اردو کا جنازہ نہیں نکلے گا

جب رئیس امروہوی نے کہا تھا کہ "اردو کا جنازہ ہے ذرا دھوم سے نکلے" تب لاڑکانہ شہر کے میرے محلے میں لسانی تفریق نام کو بھی نہیں تھی۔ سندھی اکثریت والے شہر کے میرے جاڑل شاہ محلے میں بیس سے زائد گھر اردو بولنے والوں کے تھے، چار پنجابی بولنے والوں کے اور ایک…

Read more

پھول سی بیٹی جو کوئلہ بن گئی…

یہ بھیانک واقعہ چند ہی روز پہلے کا ہے، جس کی فیس بک پر موجود دو منٹ سولہ سیکنڈ کی وہ مختصر وڈیو مکمل طور پر دیکھنا میرے بس کی بات نہیں۔ دل پر پتھر رکھ کر میں بمشکل ایک منٹ ہی دیکھ سکا، کیونکہ میں نے اپنی آنکھوں میں آنسوؤں کے ساتھ جلن بھی…

Read more

موہن جو دڑو کا خزانہ

حکومت کی جانب سے موہن جو دڑو پر عالمی سیمینار منعقد کرنے کا فیصلہ کرنے کے بعد، مجھے ذمہ داری دی گئی تھی کہ میں پڑوسی ملک جا کر نہ صرف وہاں کے ادیبوں اور دانشوروں کو دعوت نامے پہنچائوں، بلکہ اس ملک میں موجود ایک بہت ہی اہم شخصیت کو بھی سیمینار میں شرکت…

Read more