صرف دو بچوں کی ممی اور ہمارا تجربہ

پچھلے دنوں ہم سب کے پیج پر ایک مضمون پڑھاتھا۔"ممی اور صرف دو بچے"۔ ایسا لگا جیسے کسی نے چوری چوری دل میں سیندھ لگا کر ہمارے درد کو چرایا اور سرراہ رکھ دیا۔ ممی اور ہمارا دکھ "سانجھا"سا لگا، ہمارا درد مشترک ہے۔ اس مضمون پہ قارئین کے کمنٹس بھی پڑھے، کچھ حق میں…

Read more

خوش رہنا ہے تو منافقت سیکھیے

آج کل ہر دوسرا فرد ڈپریشن کا شکار ہے، جسے دیکھیے وہی زندگی سے بیزار ہے۔ ڈپریشن بہت بری بیماری ہے، یہ مایوسی کی بگڑی شکل ہے، جس کو چمٹ جائے اس کی زندگی کا نقشہ بگاڑ کے رکھ دیتی ہے۔ بعض اوقات تو مریض کی جان تک لے لیتی ہے۔ اس بیماری نے ہماری…

Read more

ہاتھی کو گھڑے میں کیسے ڈالیں؟

ہمارے نانا کمال کے قصہ گو تھے، جب بھی ملتے نیا قصہ سناتے، قصے کے ساتھ کوئی نہ کوئی کہاوت بھی جڑی ہوتی۔ کچھ قصے غم دوراں میں کھو گئے، کچھ آج بھی ازبرہیں۔ نجانے کیوں آج وہ قصے بہت یاد آ رہے ہیں۔ شاید اپنے بچوں کے دادا کو دیکھ کر۔ ان کی عادت…

Read more

کیمروں کی نہیں، کمروں کی ضرورت ہے صاحب

سابقہ حکومت بھلائے نہیں بھولتی۔ اور بھولیں بھی تو کیسے؟ کہ ہر میدان میں اتنے کار ہائے نمایاں سر انجام دیے ہیں کہ گنتی ناممکن۔ حساب سے ہمارا کوئی لینا دینا ہی نہیں کہ اس لئے عدالتیں اور نیب ہی کافی ہیں۔ ہمارا کام تو فقط کچھ مسئلوں کی نشاندہی کرنا ہے جو سابقہ حکومت…

Read more

تبدیلی آ نہیں رہی، تبدیلی آ چکی ہے

آج کل ہر جگہ ایک ہی نعرہ سنائی دے رہا ہے۔ "تبدیلی آ نہیں رہی، تبدیلی آ چکی ہے"۔ بات تو سچ ہے! الیکشن 2018 ہو چکے، نئی حکومت آ چکی، نئے وزیر اعظم نے حلف اٹھا لیا ہے۔ نئی کابینہ آ چکی۔ نئے صدر کا انتخاب ہو گیا۔ سی ایم پنجاب کا انتخاب ہو…

Read more