انڈیا کے امیر ترین شخص مکیش امبانی نے کھلونوں کی سب سے پرانی دکان ’ہیملیز‘ خرید لی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

امبانی

Getty Images
ہیملیز دنیا میں کھلونوں کی سب سے پرانی اور بڑی دکان ہے

انڈیا کے امیر ترین انسان مکیش امبانی نے کھلونوں کی معروف برطانوی کمپنی ہیملیز خرید لی ہے۔

مکیش امبانی کی کمپنی ریلائینس برانڈز لمیٹیڈ کی جانب سے بیان میں کہا گیا ہے کہ انھوں نے چینی کمپنی سی بینر سے اس سودے کا معاہدہ طے کیا ہے۔

ریلائینس برانڈز کے سربراہ درشن مہتا کی جانب سے جاری کیے گئے بیان میں کہا گیا ہے کہ ‘دنیا بھر میں اب ہیملیز کو خریدنا۔۔۔ ہمارے لیے ایک خواب کی تعبیر کی مانند ہے۔’

سی بینر نے سنہ 2015 میں ہیملیز کو دس کروڑ پاؤنڈ کے عوض فرانسیسی کمپنی سے خریدا تھا۔ ریلائینس کی جانب سے خریدے جانے کے بعد یہ چوتھا موقع ہے کہ ہیملیز کی ملکیت تبدیل ہوئی ہے۔

یہ واضح نہیں ہے کہ موجودہ سودا کتنی رقم میں طے ہوا ہے لیکن چند خبروں کے مطابق یہ معاہدہ تقریباً ساڑھے چھ کروڑ پاؤنڈ سے زیادہ میں طے ہوا ہے۔

کیا یہ انڈیا کی تاریخ کی سب سے مہنگی شادی ہے؟

شکریہ بڑے بھائی!

لندن

EPA
لندن کی ریجنٹ سٹریٹ پر واقع ہیملیز کا سٹور 1881 میں قائم کیا گیا تھا

کھلونوں کی سب سے پرانی دکان ہیملیز کا قیام 1760 میں ہوا تھا اور اب دنیا کے 18 ممالک میں ان کے 167 سٹورز ہیں۔

مکیش امبانی کی ریلائینس کمپنی انڈیا کے 29 شہروں میں ہیملیز کے 88 سٹورز چلاتی ہے۔

جریدے فوربز کے مطابق دنیا کے امیر ترین افراد میں سے ایک، مکیش امبانی کی مجموعی دولت 50 ارب ڈالر سے زیادہ ہے۔

امبانی

Reuters
مکیش امبانی کی کل دولت 50 ارب ڈالر سے زیادہ ہے

گذشتہ سال ہیملیز نے 92 لاکھ پاؤنڈ کا خسارہ اٹھایا تھا اور اس کا ذمہ دار انھوں نے بریگزٹ اور دہشت گردی کے خطرے کو قرار دیا تھا۔

کمپنی نے برطانیہ میں چار سٹورز کھولے تھے لیکن ان میں سے دو کو بعد میں بند کر دیا تھا۔ لیکن ان کا سب سے معروف سٹور لندن کی ریجینٹ سٹریٹ پر 1881 سے قائم ہے اور وہ شہر کے یادگار مقامات میں سے ایک تصور کیا جاتا ہے۔

سات منزلہ اس سٹور میں کھلونوں کی تقریباً 50000 قطاریں ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 11168 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp