حکومت سازی میں وزیر اعظم کے عہدے پر اصرار نہیں کریں گے: بھارتی کانگریس کا اتحادیوں کو پیغام

بھارت میں لوک سبھا کے انتخابات کا نتجہ 23 مئی کو سامنے ا جائے گا۔ اس کے بعد  ہر پارٹی اور اتحاد کی کوشش ہو گی کہ حکومت تشکیل دینے مین کامیابی حاصل کی جائے۔ دعوی کیا جا رہا ہے کہ نتائج سے پہلے متحدہ اپوزیشن وزیر اعظم کے عہدے کے لئے امیدوار کا اعلان کر دے گی۔

اسی ضمن میں کانگریس کے سینئر لیڈر اور ایواب بالا میں اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد نے کہا ہے کہ اگر اتحاد میں وزیر اعظم کا عہدہ کانگریس کو نہیں بھی ملتا تو بھی یہ کوئی مسئلہ نہیں ہو گا۔ بہار کے دارالحکومت پٹنہ میں پریس سے بات چیت کرتے ہوئے غلام نبی آزاد نے کہا، ‘لوک سبھا انتخابات کے نتائج کا اعلان ہونے سے پہلے اعلیٰ ترین عہدے کے لئے امیدوار پر اتفاق رائے کا خیر مقدم کیا جائے گا، لیکن وزیر اعظم کی کرسی کی پیش کش نہ ہونے کانگریس اسے مسئلہ نہیں بنائے گی‘‘۔

لوک سبھا انتخابات کے آخری مرحلے سے ٹھیک پہلے غلام نبی آزاد کے اس بیان کو اتحادی پارٹیوں کے ساتھ ساتھ کانگریس کے ممکنہ اتحادیوں کے لئے علامت کے طور پر دیکھا جا رہا ہے۔ کانگریس کے صدر راہل گاندھی بھی کئی بار وزیر اعظم کے عہدے کے لئے انکار کر چکے ہیں جبکہ ایم کے اسٹالن، تیجسوی یادو اور یہاں تک کہ اروند کیجریوال جیسے لیڈروں نے بھی کہا ہے کہ وہ راہل گاندھی کی حمایت کرنے کے لئے تیار ہیں۔ دوسری طرف شرد پوار جیسے بڑے لیڈر مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی اور مایاوتی کا نام آگے بڑھا رہے ہیں۔