یوکرین کا مسافر طیارہ غلطی سے مار گرایا: ایران کا اعتراف

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

ایران نے اعتراف کیا ہے کہ یوکرین کا مسافر طیارہ انسانی غلطی کے باعث مار گرایا گیا تھا۔ جس پر وہ حادثے میں ہلاک ہونے والوں کے لواحقین سے معذرت کرتا ہے۔

ایران کے سرکاری ٹی وی پر نشر ہونے والے ایرانی فوج کے بیان میں کہا گیا ہے کہ طیارہ پاسدران انقلاب کی حساس تنصیبات کے قریب سے گزر رہا تھا۔ جسے غلطی سے مار گرایا گیا۔

ایرانی حکام نے کہا ہے کہ غلطی کے مرتکب افراد کے خلاف عدالتی کارروائی کی جائے گی۔

ایران کے صدر حسن روحانی نے بھی اس غلطی کا اعتراف کرتے ہوئے افسوس کا اظہار کیا ہے۔

صدر حسن روحانی کے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے کہا گیا ہے کہ مسلح افواج کی ابتدائی تحقیقات سے پتا چلا ہے کہ طیارے پر غلطی سے میزائل داغا گیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ اس ناقابل معافی غلطی کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

یہ حادثہ بدھ کو اس وقت پیش آیا تھا جب امریکی ڈرون حملے میں ایرانی کمانڈر قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد ایران نے عراق میں موجود امریکی تنصیبات پر متعدد میزائل داغے تھے۔

ایران کے وزیر خارجہ جواد ظریف نے بھی یوکرین طیارہ غلطی سے مار گرانے کی تصدیق کی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ وہ حادثے میں ہلاک ہونے والوں کے لواحقین سے معذرت کرتے ہیں۔

جواد ظریف کا کہنا تھا کہ خطے میں امریکہ کے پیدا کردہ بحران کے باعث یہ سانحہ ہوا۔

طیارہ بدھ کو ایران کے دارالحکومت تہران سے یوکرین کے دارالحکومت کیو جا رہا تھا۔ پرواز کے کچھ ہی منٹ بعد طیارہ تہران کے مضافات میں گر کر تباہ ہو گیا تھا۔ حادثے میں تمام 176 مسافر ہلاک ہو گئے تھے۔

طیارے میں 82 ایرانی جبکہ 63 کینیڈین شہری سوار تھے۔ کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے بھی ایران کو حادثے کا ذمہ دار ٹھہرایا تھا۔
بشکریہ وائس آف امریکہ۔

اسی بارے میں:
کیا ثبوت ہیں کہ یوکرینی طیارہ ایرانی میزائل کا نشانہ بنا تھا؟

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *