افسانے سے زیادہ حیران کن سچائی

یہ ایک پیچیدہ کہانی تھی اور ایسے ہی پیچیدہ ہمارے خواب ہیں، ٹکڑوں میں دیکھے ہوئے۔ عشروں ، جن کی آبیاری کرتے رہے۔ اس روشن کل کے خواب، جس کا سورج طلوع ہو کر بھی گرہن کے مستقل ہالے میں جھکڑا رہتا ہے۔ لاطینی امریکہ کے تخلیق کار کہانی بننے کے فن میں اتنے ہی…

Read more

مہان قبیلے کی کہانی، رازوں کی بوسیدہ کتاب اور خاموشی

بوڑھا بھکشو بیس راتوں کی مسافت کے بعد بہادروں کی اس بستی میں پہنچا تھا۔ یہاں کے مرد چوڑے شانوں والے تھے۔ طلسمی کہانیوں کے شہزادوں جیسے، جو بڑے قد والے گھوڑوں کی سواری کرتے تھے۔لمبے چغے، ریشمی دستار اور کمر سے چمکدار تلواریں باندھ کر رکھنے والے۔ اپنے وطن سے چلتے وقت بھکشو کے…

Read more

نقشے پر چرن جیت سنگھ کا لہو پھیل گیا ہے

میں نہیں جانتا کہ چرن جیت سنگھ ساگر کون تھے۔ اب جان کر کرنا بھی کیا ہے۔ایک ہی ملاقات تھی۔ پاکستان کے اقلیتوں کے چند نمائندہ افراد کی ایک نشست میں ملاقات ہوئی تھی۔ نشست کیا تھی بس دکھوں کی پوٹلیاں تھیں جو انہوں نے اپنے کاندھوں پر لاد رکھی تھیں۔ اس گفتگو میں جہاں…

Read more

جب سوڈو جنسی جذبہ بیدار ہوتا ہے

حکیم واجد علی ہر فن مولا ہیں۔ حکمت البتہ شوق کے لئے فرماتے ہیں۔ حکیم صاحب کی حکمت نابغہ روزگار سائنسدان آغا وقار اور اس قبیل کے دیگر آزاد منش سوڈو سائنسدانوں کی سائنس جیسی ہے۔آغا وقار صاحب پانی سے گاڑی چلا سکتے ہیں۔ پروفیسر فرید اختر صاحب کشش ثقل کا انکار کر سکتے ہیں۔…

Read more

منظور پشتین ، غداری اور ماں جیسی ریاست

معلوم نہیں نظریاتی ریاست کے کیا خدوخال ہوتے ہیں اور ایسی ریاست کن اصولوں پر چلتی ہے؟اور یہ بھی کہ براعظم یوٹوپیا کے بعد ایسی ریاست کہاں پائی جاتی ہے؟ تاہم یہ معلوم ہے کہ ریاست میں جہاں بھی جبر کا راج ہوتا ہے، شہری کو باربار حب الوطنی نامی ایک ایسے ترازو میںتلنا پڑتا…

Read more

گوبر کی خوشبو اور پوٹھوہاری موٹے

برادرم وقار احمد ملک نے لائل پوری موٹے کو معاف کرنے یا نہ کی صلاح مانگی ہے جب ان کی جیب میں ستر روپے تھے اور لائل پوری موٹے نے دھوکے سے کیک کھلا کر ان کے پیسے لوٹے تھے۔ بھائی وقار ملک! ابھی ٹھہرو، اس لائل پوری موٹے کو معاف نہ کرنا۔ میں ذرا…

Read more