انصاف کی بدبو دیتی لاش

یتیمی کہنے کو تو ایک لفظ ہے مگر صاحبو دراصل یہ ایک کیفیت ہے اور یہ کیفیت جب دل کو اپنی لپیٹ میں لے لے تو پھر یہ قبر تک جان نہیں چھوڑتی یہ حزن آپ کی ذات کا حصہ بن جاتا ہے مختلف شکلیں اور روپ دھارتا ہے مگر پیچھے وہی ظالم کیفیت کارفرما ہوتی ہے۔

بہت سے زخم ادھڑے پڑے ہیں، ساری فلم انکھوں کے آگے پھر سے چل رہی ہے جب یتیمی نے مرے دروازے پہ دستک دی تھی، وہ لاہور سے ماموں کی شادی میں شرکت کی مہینوں سے چلتی تیاریوں کے بعد ہماری گاڑی فیصل آباد کے لیے روانہ ہوئی جس میں زندگی کرتا کھیلتا مسکراتا پورا خاندان سوار تھا اور پھر کھڑلیانوالہ کے پاس بدترین ایکسیڈنٹ جس میں میری ماں کو بدترین چوٹیں آئیں۔ تب ہاں تب یتیمی ہمارے دروازے پہ ہلکی سی دستک دے رہی تھی۔

Read more

ادبی منظر نامہ 2018

ایک ایسا وقت جب یہ شور وغوغا بلند ہوکہ ادب پھل پھول نہیں رہا ، اُردو ادب اپنی موت مر رہا ہے ۔ کتاب کلچر کو نیٹ کی دنیا نے بُری طرح نگل لیا ہے۔ دنیا جو ایک بالکل نئی کروٹ لے چکی ان گزشتہ دو دودہائیوں میں ، نئے انداز اور رویے ہمارےدروازوں پر دستک دے رہے ہیں بلکہ دستک دے کر ہماری زندگی کا حصہ بن چکے ہیں۔ وہاں ان سوالوں کو اور آج کے ادب کو دیکھنے اور اس پہ بات کرنے کی پہلے سے زیادہ ضرورت ہے۔ اس بات پر غور کرنے کی اور ان مفروضوکو غلط ثابت کرنے کی کہ کیا واقعی اردو زبان زوال پزیر ہے۔

کیا اردو ادب تخلیق نہیں ہو رہا ، ایسا ادب جو بین الاقوامی ادب کا مقابلہ کر سکے۔ کیا کتاب کلچر ہمارے بیچ سےغائب ہو چکا ہے؟ کتاب کی جگہ واقعی نیٹ اور سوشل میڈیا لے چکا ؟

Read more