دلی میں امریکی سفارت خانے کےاحاطے میں پانچ سالہ بچی کا ریپ

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

امریکی سفات خانہ

Getty Images
دلی میں امریکی سفارت خانہ انتہائی سکیورٹی والے علاقے میں واقع ہے

انڈیا کے دارالحکومت دلی میں پولیس نے ایک 25 سالہ شخص کو امریکی سفارت خانے کے احاطے میں ایک پانچ سال کی بچی کو ریپ کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔

پولیس نے خبر رساں ادارے پی ٹی آئی کو بتایا کہ بچی کے والدین کی جانب سے پولیس میں شکایت کے بعد اتوار کے روز اس شخص کو گرفتار کیا گیا۔ ڈاکٹروں نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ بچی کے ساتھ ریپ ہوا ہے۔ اس بچی کے ساتھ سنیچر کو ریپ کیا گیا تھا اب اس کی حالت بہتر بتائی جا رہی ہے۔

اس بچی کے اہل خانہ سفارت خانے کے احاطے میں رہائش پذیر ہیں جہاں اس کے والد بطور ہاؤس کیپِنگ سٹاف کام کرتے ہیں۔ پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم جو ایک ڈرائیور ہے سفارت خانے کے لیے کام نہیں کرتا تاہم اس کے والدین سفارت خانے کے ملازم تھے اور وہ اپنے والدین کے ساتھ سٹاف کوارٹر میں رہتا ہے۔

امریکی سفارت خانہ دلی کے عالیشان علاقے چانکیہ پوری میں ہے جہاں متعدد ممالک کے سفارت خانے اور ہائی کمیشن ہیں۔ انتہائی سکیورٹی والی یہ عمارت تقریباً 28 ایکڑ زمین پر پھیلی ہوئی ہے جہاں مقامی لوگوں کو ملازمت پر رکھا گیا ہے۔

مظاہرہ

Getty Images
عورتوں کے خلاف جنسی حملوں سے نپٹنے میں انڈیا کا ریکارڈ کافی خراب ہے

تحقیقات کے بعد معلوم ہوا کہ ملزم اور بچی کے اہلِخانہ ایک دوسرے کو جانتے تھے۔بچی اپنے گھر کے باہر کھیل رہی تھی جب ملزم بچی کو پہلا پھسلا کر اپنے گھر لے گیا اس وقت ملزم کے والدین کام پر تھے۔

پولیس کے مطابق جب بچی اپنے گھر واپس گئی تو اس اپنی ماں کو بتایا کہ اس کے ساتھ کیا ہوا ہے اسے فوراً ہسپتال لےجایا گیا جہاں ڈاکٹروں نے فوراً اس بات کی تصدیق کر دی کے اس کے ساتھ ریپ ہوا ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم کے خلاف2018 میں بنائے جانے والے ‘چائلڈ پروٹکشن لا’ یعنی بچوں کے تحفظ کے قانون کے تحت تحقیقات کی جا رہی ہیں۔ حکومت نے کم سن بچوں کے ریپ کے اہم واقعات کے پر ہنگاموں کے بعد بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والوں کے لیے سزائے موت شروع کی ہے۔

انڈیا کے جرائم سے متعلق اعداد و شمار کے مطابق ریپ کا شکار ہونے والوں میں ہر چوتھا بچہ ہوتا ہے اور ریپ کے معاملے میں 84 فیصد ملزمان جان پہچان کے لوگ ہوتے ہیں۔

عورتوں کے خلاف جنسی حملوں سے نپٹنے میں انڈیا کا ریکارڈ کافی خراب ہے اور یہ بات 2012 میں دلی کی ایک بس میں ایک لڑکی کے ریپ اور قتل کے بعد واضح ہوئی تھی جس کے بعد بڑے پیمانے پر احتجاج اور مظاہرے ہوئے تھے جس کے بعد حکومت نے ملک میں ریپ کے قانون میں تبدیلی کی تھی۔

گزشتہ سال نومبر میں انڈیا کے جنوبی شہر حیدرآباد میں ستائیس سالہ کی ایک ڈاکٹر کے ریپ اور بیہیمانہ قتل نے بھی سرخیوں میں جگہ بنائی تھی۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 12815 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp