الیکشن کا دن۔۔۔غصہ اور بھڑاس نکالنے کا سنہری موقع

پانی نہیں ہے نلکے میں، نظر نہ آنا حلقے میں، ایف سی ایریا میں غصے سے بھری خواتین کا یہ احتجاجی نعرہ تھا۔ ”اس با ر تھوڑی مشکل ہوگی تمہیں، ہمیں اب منانے میں، اپنا آپ بچانے میں۔ “ یہ کہنا ہے کراچی کے علاقے موسی کالونی کی رہائشی بائیس سالہ سعدیہ کا جن کے…

Read more

یہ ”عسکری جھولے“ نہیں آسان اتنا ہی سمجھ لیجے

عسکری پارک میں جھولا گرنے کا واقعہ کافی افسوسناک ہے کیونکہ اس شہر میں بحیثیت رپورٹر میں نے تو کوئی ایسی تفریح گاہ نہیں دیکھی جہاں عوام جائیں اور خوشی سے واپس گھر کو لوٹیں۔ کبھی جو گلی محلے یا علاقے کے اچھے پارک ہوا کرتے تھے ان پر چند سال قبل سیاسی جماعتوں نے…

Read more

کیا باپ دوست نہیں بن سکتا؟

اسماء آج بہت اداس ہیں، شوہر کے مرنے کے بعد انھوں نے بہت حوصلے سے سخت حالات کا مقابلہ کیا لیکن ہمت نہ ہاری۔ لیکن بالآخر آج حوصلہ کر کے اپنے مرحوم شوہر کی الماری سے سارے کپڑے نکال کر ایک شیلٹر ہوم بھیج دئیے۔ کچھ کپڑے اس لئے رکھ چھوڑے کہ انھیں اپنی بیٹی…

Read more

نسٹ کے طالب علم محمد مرسلین کا معافی نامہ اور میرا ذاتی تجربہ

'' جو بھی عورت گھر سے باہر نوکری کے لئے قدم رکھتی ہے اسے مرد کی ہر بات سننا ہوگی کیو نکہ اس نے اپنے لئے ذلت کا راستہ خود چنا ہے ویسے بھی دفتر اور وہ بھی میڈیا میں کام کرنے والی لڑکیاں کون سی پارسا ہوتی ہیں''۔ یہ ایک جملہ نہیں ہے بلکہ…

Read more

چلو بھر پانی نہیں۔۔۔ ڈوب مرنے کے لئے سمندر بھی کم ہے

 بلوچستان میں موجود '' سپٹ کا ساحل'' اب بھی لوگوں کی پہنچ سے دور ہے۔ لیکن یہاں ابن آدم کی مہربانیاں ظاہر ہونا شروع ہوگئیں ہیں۔ یہی حال جیوانی کے ساحل کا ہے جہاں پلاسٹک سے بنی اشیاءجن میں پلیٹیں، بوتلیں، جوس کے ڈبے اور کھانے پینے کی اشیاءکے ریپرز شامل ہیں ساحل کے حسن…

Read more

میرے بچپن کی یادوں کے قاتل سنو

کراچی شہر اب وہ رہا ہی نہیں جو آج سے بیس برس قبل تھا، جہاں ٹھنڈی ہوا کے لئے ساحل نہیں گلی محلے کے کسی بھی پارک میں بیٹھ کر بھری دوپہر ہو یا پھر رات، جھولوں پر کھیلتے بچے ہواوں سے ہلتے بلکہ جھومتے ناچتے درختوں کو دیکھ کر آپس میں کہا کرتے تھے…

Read more

کچرے میں رزق تلاش کرتے سونے جیسے ہاتھ

”میں امیر ہونا نہیں چاہتا، امیر ہوجاؤ تو لوگ تنگ کرتے ہیں طرح طرح کی باتیں کرتے ہیں، چھیڑتے ہیں کہ یہ کیسے امیر ہوگیا؟ اتنا پیسہ کہاں سے آگیا اس کے پاس؟ میں یہی خوش ہوں اورساری زندگی یہی گزارنا چاہتا ہوں۔“ زندگی کا سادہ لیکن پختہ فلسفہ بیان کرنے والا دس سالہ صبیح،…

Read more

وہ مائیں جو باپ بھی ہیں

حسن صاحب نے چائے کی چسکیاں لیتے ہوئے بات شروع کی۔ میں شہر سے ایک ہفتہ باہر چلا جاوں تو میری بیوی کا رویہ فون پر ہی چڑچڑا محسوس ہونے لگتا ہے، بے وجہ الجھنا، لڑائی کا کوئی بہانہ ڈھونڈ لینا کچھ نہ ملے تو یہ کہہ دینا کہ آپ اچھے ہیں جو دوسرے شہر…

Read more

مزدور ہوں میں، مجھے تنخواہ دو

انسان کو اشرف المخلوق کا درجہ خدا نے دیا لیکن افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ زمینی خداوں نے انسان کو اس منصب سے محروم کر کے ایک کام کرنے والا جانور بنا ڈالا، جانور بھی وہ جو صرف اپنے اوپر بوجھ لادے جاتا ہے۔ لیکن اسے شکوہ کرنے کی اجازت نہیں، وقت پر چارہ…

Read more

یہ لو بیٹا موبائل، جاؤ اب گیمز کھیلو

سالار کی عمر ابھی تین برس ہے لیکن دوسرے بچوں کے مقابلے میں وہ قدرے ذہین ہے۔ اپنی من پسند چیز کیسے حاصل کرنی ہے یہ وہ خوب جانتا ہے ان دنوں اس کی سوئی دادی کے موبائل پر اٹکی رہتی ہے جسے حاصل کرنے کے لئے وہ دادی کو مکھن لگانے کے بعد اس…

Read more