اقبال کی مظلومیت

اس ملک میں مظلومیت کا دعویٰ بہت لوگ کرتے ہیں اور کچھ تو اس کے عوض مدت سے رائے دہندگان کے ووٹ بھی حاصل کرتے آئے ہیں۔ ہماری سوچی سمجھی رائے میں مظلومیت کا ایک پیمانہ یہ ہے کہ مظلوم شخص اپنے بارے میں کہی جانے والی بات کا کوئی جواب نہ دے پائے۔ یہ…

Read more

یادش بخیریا اور صومالی عرفیتیں

انگریزی کے لفظ ”ناسٹیلجیا“ کا کوئی مناسب اردو متبادل ذہن میں نہیں ہے۔ محترم مشتاق احمد یوسفی صاحب نے اسے ”یادش بخیریا“ کا نام دیا تھا۔ جو تھوڑا بہت سوانحی ادب مختلف زبانوں میں پڑھنے کا موقع ملا ہے اس میں ”یادش بخیر“ کا تاثر غالب نظر آیا۔ محترم انتظار حسین مرحوم کی ”ڈبائی“، محترم…

Read more

کچھ مزید عربی دانی اور ہیچ مدانی۔۔

دوستانِ گرامی، دمشق سے ایک بار پھر آداب عرض ہے۔ گزشتہ دو ہفتوں میں اہلِ خانہ کی سوریا آمد اور اسی دوران ایک شدید گھریلو صدمے سے گزرنے کے بعد مسافر ایک بار پھر بلاد الشام کے گلی کوچوں میں سرگرداں ہے۔ جیسا کہ احباب کو علم ہوگا، یہ ملک اشتراکیت اور عرب قوم پرستی…

Read more

عربوں کے — نام میں کیا رکھا ہے

ایک گزشتہ تعزیتی مضمون میں جمشید مارکر صاحب کے چھوٹے بھائی مینو چہر صاحب کی روایت بیان کی تھی کہ ان کا خاندانی نام ”مارکر“ یوں پڑا کہ وہ انگریزوں کو ریلوے لائن کی تعمیر کے دوران گدھوں کی رسد کا کاروبار کرتے تھے اور گدھوں کو داغنے، یا بہ زبان انگریزی ”مارک“ کرنے کے…

Read more

دمشق کا باب صغیر – دفن ہوگا نہ کہیں اتنا خزانہ ہرگز

دمشقِ قدیم کی فصیل کے سات دروازے ہیں جو رومی دور بلکہ اس سے بھی پہلے سے چلے آ رہے ہیں۔ ان میں ایک دروازہ "باب صغیر" یا چھوٹا دروازہ کہلاتا ہے۔ کسی دور میں یہ شہر کی یہودی آبادی کا مسکن تھا۔ مرورِ زمانہ سے یہ محلّہ خرابے کی صورت اختیار کر گیا کہ…

Read more

شام کے معذور مجبور نہیں

سوریہ (شام) کے بحرِ متوسط کے ساحل سے آداب۔ یہ خادم تین روز سے اس حسین مقام پر ایک دفتری تربیتی اجتماع کے سلسلے میں موجود ہے۔ شہر کا عربی نام ”اللاذقیہ“ ہے مگر غالبا رومن ماضی کی یادگار کے طور پر ”لطاقیہ“ بھی کہلاتا ہے۔ یہ رواج بلاد الشام میں عام ہے چنانچہ لبنان…

Read more

جمشید مارکر صاحب بھی نہ رہے

یوسفی صاحب اور یارِ عزیز مظہر اقبال شیخ کی رحلت کا صدمہ ابھی تازہ تھا کہ جمشید مارکر صاحب کی سناؤنی آ گئی۔ کوئٹہ کا کون سا باشندہ ہوگا جو زرغون روڈ پر واقع ”مارکر ہاوس“ کے سحر میں مبتلا نہ رہا ہو۔ یہ عظیم الشان بنگلہ اپنے گیٹ پر لگے ”کتوں سے ہوشیار“ کے…

Read more

ہماری عربی دانی اور ہیچ مدانی

دوستانِ گرامی، دمشق سے باسی عید مبارک۔ وہ یوں کہ یہاں دو خطبوں سے وابستہ توہم کا کوئی ذکر اذکار نہیں ہے اور نہ ہی رویتِ ہلال کمیٹی کے نام پر کوئی بے کار ادارہ۔ سو عید کا اعلان دمشق کے قاضی شرعی نے وزارت سائنس کی تصدیق پر جمعرات کی شام کو ہی کر…

Read more