جنرل (ریٹائرڈ) ذوالفقار علی بھٹو

اسلام آباد کی جو زیریں عدالت پچھلے ڈھائی برس سے لال مسجد کے منتظم غازی عبدالرشید کے مقدمۂ قتل کی سماعت کر رہی ہے اس مقدمے میں مطلوب واحد ملزم جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کو آج تک اپنے روبرو نہیں دیکھ سکی۔ حالانکہ یہ عدالت اس عرصے میں تین بار جنرل صاحب کے ناقابلِ ضمانت…

Read more

بنگلا دیش کے اچھے اور کم اچھے پہلو

سینتالیس برس قبل جب مشرقی پاکستان بنگلا دیش بنا تو اس وقت اس کی تصویر ایک برباد و بے خانماں غربت کے مثالیے کے طور پر دکھائی جاتی تھی۔ آزادی کے بعد کے پہلے عشرے میں ملکی معیشت کا دار و مدار بھارتی صنعت کاروں یا بین الاقوامی خیرات پر تھا۔ کوئی شے دساور کو جاتی تھی…

Read more

برہمن، سید اور جنرل اور جنرل اگر سید بھی ہو تو؟

پانچ جنوری 2014 کو اگر بھٹو ہوتے تو 86 برس کے ہوتے۔ لیکن یہ شاید میری خواہش ہے۔ کیونکہ آج تک پاکستان میں جتنے بھی گورنر جنرل یا صدر بنے ان میں سوائے فضل الہی چوہدری ( 82 سال) اور غلام اسحاق خان ( 91 سال ) کسی نے بھی 80 کا ہندسہ پار نہیں کیا جبکہ وزیرِ اعظم تو ایک بھی ایسا نہیں گزرا جس نے 80 واں برس دیکھا ہو۔

مگر بھٹو صاحب آج بطورِ خاص یوں یاد آئے کہ جب وہ کال کوٹھڑی میں تھے تو انھیں دانتوں کی شدید تکلیف ہوتی رہی۔ تاہم ضیا حکومت نے جیل کے ہسپتال میں ہی ان کا علاج جاری رکھا اور ان کے ذاتی ڈینٹسٹ ڈاکٹر ظفر نیازی کو کبھی زحمت نہیں دی جب کہ کمبائنڈ ملٹری ہسپتال بھی اڈیالہ سے ایک پتھر کی مار پہ تھا۔

واقعاتی شہادتوں کی بنیاد پر نواب محمد احمد خان کے قتل میں بھٹو صاحب شاید اس سے کم ملوث تھے جتنے پرویز مشرف اکبر بگٹی کے قتل یا جامعۂ حفصہ کی کارروائی میں ملوث بتائے جاتے ہیں۔ مگر بھٹو کی ضمانت نہیں ہوسکی اور مسعود محمود کی سلطانی گواہی نے بھٹو کو تختۂ دار تک لے جانے کا جواز بھی فراہم کردیا۔

لیکن جب سے اصلی گواہوں کے غائب یا منحرف ہونے کا فیشن ہوا ہے، کوئی کسی مقدمے میں سلطانی گواہ بننے کو بھی تیار نہیں۔ بلکہ گواہ کیا، فی زمانہ تو بہت سے وکیل تک کسی انفرادی، اجتماعی یا ادارتی دباؤ کی تاب نہیں لا سکتے اور اپنے وکالت نامے خود ہی منسوخ کر لیتے ہیں۔

Read more

اس سال اس پر بھی دھیان دے لیں

یہ بھی تو ممکن ہے کہ ہمیں اپنا بنیادی مسئلہ بخوبی معلوم ہو مگر حل نہ معلوم ہو۔یا حل بھی معلوم ہو لیکن اتنا تکلیف دہ اور مہنگا لگتا ہو کہ ہم جم کے علاج کرنے کے بجائے وقتی ریلیف کے لیے طرح طرح کے پین کلرز اس امید پر آزما رہے ہوں کہ کوئی…

Read more

صرف محکمہ زراعت ہی سموگ ختم کر سکتا ہے

اس وقت پنجاب کو سموگ نے گھیر رکھا ہے۔ یہ سموگ بھارت اور پاکستان کی سرحد کے دونوں طرف چاول کی زیرِ کاشت زمین کو گندم کی بوائی کے لیے تیار کرنے کی خاطر دھان کے ڈنٹھلوں اور بھوسے کو آگ لگانے سے پیدا ہوتا ہے۔ ہر سال چیخ و پکار ہوتی ہے ۔ تدارک…

Read more

راؤ انوار ایک ضرورت کا نام ہے

کراچی پولیس کے سب سے معروف معطل ایس ایس پی راؤ انوار احمد خان کی جانب سے عدالت عظمی میں درخواست جمع کرائی گئی ہے کہ ان کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ سے خارج کرنے کا حکم دیا جائے تاکہ وہ عمرے کی ادائیگی اور اپنے بچوں کے ضروری خاندانی معاملات طے کرنے کے لیے…

Read more

امریکا کا بڑھاپا اچھا گزرے گا

سوویت یونین کیوں ٹوٹا؟ اگر پاکستان کے مذہبی سیاسی و جہادی حلقوں کی دلیل تسلیم کر لی جائے تو ٹوٹنے کی وجہ افغانستان تھا۔ جہاں مجاہدین نے امریکا، سعودی عرب اور پاکستان کی قیادت میں سوویت یونین کی عسکری کمر توڑ کے سپرپاور والا دبدبہ خاک میں ملا دیا اور سوویت افواج کو دس برس…

Read more

کرپشن نہیں کشکول کے چھید بند کریں

سب سے پہلے ایوب خان نے چور بازاری اور پرمٹ باز سیاستدانوں کے احتساب کا فیصلہ کیا، پھر یحیی خان نے 313 نوکر شاہوں کو بدعنوانی و گھپلے کے الزام میں برطرف کر دیا۔ پھر اگلے چیف مارشل لا ایڈمنسٹریٹر ذوالفقار علی بھٹو نے 1400 بیورو کریٹس کو نااہلی و نامعلوم کرپشن کے سبب چلتا…

Read more

کشمیری تو قابو میں نہیں آ رہے ؟

ستر برس میں پانچویں نسل ہے جسے نہیں معلوم کہ اپنی زندگی میں آزادی دیکھ پائے گی کہ چھٹی پیڑھی کو مایوسی کا پرامید چراغ سونپ کر چلی جائے گی۔یہ بات جتنی فلسطینیوں کے لیے سچ ہے اتنی ہی کشمیریوں کے لیے بھی۔ فلسطینیوں نے بے گھری دیکھی، قتلِ عام دیکھا، ہتھیاراٹھائے،انھیں یقین دلایا گیا…

Read more

کمیشن سازی ماحولیات کے لیے نقصان دہ ہے!

سولہ دسمبر انیس سو اکہتر کا سقوطِ ڈھاکہ ہو کہ 16 دسمبر دو ہزار چودہ کا آرمی پبلک سکول قتلِ عام، دونوں پر تحقیقاتی کمیشن بنے۔ ایک کی رپورٹ 47 برس ہو چکے مگر باضابطہ طور پر ریاست پاکستان کی طرف سے منظرِ عام پر نہیں آئی۔ دوسرے سانحے کی رپورٹ سنا ہے مرتب ہو…

Read more