ایشیا کپ ٹورنامنٹ: انتظار ختم، مقابلے کا وقت آگیا

عبدالرشید شکور - بی بی سی اردو ڈاٹ کام، دبئی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

کرکٹ

Getty Images
پاکستان اور انڈیا نے آخری میچ لندن کے اوول کے میدان پر جون 2017 میں چیمپیئنز ٹرافی کے فائنل میں کھیلا تھا

پاکستان اور بھارت کہیں بھی کرکٹ کھیلیں دنیا بھر کی توجہ اپنی جانب کھینچ لیتے ہیں اور متحدہ عرب امارات میں بھی شائقین بڑی بے صبری سے پاکستان اور بھارت کے درمیان میچ کا انتظار کررہے ہیں جو بدھ کے روز دبئی کرکٹ اسٹیڈیم میں کھیلا جانے والا ہے۔

ماضی میں متحدہ عرب امارات میں شارجہ کا میدان پاک بھارت کرکٹ مقابلوں کا سب سے اہم مرکز سمجھا جاتا تھا لیکن سیاسی وجوہات کی بنا پر یہ ان مقابلوں کی تعداد کم سے کم تر ہوتی گئی اور 2006 میں آخری دفعہ ان دونوں نے متحدہ عرب امارات کے کسی میدان میں مقابلہ کیا تھا جب ابوظہبی میں دو ون ڈے میچوں میں دونوں حریف سامنے آئے تھے۔

اس بارے میں مزید پڑھیے

ایشیا کپ: انڈیا کو شارجہ میں کھیلنے سے کیا مسئلہ ہے؟

وراٹ کوہلی کے بغیر ایشیا کپ کا رنگ پھیکا

ورلڈ کپ ابھی دور ہے فی الحال توجہ ایشیا کرکٹ کپ پر

پاکستان اور انڈیا کے مابین آخری میچ ایک سال قبل لندن کے اوول کے میدان پر کھیلا گیا تھا جب پاکستان نے چیمپیئنز ٹرافی کے فائنل میں انڈیا کو 158 رنز سے شکست دے کر تاریخی فتح حاصل کی تھی۔

کرکٹ

Getty Images
اس میچ میں پاکستان نے انڈیا کو 158 رنز سے شکست دے کر تاریخ فتح حاصل کی تھی

ایشیا کپ کے فارمیٹ کو دیکھ کر لگتا ہے کہ جیسے یہ صرف ان دونوں ممالک کو ایک ساتھ کھیلتے ہوئے دیکھنے کا بہانہ ہو۔

ٹورنامنٹ میں ان دونوں کا پہلا مقابلہ گروپ میچ کی شکل میں 19 ستمبر کو ہوگا، جس کے بعد یہ دونوں 23 ستمبر کو سپر4 میں مدمقابل ہونگے۔ اور اگر یہ دونوں فائنل میں پہنچ گئے تو یہ اس ٹورنامنٹ میں ان دونوں کے درمیان تیسرا میچ ہوگا۔

یہی سوچ کر متحدہ عرب امارات میں رہنے والے شائقین خوشی سے پھولے نہیں سمارہے ہیں اور اس کا ثبوت ٹکٹوں کی فروخت میں دیکھا جا سکتا ہے کیونکہ 19 ستمبر کا میچ ′سولڈ آؤٹ ′ ہے یعنی تمام ٹکٹیں فروخت ہوچکی ہیں۔

سب سے کم ٹکٹ ڈیڑھ سو درہم مالیت کا ہے جبکہ اس کے بعد 300، 550 اور 750 درہم مالیت کے ٹکٹ ہیں جبکہ کارپوریٹ باکس کے ٹکٹ کی قیمت پانچ ہزار اور وی آئی پی ٹکٹ کی قیمت چھ ہزار درہم ہے۔

کرکٹ

AFP
متحدہ عرب امارات میں پاکستان اور انڈیا نے آخری دفعہ میچ 2006 میں کھیلا تھا جہاں ابو ظہبی کے میدان پر ان کے درمیان دو میچوں کی سیریز ہوئی تھی

ڈیڑھ سو درہم کا ٹکٹ بلیک میں 500 سے لے کر 600 درہم میں فروخت ہوا ہے۔

دوسرے ملکوں سے بھی شائقین اس میچ کے لیے دبئی پہنچ رہے ہیں کیونکہ وہ دنیائے کرکٹ کے سب سے بڑے اور سب سے دلچسپ ٹاکرے کو دیکھنے کا موقع ہاتھ سے ضائع نہیں کرنا چاہتے ہیں۔

ایشیا کپ کا میزبان چونکہ بھارتی کرکٹ بورڈ ہے لہذا بھارتی ٹیم نہ صرف دوسری ٹیموں سے الگ ہوٹل میں ٹھہری ہوئی ہے بلکہ وہ یہ ٹورنامنٹ دو مراکز پر ہونے کے باوجود اپنے تمام میچز صرف دبئی میں کھیل رہی ہے اور اسے کسی بھی صورت میں ابوظہبی کا سفر اختیار نہیں کرنا پڑے گا جبکہ پاکستانی ٹیم کو سپر فور کے دو میچز ابوظہبی میں کھیلنے ہوں گے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 15446 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp