منی لانڈرنگ کے الزامات: احتساب عدالت کا نیب کو مریم نواز کے خلاف تحقیقات مکمل کرنے کا حکم

عباد الحق - صحافی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

مریم نواز

BBC

پاکستان میں احتساب کے قومی ادارے نیب نے نواز شریف کی بیٹی مریم نواز اور بھتیجے یوسف عباس کے خلاف ریفرنس دائر کرنے مہلت مانگتے ہوئے احتساب عدالت کو آگاہ کیا کہ چودھری شوگر ملز میں منی لانڈرنگ کے الزام کی تحقیقات ابھی مکمل نہیں ہوئیں ہیں۔

نیب کے پراسیکیوٹر حافظ اسد نے احتساب عدالت کو بتایا کہ مریم نواز کے خلاف منی لانڈرنگ کے الزامات میں نواز شریف سے بھی پوچھ گچھ کرنی ہے۔

مریم نواز اور ان کے چچازاد بھائی یوسف عباس کو جوڈیشل ریمانڈ کی معیاد ختم ہونے پر بدھ کو احتساب عدالت میں پیش کیا گیا۔

پہلے یوسف عباس کو احتساب عدالت پہنچایا گیا اور لگ بھگ 45 منٹ کے وقفے کے بعد مریم نواز کو احتساب عدالت میں پیش کیا گیا۔ انھیں ڈیوٹی جج جواد الحسن کی عدالت میں پیش کیا گیا۔

احتساب عدالت نے مریم نواز اور یوسف عباس کو روسٹرم پر بلایا تاہم رش کی وجہ سے جج نے مریم نواز کو فوری طور پر واپس اپنی جگہ بیٹھے کی ہدایت کی اور باور کرایا کہ سکیورٹی ایشو ہو سکتا ہے۔

اس موقع پر مریم نواز کے وکیل نے واضح کیا کہ ایسا کچھ نہیں ہو گا۔ یہاں سب چہرے جانے پہنچانے ہیں جس پر احتساب عدالت کے جج نے کہا کہ ہو سکتا ہے کچھ چہرے آپ بھی نا جانتے ہوں۔

کمرۂ عدالت میں رش اور شور کی وجہ سے کانوں پڑی آوازسنائی نہیں دے رہی تھی جس کی وجہ سے احتساب عدالت کے جج اور وکلاء کو آپس میں بات کرنے اور سمجھنے میں شدید دشواری کا سامنا رہا۔

رش کے دوران کیپٹن ریٹائرڈ صفدر اپنی اہلیہ مریم نواز کے ساتھ ساتھ رہے اور ان کے لیے جگہ بناتے رہے۔ کیپٹن ریٹائرڈ صفدر نے دانیال عزیز کے ساتھ مل کر مریم نواز کے سامنے رکھی میز کو آگے کی طرف دھیکلا تاکہ ان کی اہلیہ کو کو کوئی دشواری نہ ہو۔

کمرۂ عدالت میں خواتین ارکان اسمبلی ایک دوسرے کے ساتھ تصاویر اور سلیفیاں بھی بناتی رہی۔

احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے کمرۂ عدالت میں تصاویر بنانے پر سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے حکم دیا کہ کوئی تصویر اور سیلفی نہ بنائے۔

مریم نواز اور یوسف عباس کو ان کے وکلا کے ساتھ الگ کمرے میں ملاقات کی اجازت دی گئی تاہم کمرے میں دیگر کارکن بھی داخل ہو گئے۔

احتساب عدالت کے جج نے تمام صورت حال پر ناراضگی کا اظہار کیا اور ریمارکس دیے کہ کمرے میں مختلف مقدمات کا اہم اور قیتمی ریکارڈ پڑا ہے وہ تباہ ہو جائے گا۔ عدالت نے حکم دیا کہ غیر متعلقہ لوگوں کو کمرے سے باہر نکالا جائے۔

فاضل جج نے غصے کا اظہار کیا اور کہا پولیس کا کوئی والی وارث نہیں وہ کیوں بکری بنے کھڑی ہے۔؟

مسلم لیگ ن کے رہنماؤں کے لیے منرل واٹر لا کرکمرۂ عدالت میں رکھی فائلوں میں چھپا دیا گیا۔

مریم نواز کی احتساب عدالت آمد اور روانگی کے موقع پر ان کے حق میں نعرے لگائے گئے۔ کارکنوں نے نعرہ لگایا ’چاروں صوبوں کی آواز مریم نواز مریم نواز۔‘

میڈیا سے مختصر گفتگو میں مریم نواز نے جیل میں فون برآمدگی کی اطلاع کو بے بنیاد قرار دیا اور نشاندہی کی کہ آئی جی جیل خانہ جات خود اس کی تردید کر چکے ہیں۔

مولانا فضل الرحمن کے لانگ مارچ کے بارے میں سوال پر مریم نواز نے کہا کہ جس طرح غلط طریقے سے یہ حکومت آئی ہے اسی طرح یہ جائے گی.

احتساب عدالت کے جج نے نیب کی تفتیش مکمل نہ ہونے پر مریم نواز اور یوسف عباس کے جوڈیشل ریمانڈ میں توسیع کر دی۔

عدالت نے مریم نواز اور یوسف عباس کو 23 اکتوبر کو دوبارہ عدالت میں پیش کرنے کی ہدایت کی۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 10732 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp