میگھن مارکل: ’دوستوں نے کہا تھا کہ شہزادہ ہیری سے شادی نہ کرو‘

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Prince Harry, Duke of Sussex and Meghan, Duchess of Sussex and their baby son Archie Mountbatten-Windsor at a meeting with Archbishop Desmond Tutu in South Africa on 25 September 2019

Getty Images
The duke and duchess visited southern Africa last month with their son Archie

ڈچز آف سسیکس شہزادی میگھن مارکل نے کہا ہے کہ ان کے دوستوں نے انھیں مشورہ دیا تھا کہ شہزادہ ہیری سے شادی نہ کریں۔

میگھن مارکل نے کہا ہے کہ انھیں کہا گیا تھا کہ’ ایسا (شہزادہ ہیری سے شادی) نہ کرو، برطانوی ٹیبلائیڈ پریس تمھاری زندگی برباد کر دے گا۔’

شہزادی میگھن نے آئی ٹی وی کی ایک ڈاکومینٹری میں تسلم کیا کہ میڈیا کے دباؤ کی وجہ سے ماں بننے کا تجربہ بہت مشکل تھا۔

شہزادہ ہیری نے اسی انٹرویو میں اپنے بھائی شہزادہ ولیم کے ساتھ تعلقات میں ’ڈراڑیں‘ پڑنے کے حوالے سے سوالوں کے جواب دیے۔ انھوں نے کہا کہ وہ اور ان کے بھائی شہزادہ ولیم مختلف راہوں پر گامزن ہیں۔

شہزادہ ہیری نے کہا ‘میرے اور شہزادہ ولیم کے مابین اچھے دن بھی ہوتے ہیں اور برے بھی۔ ہم بھائی ہیں، اور ہمیشہ بھائی رہیں گے۔’

یہ بھی پڑھیے

برطانوی جرائد کو شہزادی میگن مارکل کیوں ناپسند ہیں؟

شہزادہ ہیری کی منگیتر میگن مارکل کون ہیں؟

ہیری اپنی گرل فرینڈ سے پریس کے رویے پر ناراض

شہزادہ ہیری اور میگھن مارکل

Reuters
شہزادہ ہیری اور میگھن مارکل کی گزشتہ برس ونڈزر کاسل میں شادی کی تقریب ہوئی

’اس لمحے ہم یقیناً دو مختلف راہوں پر گامزن ہیں، لیکن جب ضرورت ہوئی تو میں اس کے ساتھ ہوں گا اور مجھے معلوم ہے کہ وہ بھی میرے ساتھ کھڑا ہوگا۔‘

’زندگی صرف زندہ رہنے کا نام نہیں‘

اتوار کو نشر کی گئی آئی ٹی وی کی ڈاکومینٹری میں میگھن مارکل نے کہا کہ شاہی زندگی کو اپنانا بہت مشکل تھا اور وہ برطانوی ٹیبلائیڈ میڈیا کی اتنی دخل اندازی کے لیے تیار نہیں تھیں۔

وہ کہتی ہیں کہ جب وہ پہلی بار شہزادہ ہیری سے ملی تھیں تو ان کے دوست بہت خوش تھے کیونکہ وہ بہت خوش تھیں۔ لیکن ان کے مطابق ان کے برطانوی دوستوں نے ان سے کہا ’ہمیں معلوم ہے کہ وہ (شہزادہ ہیری) بہت اچھے ہیں، لیکن آپ کو اس سے شادی نہیں کرنی چاہیے، برطانوی ٹیبلائیڈ تمھاری زندگی برباد کر دے گا‘۔

شہزادی میگھن نے کہا کہ ذرائع ابلاغ کے دباؤ کی وجہ سے حاملہ ہونا اور ماں بننا ایک مشکل مرحلہ تھا۔

ایک سوال کے جواب میں کہ کیا وہ اب اس دباؤ کا مقابلہ کرنے کے قابل ہو گئی ہیں، میگھن مارکل نے کہا ’سچ بتاؤں میں نے کئی بار ایچ سے کہا ہے ( میں اسے اسی طرح بلاتی ہوں) کہ زندگی کا مقصد صرف زندہ رہنا ہی نہیں ہے، بلکہ زندگی میں آگے بڑھنا ہوتا ہے۔‘

‘میں اپنے خاندان کا تحفظ کروں گا’

شہزادہ ہیری سے جب پوچھا گیا کہ کیا انھیں اس کی پریشانی ہے کہ ان کی بیوی کو اسی طرح کے دباؤ کا سامنا ہے جو ان کی ماں لیڈی ڈیانا کو تھا جو 1997 میں پیرس میں ایک کار حادثے میں وفات پا گئیں تھیں، تو انھوں نے کہا ’میں ہمیشہ اپنے خاندان کا تحفظ کروں گا، اور اب میرا خاندان ہے جس کا مجھے تحفظ کرنا ہے۔

‘میری ماں جن حالات سے گزری اور اس کے ساتھ جو کچھ ہوا، وہ بہت اہم ہے۔ اور یہ نہیں کہ میں کسی وسوسے کا شکار ہوں، میں چاہتا ہوں کہ تاریخ اپنے آپ کو پھر نہ دہرائے۔’

شہزادہ ہیری نے اپنی ذہنی صحت اور روزمرہ کے دباؤ کے حوالے سے کہا کہ اس سے روزانہ نمٹنا پڑتا ہے۔ شہزادہ ہیری نے کہا ’میں نے سوچا تھا کہ میری مشکلیں ختم ہو چکی ہیں، لیکن وہ پھر اچانک واپس آگئیں۔ مجھے ان سب سے نمٹنا پڑتا ہے۔’

Prince Harry and Meghan in South Africa

EPA
شہزادہ ہیری کا کہنا ہے کہ وہ اپنی بیوی کے ساتھ وہ سلوک نہیں ہونے دیں گے جو ان کی ماں لیڈی ڈیانا کے ساتھ کیا گیا

ان کا کہنا تھا ’یہ میرے فرائض کا حصہ ہے کہ میں کچھ چیزوں کا دلیرانہ طور پر مقابلہ کروں، لیکن میرے اور میری بیوی کے حوالے سے کچھ ایسا مواد بھی چھپتا ہے جو کافی تکلیف دہ ہوتا ہے، اور خاص طور پر ایسا مواد جو زیادہ تر سچ نہیں ہوتا۔‘

شہزادہ ہیری، شہزادی میگھن اور ان کے بیٹے آرچی کا افریقہ کا حالیہ دورہ بطور خاندان ان کا پہلا سرکاری دورہ تھا۔

اڑتیس سالہ ڈچز آف سسیکس کی پینتیس سالہ شہزادہ ہیری سے مئی دو ہزار اٹھارہ میں ونڈزر محل میں شادی ہوئی تھی اور رواں سال ان کے ہاں بیٹے آرچی کی ولادت ہوئی۔

ڈچز آف سسیکس نے شادی کے روز سے لے کر اب تک اپنے شاہی کردار کے حوالے سے بھی بات کی۔

رواں ماہ کے اوائل میں شہزادہ ہیری نے ایک بیان میں کہا تھا کہ ان کی بیوی میگھن مارکل ’برطانوی ٹیبلائیڈ کی تازہ شکار ہیں، جو یہ سوچے بغیر لوگوں کے خلاف مہم چلاتے ہیں کہ اس سے ان کی زندگیوں پر کیا اثر پڑے گا۔‘

انھوں نے کہا کہ کچھ مخصوص ادارے جانتے بوجھتے مسلسل جھوٹی اور شرانگیز خبریں پھیلاتے ہیں۔

ڈیوک اینڈ ڈچز آف سسیکس نے میل آن سنڈے کے خلاف ایک ذاتی خط کو غیر قانونی طور پر چھاپنے کے الزام میں مقدمہ دائر کر رکھا ہے۔

شہزادہ ہیری نے دی سن، ڈیلی مرر اور بند ہو جانے والے اخبار نیوز آف دی ورلڈ کے خلاف ہائی کورٹ میں مقدمہ دائر کر رکھا ہے کہ انھوں نے مبینہ طورپر ان کا فون ہیک کر کے ان کی گفتگو کو نشر کیا تھا۔

یہ بہت دکھ بھری کہانی ہے

جانی ڈائمنڈ، شاہی نامہ نگار کا تجزیہ

شہزادہ ہیری محتاط گفتگو کا طریقہ سیکھ چکے ہیں لیکن انھوں نے بھائی کے ساتھ اپنے تعلقات کو جس انداز میں بیان کیا ہے وہ اس کی تصدیق کرتا ہے کہ ان کی زندگی بدل چکی ہے اور اب دونوں بھائیوں میں زیادہ قربت نہیں رہی۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ بھائیوں میں محبت رہے گی لیکن کچھ چیزیں بدل چکی ہیں۔

میگھن مارکل گفتگو کرنے میں بلا کی مہارت رکھتی ہیں اور انھوں نے اپنی صورتحال کو انتہائی نپے تلے انداز میں بیان کیا۔ انھوں نے ٹیبلائیڈز کی کوریج کے حوالے سے کہا ’میں نے کبھی سوچا بھی نہ تھا کہ یہ آسان ہو گا لیکن میں سوچتی تھی کہ یہ منصفانہ ہوگی۔‘

پچھلے کچھ ماہ سے شہزادی میگھن کو جس انداز میں پیش کیا جا رہا ہے، وہ یقیناً اس سے نالاں ہیں۔ برطانوی لوگ ہمیشہ اپنی ’منصفانہ‘ صفات پر فخر کرتے ہیں اور جس انداز میں شہزادی میگھن نے لفظ منصفانہ کو استعمال کیا ہے وہ یقیناً چبھا ہے۔

جب پریزینٹر ٹام بریڈبی نے کہا کہ اب تک کا سفر مشکل تھا، تو شہزادی میگھن نے کہا ’ہاں‘ ایسا ہی تھا۔ شہزادہ ہیری نے ذہنی صحت کے مسائل کا اعتراف کیا۔ یہ شاہی جوڑا اب دباؤ محسوس کر رہا ہے اور اس کا اظہار بھی کر رہا ہے۔ شہزادہ ہیری اب ہر کیمرے اور ہر ہیڈ لائن میں اپنی ماں لیڈی ڈیانا کا عکس دیکھ رہے ہیں۔

یہ بہت دکھ بھری کہانی ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 10758 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp