طبی عملے کی تربیت مکمل: پاکستان میں ’اگلے ہفتے سے ویکسین لگانے کا عمل شروع ہو جائے گا‘

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

کورونا وائرس کے علاج کے لیے دوا کب تک بن جائے گی؟
Getty Images
پاکستان کے وفاقی وزیر اسد عمر نے اعلان کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں اگلے ہفتے سے کورونا ویکسین لگانے کا عمل شروع کر دیا جائے گا۔ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بات کا اعلان کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ویکسین لگانے سے متعلق مکمل تیاری کی جا چکی ہے۔

ان کے مطابق ویکسین لگانے کے لیے ملک بھر میں سینکڑوں مراکز کام کر رہے ہوں گے۔ اسد عمر نے کہا کہ خدا نے چاہا تو اگلے ہفتے سے طبی عملے کو اگلے ہفتے سے ویکسین لگنا شروع ہو جائے گی۔

واضح رہے کہ چین نے پاکستان کو کورونا وائرس کی پانچ لاکھ خوراکیں دینے کا وعدہ کیا ہے۔ یہ ویکسین چینی فرم سائنو فارم کی تیار کردہ ہے۔ خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق حکومتی ذرائع نے یہ دعویٰ کیا ہے کہ ہفتے کو پاکستان کو ویکسین کی پہلی کھیپ مل جائے گی۔

پاکستان میں گذشتہ 24 گھنٹوں میں کورونا وائرس کے 1,563 نئے متاثرین سامنے آئے ہیں جبکہ 74 افراد کی ہلاکت ہوئی ہے۔ اس وقت ملک میں کورونا وائرس کے 537,477 مریض ہیں جبکہ 11,450 ہو چکی ہیں۔

یہ بھی پڑھیے

’کورونا ویکسین کی پاکستان میں تیاری آئندہ چند ہفتوں میں شروع ہو جائے گی‘

کیا پاکستان کورونا ویکسین کی خریداری کا معاہدہ کرنے میں تاخیر کا مرتکب ہو رہا ہے؟

پاکستان میں کورونا ویکسین ٹرائل: رضاکاروں کا جنسی تعلق سے اجتناب برتنا ضروری کیوں ہے؟

خیال رہے کہ اس وقت تک پاکستان کورونا وائرس کے خلاف دو ویکسین کی منظوری دے چکا ہے، جس میں سے ایک سائنو فارم (چائنہ نیشنل فارماسوٹیکل گروپ) اور دوسری آسٹرازنیکا کی تیار کردہ ہے۔

روئٹرز کے مطابق روس کی تیارہ کردہ سپوتنک ویکسین کی بھی ایسی ہی منظوری کے امکانات موجود ہیں۔ منظوری کے اس عمل پر ہر سہہ ماہی کے بعد نظرثانی کی جائے گی، جس میں سیفٹی‘ اور اس ویکسین کی ’ایفی کیسی‘ اور کوالٹی کا جانچا جائے گا۔

وزیر اعظم پاکستان کے مشیر برائے صحت ڈاکٹر فیصل سلطان کے مطابق چین کی کاسینو بائیولوجیکس انک کے ساتھ ایک معاہدے کے بعد پاکستان دس ملین تک ویکسین کی خوراکیں حاصل کر سکے گا۔ فیصل سلطان کے مطابق کاسینو کی Ad5-nCoV ویکسین پاکستان میں اس وقت حتمی فیز تھری ٹرائل پر ہے اور اس کے فروری کے وسط تک نتائج حاصل ہو سکیں گے۔

ویکسین

BBC

پاکستان کو چین سے مزید ایک ملین ویکسین کی خوراک کے عطیے کی امید ہے۔

کورونا وائرس ٹاسک فورس کی ڈاکٹر غزنہ خالد نے روئٹرز کو بتایا کہ پاکستان مختلف ممالک سے ویکسین حاصل کرے گا۔

ان کے مطابق پاکستان کے پاس ویکسین کا ذخیرہ ہو گا، اس میں چینی ویکسین بھی ہو گی اور آسٹرا زنیکا بھی ہو گی۔ ڈاکٹر غزنہ کے مطابق ہم دنیا کا پانچواں بڑا ملک ہیں اور ویکسین کا عمل ایک بہت مشکل کام ہو گا۔

ویکسین لگانے سے متعلق تمام تیاریاں مکمل ہیں: وزارت صحت

پاکستان کے دارالحکومت اسلام آباد میں ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ڈاکٹر زعیم ضیا نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ حکومت کی طرف سے انھیں یہ ہدایات موصول ہوئیں کہ ویکسین لگانے سے متعلق تمام تیاریوں کو حتمی شکل دے دی جائے۔ ان کے مطابق ان ہدایات کے بعد طبی عملے کو ویکسین لگانے سے متعلق تربیت دے دی گئی ہے۔

ان کے مطابق اب جیسے ہی ویکسین موصول ہو گی تو پھر پہلے مرحلے صرف اسلام آباد میں 15 ہزار سے زائد رجسٹرڈ طبی عملے کو یہ ویکسین لگائی جائے گی۔

ڈاکٹر زعیم کے مطابق ملک بھر میں طبی عملے کو پہلے مرحلے میں ویکسین لگائی جائے گی جبکہ دوسرے مرحلے میں معمر افراد کو ترجیح دی جائے اور پھر تیسرے اور حتمی مرحلے میں عام افراد کو بھی ویکسین لگانے کے سلسلہ شروع کر دیا جائے گا۔

ڈاکٹر زعیم ضیا کا کہنا ہے کہ اس وقت پاکستان کا طبی عملہ تربیت یافتہ ہے اور عملے کو ویکسین کے مکمل پروٹوکولز سے متعلق بھی آگاہی دے دی گئی ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 17852 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp