بندے کا اللہ سے تعلق اور توکل

پچھلے دنوں صحیح بخاری کی ایک طویل حدیث نظر سے گزری جس میں حضرت کعب بن مالک رضی اللہ تعالٰی عنہ نے غزوہ تبوک میں اپنی عدم شرکت اور پھر اس غلطی پہ انھیں کیسے کیسے آزمایا گیا اور انھیں کیا سزا دی گئی، اس کی پوری تفصیل تھی۔ حضرت کعب بن مالک رضی اللہ تعالٰی عنہ نے بتایا کہ اپنی سستی کی وجہ سے میں غزوہ تبوک میں شامل نہ ہو سکا، جس پہ رسول اللہ صل اللہ علیہ و آلہ و سلم ناراض ہو گئے۔ سب مومنین نے ان سے بول چال بند کر دی۔ بنو غسان سے خط ملا کہ تم ہمارے پاس آ جاؤ تمھارے صاحب یعنی رسول اللہ صل اللہ علیہ و آلہ و سلم تم سے زیادتی کر رہے ہیں۔ کیا تم ذلیل پیدا ہوئے ہو۔ ہم تمھیں عزت دیں گے۔ حضرت کعب رضی اللہ تعالٰی عنہ نے خط جلا دیا۔ اس طرح اور کئی امتحان بھی آئے، لیکن آخر 50 دن کی مسلسل توبہ کے بعد، اللہ اور رسول اللہ صل اللہ علیہ و آلہ و سلم نے انھیں معاف کرتے ہوئے بشارتیں دیں۔

Read more