ارٹیکل 370 پر عمران خان کے غصے کے ویڈیو کی حقیقت کیا ہے؟

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

عمران خان

Getty Images

پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی ایک ویڈیو اس دعوے کے ساتھ سوشل میڈیا پر شیئر کی جارہی ہے کہ ‘جموں وکشمیر کے معاملے پر کسی بھی ملک کی حمایت حاصل نہ ہونے کے سبب عمران خان غصے میں ہیں اور اسی وجہ سے میڈیا والوں کے ساتھ انھوں نے بدتمیزی کی۔

تقریباً تین منٹ کی اس ویڈیو میں عمران خان کے ساتھ پاکستان کے موجودہ وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور وزیر ریلوے شیخ رشید احمد بھی نظر آ رہے ہیں۔

گذشتہ تین دنوں میں اسے 20 لاکھ سے زیادہ بار دیکھا گیا ہے۔ اس وائرل ویڈیو میں ایسا ظاہر ہوتا ہے کہ عمران خان ناراض ہوکر پریس کانفرنس میں موجود تمام لوگوں کو خاموش رہنے کا کہہ رہے ہیں۔

بی بی سی نے تحقیق کی تو معلوم ہوا کہ اس ویڈیو کو پچاس ہزار سے زیادہ بار شیئر کیا جا چکا ہے اور جنھوں نے اس ویڈیو کو فیس بک یا ٹویٹر پر شیئر کیا ہے وہ لکھتے ہیں کہ ‘آرٹیکل-370 پر کسی بھی ملک کی حمایت نہ ملنے پر پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان نے صحافیوں کو گالیاں دینی شروع کر دیں۔’

جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370 کی خصوصی دفعات کو ہٹانے کے حکومت ہند کے فیصلے کی پاکستان کھل کر تنقید کر رہا ہے۔

چین نے اس معاملے میں پاکستان کے حق میں کچھ بیانات دیئے ہیں لیکن بیشتر ممالک نے جموں و کشمیر کو ہندوستان اور پاکستان کا دوطرفہ مسئلہ قرار دیا ہے۔

بی بی سی کو معلوم ہوا کہ آرٹیکل 370 کے تعلق سے وزیر اعظم عمران خان کی جو ویڈیو سوشل میڈیا پر شیئر کی جارہی ہے اس ویڈیو کا جموں و کشمیر سے متعلق دونوں ممالک کے درمیان موجودہ تنازع سے کوئی تعلق نہیں ہے جبکہ یہ کافی پرانا بھی ہے۔

وائرل ویڈیو کی حقیقت؟

ریورس امیج سرچ سے پتہ چلتا ہے کہ یہ ویڈیو جون سنہ 2015 کا ہے۔ اس وقت عمران خان پاکستان کے وزیر اعظم بھی نہیں تھے۔

سنہ 2015 میں پاکستان میں مسلم لیگ (نواز)’ پارٹی کی حکومت تھی اور نواز شریف اس ملک کے وزیر اعظم تھے۔

جبکہ پاکستان تحریک انصاف پارٹی کے چیئرمین عمران خان پاکستان میں حزب اختلاف کے بڑے رہنماؤں میں شامل تھے۔

انٹرنیٹ پر میڈیا کی کچھ پرانی رپورٹس کے مطابق یہ ویڈیو آٹھ جون سنہ 2015 کی ہے۔

ویڈیو کو شیئر کرتے ہوئے پاکستان کی سماء ٹی وی نے لکھا: ‘راولپنڈی شہر میں ایک جلسہ عام میں میڈیا سے گفتگو کے دوران اپنے حامیوں پر ناراض ہوئے پی ٹی آئی کے سربراہ عمران خان۔

لیکن اس ویڈیو میں ترمیم کرکےسوشل میڈیا پر صرف اتنا ہی حصہ استعمال کیا گیا ہے جب ناراض ہو کر عمران خان لوگوں کو خاموش رہنے کے لیے کہتے ہیں۔

پورا معاملہ کیا تھا؟

در حقیقت اس ویڈیو کے وقت عمران خان نے اپنے حامیوں سے پرسکون رہنے کی اپیل کی تھی اور پریس کانفرنس میں انھوں نے میڈیا والوں سے کہا کہ ‘پنجاب پولیس کا کردار ٹھیک نہیں ہے’۔

سات جون 2015 کی شام کو ، عمران خان نے بھی اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ سے بھی ایک ٹویٹ کیا تھا۔

انھوں نے لکھا: ‘یہ جان کر حیرت ہوئی کہ صادق آباد راولپنڈی میں پولیس نے دو نوجوانوں کو ہلاک کیا ہے۔ نواز شریف نے پنجاب پولیس کو قاتل بنایا دیا ہے۔’

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 10837 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp