پاکستان بمقابلہ انگلینڈ دوسرا ٹیسٹ: پاکستانی اوپنر عابد علی کو سنچری اسکور نہ پر مایوسی

عبدالرشید شکور - بی بی سی اردو ڈاٹ کام، کراچی

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

عابد علی

Reuters

ساؤتھیمپٹن ٹیسٹ میچ کے پہلے دن اگر یہ کہا جائے کہ موسم نے بار بار رکاوٹ نہ ڈالی ہوتی تو ممکن تھا کہ پاکستانی ٹیم نے جس طرح کی بیٹنگ کی وہ آل آؤٹ ہو جاتی تو شاید غلط نہ ہو۔

بارش اور خراب موسم سے متاثرہ پہلے دن کے اسکور 126 رنز پانچ کھلاڑی آؤٹ میں ایک ہی قابل ذکر اننگز نظر آئی جو عابد علی کی تھی۔ وہ 60 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

یہ وہی عابد علی ہیں جو اپنے اولین ٹیسٹ اور اولین ون ڈے دونوں ہی میں سنچری بنانے والے دنیا کے واحد بیٹسمین کے طور پر ریکارڈ بکس میں اپنا نام درج کرا چکے ہیں۔

تاہم انگلینڈ کے موجودہ دورے میں وہ اب تک غیرمعمولی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے میں کامیاب نہیں ہو سکے ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

کیا 24 برس بعد پاکستان انگلینڈ میں ٹیسٹ سیریز جیت پائے گا؟

اس ڈریسنگ روم میں کافی شامیں بیت چکی ہیں۔۔۔

۔۔۔اور اظہر علی کی جیب بھی خالی تھی

اولڈ ٹریفرڈ ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں وہ صرف 16 رنز بنا کر جوفرا آچر کی گیند پر بولڈ ہوئے تھے۔ دوسری اننگز میں 20 رنز پر ڈوم بیس کی گیند پر غیرضروری سویپ کھیلتے ہوئے وہ ووکس کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔

ساؤتھیمپٹن ٹیسٹ کے پہلے دن جب پہلے ٹیسٹ میں سنچری سکور کرنے والے شان مسعود صرف ایک رن پر آؤٹ ہوئے تو دوسرے اینڈ پر عابد علی سے ایک ذمہ دارانہ اننگز کی امیدیں وابستہ کر لی گئی تھیں۔

عابد علی اپنی 60 رنز کی اننگز سے کسی حد تک مطمئن ہیں لیکن ان کا کہنا ہے کہ یہ اننگز ایک بڑے اسکور میں بھی تبدیل ہوسکتی تھی۔

عابدعلی کا کہنا ہے کہ وہ پوری کوشش کر رہے تھے کہ اپنی بہترین کارکردگی دکھا سکیں خاص کر ایسی پرفارمنس جو ٹیم کے لیے کارآمد ثابت ہو سکے۔

’ساؤتھمپٹن کی وکٹ مشکل نہیں ہے اور گیند بلے پر بہت اچھی طرح آرہی تھی لیکن بارش کی وجہ سے کنڈیشنز مشکل ہو گئیں جس میں بیٹنگ آسان نہیں تھی۔‘

عابد علی

Reuters

ان کی کپتان اظہرعلی کے ساتھ 72 رنز کی شراکت بھی ہوئی لیکن کھیل کے بار بار رکنے کے سبب چار وکٹیں جلدی گر گئیں۔

عابدعلی کا یہ انگلینڈ کا دوسرا دورہ ہے اس سے قبل وہ گذشتہ سال ون ڈے سیریز کا حصہ تھے لیکن صرف ایک میچ میں انھیں موقع مل سکا تھا اور اسی کی بنیاد پر وہ ورلڈ کپ سکواڈ میں جگہ بنانے میں کامیاب نہیں ہو سکے تھے۔

عابد علی کا کہنا ہے کہ چونکہ وہ پہلی بار انگلینڈ میں ٹیسٹ سیریز کھیل رہے ہیں لہٰذا ان کنڈیشنز میں کھیلنا کسی چیلنج سے کم نہیں اور انھوں نے یہ چیلنج قبول کیا ہے انھیں یقین ہے کہ وہ اس ٹور پر بڑی پرفارمنس دینے میں ضرور کامیاب ہوں گے۔

عابدعلی ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کے فیصلے کو درست سمجھتے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ ٹیم مثبت سوچ کے ساتھ یہ میچ کھیل رہی ہے اور یہی سوچ کر ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کی گئی کہ ایک اچھا اسکور کیا جائے۔

’پانچ وکٹیں گرگئی ہیں لیکن کریز پر بابراعظم اور محمد رضوان موجود ہیں اور ان دونوں میں یہ صلاحیت موجود ہے کہ وہ ٹیم کا اسکور ایک اچھی پوزیشن تک لے جاسکیں۔‘

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 16565 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp