پریم اور خدا

نیلے آکاش کو کاسنی رنگے بادلوں نے ڈھانپ رکھا تھا، اور دور اُفق پر جہاں دونوں جہان ملتے ہیں، وہاں ہلکی ہلکی سفیدی تیرتی تھی۔ یہ ہرے پتوں کا موسم تھا۔ ساون تھا؛ ساون میں جھولے تھے اور ایک دن تھا۔ روشنی تھی، موتیے کی باڑھ سے پھوٹتی خوش بو تھی۔ یہ ایک دن تھا۔…

Read more