تیز رفتار کار مسجد الحرام کے دروازے سے ٹکرا گئی، ڈرائیور ’غیر معمولی حالت‘ میں گرفتار

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

سعودی عرب کے سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق ایک تیز رفتار کار مکہ میں موجود مسجد الحرام سے ٹکرائی ہے لیکن کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

سرکاری اطلاعات کے مطابق اس گاڑی میں ایک سعودی شہری سوار تھا اور یہ واقعہ جمعے کی شب 10 بج کر 30 منٹ کے قریب پیش آیا۔

واقعے کی ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ یہ گاڑی سڑک پر موجود رکاوٹ سے ٹکرائی اور اسے عبور کر گئی۔ ڈرائیور گاڑی روکنے کے بجائے اسے چلاتا رہا جب تک وہ مسجد الحرام کے جنوبی حصے میں واقع ایک باہری دروازے سے نہیں ٹکرا گیا۔

پولیس نے کار میں موجود ڈرائیور کو گرفتار کر لیا جو ان کے مطابق ’غیر معمولی حالت‘ میں تھا۔ حکام نے اس کی وضاحت نہیں کی اور نہ ہی گرفتار شخص کے متعلق مزید معلومات فراہم کی ہے۔

سعودی خبر رساں ادارے کے مطابق اس شخص کے خلاف قانونی کارروائی کا آغاز کیا جا چکا ہے۔

سرکاری چینل قرآن ٹی وی پر حادثے سے قبل اور بعد میں مسلمانوں کو خانہ کعبہ کا طواف کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔ امکان ہے کہ اس دوران اندر موجود افراد حادثے سے لاعلم رہے۔

سوشل میڈیا پر ردِ عمل

واقعے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی اور لوگ اس پر اپنی رائے کا اظہار کر رہے ہیں۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ سکیورٹی اہلکار اس کار کے ٹکرانے کے بعد اسے جائے وقوعہ سے ہٹا رہے ہیں۔

https://twitter.com/hsharifain/status/1322289951518720001

بعض صارفین نے اس حوالے سے فیک نیوز (غلط معلومات) بھی شیئر کی کہ ’گاڑی خانہ کعبہ کے صحن تک پہنچ گئی تھی‘ جبکہ ویڈیو میں یہ صاف ظاہر ہے کہ کار مسجد کے باہری دروازے سے ٹکرا کر رُک گئی ہے۔

سوشل میڈیا صارفین کی ایک بڑی تعداد کے خیال میں مکہ کی سکیورٹی اس قدر سخت ہے کہ ایسا واقعہ پیش آنا ممکن نہیں اور وہ اس ویڈیو کو جعلی قرار دے رہے ہیں۔ تشریف خان نے لکھا کہ یہ ’ناممکن ہے اور ویڈیو فیک لگ رہی ہے۔‘

تاہم سعودی خبر رساں ادارہ واقعے کی تصدیق کر چکا ہے۔

فیس بک صارف تنویر خان نے لکھا کہ ’جو کوئی بھی مسجد الحرام جاچکا ہے وہ یہ جانتا ہے کہ یہاں اندر داخلے کے لیے لوگوں کو کئی دروازوں اور سکیورٹی کی ان گنت چوکیوں سے گزرنا پڑتا ہے۔‘

مظہر آفریدی کے مطابق ’تحقیقات کے بغیر ہمیں کسی نتیجے پر نہیں پہنچنا چاہیے۔‘

کورونا وائرس کی عالمی وبا کے دوران حکام نے کچھ عرصے کے لیے مسجد الحرام میں داخلے پر پابندی عائد کر رکھی تھی لیکن بعد میں اسے کھول دیا گیا تھا اور یہاں داخل ہونے والوں کے لیے خصوصی ایس او پیز جاری کیے گئے تھے۔

سعودی عرب، مکہ، کورونا وائرس، وبا، مسجد الحرام
مسجد الحرام میں مسلمان کورونا وائرس کی حفاظتی ہدایات پر عمل کرتے ہوئے عبادت کر رہے ہیں

رواں سال جولائی میں سعودی عرب نے بیرون ملک سے آنے والے حاجیوں کی مکہ آمد پر مکمل طور پر پابندی عائد کی تھی۔ صرف سعودی عرب میں پہلے سے موجود غیر ملکی حاجیوں کو حج کا فریضہ ادا کرنے کی اجازت دی گئی تھی۔

سعودی حکام نے کورونا وائرس کی وبا کے پیش نظر صرف دس ہزار افراد کو حج ادا کرنے کی اجازت دی تھی۔

یاد رہے کہ عام طور پر ہر سال بیس لاکھ سے زیادہ افراد حج کے موقع پر سعودی عرب کے شہر مکہ میں جمع ہوتے ہیں جس کے بعد وہ مدینہ جاتے ہیں۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 16587 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp