اگلے جنم موہے بٹیا ہی کیجو !

میری ماں 4 جنوری 2018 کو اس جہاں سے کوچ کر گئیں۔ ان کی عمر پچھتر برس تھی اور شاید میں نے اپنی پوری زندگی میں انہیں ایک دن بھی بیمار نہیں دیکھا۔ وہ ایک خاموش طبع اور درد مند دل رکھنے والی خاتون تھیں ۔ آخری دن تک وہ اپنے باپ کو یاد کرتی…

Read more

قصہ بشریٰ بی بی کی تضحیک کا !

آج کل سوشل میڈیا پر خبرناک کے ایک پروگرام سے متعلق بحث چھڑی ہوئی ہے جس میں غلاظت کے پیکر فیس بکی فاشسٹ ہمیشہ کی طرح سوچے سمجھے بغیر تنقید بھی کر رہے ہیں اور اپنے ذہنی لنگڑے پن کا کماحقہ اظہار بھی لیکن جہاں یہ سب ہو رہا ہے وہاں انہیں گروپس اور صفحات…

Read more

ڈیم کو چھوڑو گالی بکنا سیکھو!

گالی بکنا ایک آرٹ ہے اور یقین کیجیے بہت کم لوگ یہ آرٹ جانتے ہیں۔ مرزا اسد اللہ خاں غالب پر الحاد کے فتوے لگتے تھے تو لوگ بے رنگ خط بھیجتے جس میں مغلظات کی بھرمار ہوتی۔ ایک دن الطاف حسین حالی اپنے استاد یعنی مرزا غالب کو ڈھکے چھپے لفظوں میں آخرت سنوارنے…

Read more

ڈیم فنڈ: آئیے تھوک سے پکوڑیں تلیں !

دیامر بھاشا ڈیم پر جو ایبسرڈ سا رومانس اور خود فریبی کا کھلم کھلا اظہار ہورہا ہے اس پر غالب یاد آ تا ہے،  کیوں نہ ٹھہریں ہدف ناوک بیداد کہ ہم آ پ اٹھا لاتے ہیں جو تیر خطا ہوتا ہے چیف جسٹس صاحب اور وزیر اعظم عمران خان صاحب کے میدان عمل میں…

Read more

گلزار صاحب بھی ”ڈنگ ٹپاؤ“ ہیں!

اردو اشعار میں بہت دلچسپ غلطیاں ہیں جو ذرا سے غیر شعوری ردو بدل سے یوں بگڑی ہیں کہ اصل سے بہتر دکھائی دیتی ہیں۔ یاد رکھیئے صرف دکھنے میں بہتر ہیں ویسے ہر چند کہیں کہ بہتر ہیں، نہیں ہیں۔ اشعار سے متعلق پچھلے بلاگ میں ٹائپنگ کی غلطیوں نے مضمون کا مزا کرکرا…

Read more

مولانا کے من کی من میں رہ جائے گی

اگر آخری وقت میں اعتزاز احسن یا مولانا صاحب میں سے کوئی ایک بیٹھ نہ گیا تو ڈاکٹر عارف علوی با آسانی صدر بن جائیں گے۔ آخری عمر میں بھاگ جاگنا بھی ہر کسی کا مقدر نہیں ہوتا۔ اللہ ڈاکٹر علوی کو لمبی زندگی دے، بہت نفیس آدمی ہیں لیکن آج کل مارے خوشی کے…

Read more

چند تصویر بے حیا چند حسینوں کے ”خطوط“!

پچھلے دنوں کسی ظالم نے ”لوح قلم“ کو ” لوہے قلم“ چھاپا تو عبد الروف صاحب نے اسے اردو کا جنازہ قرار دیا۔ عبدالرؤف صاحب ( ہمارے استاد ہیں اور بہت سیکھا ہے ان کے زیر سایہ) زبان کے معاملہ میں بہت سنجیدہ ہیں اور کبھی درستی سے نہیں چوکتے اور بہت لوگوں کا شین…

Read more

بشریٰ بی بی کیوں ضروری ہیں؟

مرتے دم تک میری دادی یہی کہتی رہیں کہ بابا فرید کے دربار پر حاضری ضرور دینا کیوں کہ میری منت وہاں مانگی گئی تھی۔ میرا گھرانہ نظریاتی اعتبار سے سوشلسٹ تھا تو ظاہر ہے دادی بے چاری نے سخت مخالفت مول لے کر منت مانگی ہوگی۔ بہرحال منت پوری ہوئی لیکن میری ماں اکثر…

Read more

بڑھک باز وزیر اعظم زندہ باد

میرے منہ میں خاک اور میرے ڈرائنگ روم تجزیوں پر لعنت۔ اللہ کرے مجھے یوں ہی شرمندگی اٹھانی پڑے جیسا کہ عمران خان صاحب کے وزیر اعظم نہ بن سکنے کا عندیہ دے کر اٹھانی پڑی۔ عمران کے وزیر اعظم بننے کے لیے مجھے پیپلز پارٹی کا ساتھ دینا ناگزیر نظر آ یا لیکن میں…

Read more

حلف اور ذلتوں کے مارے لوگ

ذلتوں کے مارے لوگ دوستوفسکی کے ناول کا اردو ترجمہ ہے اور مجھے یہ ٹائٹل ہمیشہ اس وقت یاد آ تا ہے جب کوئی نیا وزیر اعظم حلف اٹھا رہا ہوتا ہے اور عوام واری صدقے جا رہے ہوتے ہیں۔ جھولیاں اٹھا اٹھا کر ”ستے خیراں“ بھیج رہے ہوتے ہیں۔ چوروں، ڈاکوؤں اور لٹیروں کے…

Read more