آڈیو کالم: فرشتہ ہو یا زینب: یہ سب تمہاری حاکمیت کا تاوان ہے

یہ کھیل کبھی ختم نہیں ہو گا۔ کیوں بلبلاتے ہو تم؟ کس چیز کا غم ہے؟ کس لیے اتنا شور مچا رکھا ہے؟ کچھ بھی تو نیا نہیں ہے۔ وہی تو ہوا ہے جو صدیوں سے ہو رہا ہے۔ وہی تو ہے جو منٹو نے برسوں پہلے کھول دیا۔ کیا نئی بات ہے آخر؟ ایک اور ننھی کلی مسلی گئی، ایک اور جانباز بازی لے گیا۔

مضمون پڑھنے کے لئے اس لنک پر کلک کریں
سننے کے لئے ویڈیو پر کلک کریں