“ میری پانچ سالہ بھتیجی نے جب یہ بات مجھے کہی تو میری نس نس تک جیسے مٹھاس اتر گئی۔ آس پاس جیسے مہک پھیل گئی ۔ کتنا جادو ہو تا ہے ناں محبت کے لفظوں میں۔ میں نے مسکرا کر اسے کہا کہ "آپ کو پتا ہے آپ کے پاپا…

Read more

کْتے سو رہے تھے

بارش مسلسل ہو رہی تھی ۔اور مزار پہ کتوں نے پناہ لے رکھی تھی ۔ رات کا وقت تھا اس لئے زیادہ تر کْتے سورہے تھے۔ سن اور پڑھ رکھا تھا کہ انسا ن کی موت کا وقت اس کی زندگی کا آئنہ ہو تا ہے۔ سمجھنا بہت مشکل تھا ۔ لیکن وقت نے سمجھا…

Read more