یکجا ہوں، آخر کس بنیاد پر؟

انسان دوسرے انسانوں کے ساتھ کئی رشتے استوار کرتا ہے۔ کچھ وہ خود کرتا ہے اور کچھ قدرتی طور پر اس کے ہاتھ میں نہیں ہوتے۔ جیسے انسان کس رنگ و نسل میں پیدا ہوگا اس کی زبان کیا ہوگی وغیرہ وغیرہ۔ یہ رشتے اور پہچان جب انسان کی شناخت سے آگے نکل کر انسان…

Read more

عدالتوں میں انصاف یا انصاف میں عدالت

عدالتوں میں انصاف نہیں ہوتا بلکہ عدالتیں صرف قانون کی تکمیل کرتی ہیں۔ اب جس نظریہ اور عقائد سے بنا ہوا قانون ہوگا عدالتیں اسی کے لحاظ سے فیصلہ سنانے پر قادر ہوں گی۔ انصاف ایک بہت بڑی چیز ہے جس کا موقع ہر کسی کو ملتا ہے، اس لیے اس بات کو سمجھنا اہم ہے کہ عدالتیں انصاف نہیں قانون کی تکمیل کرتی ہیں، انصاف اور استحصال اس نظریہ میں پوشیدہ ہوتا ہے جس کے تحت تمام نظام کام کرتے ہیں۔

یہی وجہ ہے کہ اکثر عدالتوں میں کیا گیا فیصلہ عوام کے نزدیک انصاف کا معیار نہیں رکھتا کیوں کہ جس نظام میں ہم رہ رہے ہیں اس کی بنیاد میں انسان کے ساتھ انصاف کرنا شامل ہی نہیں۔ بلکہ سرمایہ درانہ نظام کی بنیادی فکر سرمایہ کے گرد گھومتی ہے اور قوانیں بھی اسی سیاسی و معاشی نظام کو نظر میں رکھ کر انسانی عقل سے بنائے جاتے ہیں۔ عوام انسان کی سطح پر دیکھتے ہوئے جبلتی بنیادوں پر ہی کئی فیصلوں کو عدل و انصاف کے کٹہرے سے باہر سمجھتے ہیں۔

Read more