کنگنا رناوت کا ٹوئٹر اکاؤنٹ معطل ہونے پر دلچسپ تبصرے: ’ٹوئٹر کی جانب سے اٹھایا گیا چھوٹا سا قدم انسانیت کے لیے بڑی چھلانگ ہے‘

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  


کنگنا

Getty Images

بالی وڈ اداکارہ کنگنا رناوت اپنے بولڈ اور متنازع بیانات کے لیے معروف بھی رہی ہیں اور اس وجہ سے ٹرول بھی ہوتی رہی ہیں لیکن گذشتہ روز ان کے کئی متنازع ٹویٹ سامنے آئے جس کے بعد اب ان کا ٹوئٹر اکاؤنٹ بند کر دیا گیا ہے۔

کنگنا کے معطل شدہ اکاؤنٹ پر یہ لکھا نظر آ رہا ہے کہ ٹوئٹر ایسے اکاؤنٹس کو معطل کر دیتا ہے جو اس کے ضابطوں کی خلاف ورزی کرتے ہیں۔‘

انڈین میڈیا کے مطابق ان کا اکاؤنٹ مغربی بنگال میں ریکارڈ ساز جیت حاصل کرنے والی ترنمول کانگریس کی رہنما ممتا بینرجی کے خلاف یکے بعد دیگرے کئی ٹویٹس کی وجہ سے معطل کیا گیا۔

بی بی سی نے اس متعلق ٹوئٹر سے رابطہ کیا ہے لیکن ابھی تک کوئی جواب موصول نہیں ہوا لیکن این ڈی ٹی وی کے مطابق ٹوئٹر کے ایک ترجمان نے بتایا ہے کہ کنگنا کے اکاؤنٹ کو پلیٹ فارم کی ’ابیوسو بیہیویئر پالیسی‘ (Abusive Behaviour Policy) کے تحت معطل کیا گیا ہے جس میں کسی کو دانستہ طور پر ہراساں کرنے یا لوگوں کو اس کے لیے اکسانا شامل ہے۔

ترجمان کے مطابق ’ہم ایسے مواد سے منع کرتے ہیں جس میں کسی فرد یا گروپ کی موت، شدید جسمانی چوٹ کی امید یا خواہشات کا اظہار کیا جائے۔‘

لیکن یہ پہلی بار نہیں جب کنگنا پر قدغن لگائی گئی ہو کیونکہ اس سے قبل جب انھوں نے ایمازون پرائم کی ویڈیو سیریز ’تانڈو‘ کے خلاف ٹویٹ کیا تھا تو ان پر بعض پابندیاں عائد کی گئی تھیں۔

یہ بھی پڑھیے

کنگنا قوم پرستی کے رتھ پر سوار سیاست میں؟

مجھے ہر چیز کے لیے لڑنا پڑتا ہے: کنگنا رناوت

کنگنا رناوت اب کس نئے تنازعے میں پڑ گئی ہیں؟

کنگنا: میں جیل جانے کی منتظر ہوں

انڈین روزنامہ ہندوستان ٹائمز کے مطابق کنگنا نے لکھا تھا کہ مذہبی جذبات کو مجروح کرنے کے لیے ’(فلم بنانے والوں کا) سر اتارنے کا وقت آ گیا ہے۔‘

ہندوستان ٹائمز کے مطابق کنگنا نے ٹوئٹر کے سی ای او جیک ڈورسی کو ٹیگ کرتے ہوئے یہ بھی لکھا تھا کہ ’میرا اکاؤنٹ اور میری ورچوئل شناخت ملک کے لیے کسی بھی وقت شہید ہو سکتی ہے۔‘

کنگنا کا نام اس وقت انڈیا میں ٹوئٹر کے ٹاپ ٹرینڈ میں شامل ہے اور اب تک 15 ہزار سے زیادہ ٹویٹس کی جا چکی ہیں۔ سوشل میڈیا صارفین پہلے تو ان کے آکسیجن والے ٹویٹ پر انھیں ٹرول کر رہے تھے لیکن اب ان کے ٹوئٹر اکاؤنٹ معطل ہونے پر میمز شیئر کر رہے ہیں۔

اداکارہ شروتی سیٹھ نے ٹوئٹر انڈیا کا شکریہ ادا کرتے ہوئے لکھا کہ ’یہ ایک اچھی علامت ہے۔‘

مہاراشٹر میں برسراقتدار جماعت شیو سینا کی رہنما اور رکن پارلیمان پرینکا چترویدی نے چاند پر قدم رکھنے کے وقت کہے گئے معروف فقرے کو اپنے انداز میں پیش کرتے ہوئے لکھا: ’ٹوئٹر کی جانب سے اٹھایا گیا چھوٹا سا قدم انسانیت کے لیے بڑی چھلانگ ہے۔‘

آلٹ نیوز کے شریک بانی محمد زبیر نے لکھا ہے کہ ’کیا ان کا ٹوئٹر اکاؤنٹ اداکارہ پایل روہتگی کی طرح مستقل بند کر دیا جائے گا یا پھر دائیں بازو والوں کی جانب سے غم و غصے کے اظہار کے بعد دوبارہ بحال کر دیا جائے گا۔‘

رؤف نامی ایک صارف نے لکھا کہ ’کنگنا کو (بجا طورپر) ٹوئٹر سے معطل کیا گیا ہے کیونکہ انھوں نے مودی جی سے کہا تھا کہ انھوں نے سنہ 2002 میں جو کیا تھا اسے دہرائیں لیکن مودی جی آج اسی 2002 کی وجہ سے وزیراعظم ہیں۔‘

ساحل شاہ نامی ایک صارف نے لکھا کہ ’بولے چوڑیاں، بولے کنگنا لیکن اب حقیقت میں نہیں۔‘

بہت سے صارفین ہرتک روشن اور کرن جوہر کی خوشیون کا بھی ذکر کر رہے ہیں۔ واضح رہے کہ ماضی میں کنگنا کا کرن اور ہرتک کے ساتھ سخت جھگڑا رہا ہے۔

بہر حال بہت سے صارفین نے کنگنا رناوت کا ٹوئٹر اکاؤنٹ معطل ہونے پر ناراضگی کا اظہار بھی کیا ہے۔

ممتا کماری نامی ایک صارف نے لکھا: ’اس ملک میں کیا ہو رہا ہے؟ ہم بی جے پی کو ووٹ نہیں کرسکتے، اگر ووٹ کریں تو ٹی ایم سی کے غنڈے والے ہماری جان لے لیں گے۔ ہم بی جے پی کی حمایت نہیں کر سکتے کیونکہ اگر حمایت کریں گے تو ٹوئٹر یوٹیوب ہمارے اکاؤنٹ بند کر دیں گے۔ ہم انڈیا میں رہ رہے ہیں یا شام میں؟’

فلم تجزیہ نگار سومت کادیل نے لکھا: ’کنگنا آپ آئرن لیڈی ہیں۔۔۔ بعض اوقات میں آپ کے خیالات اور ٹویٹ کے انداز کا حامی نہیں ہوں لیکن میں آپ کے درست مؤقف کا احترام کرتا ہوں۔ سوشل میڈیا کی جانب سے کوئی بھی دباؤ آپ کی آواز کو نہیں دبا سکتا۔‘

بہت سے صارفین کنگنا کو باہمت اداکارہ قرار دے رہے ہیں جو سچ کو واضح انداز میں پیش کرتی ہیں اور ان کے اکاؤنٹ کو دوبارہ بحال کیے جانے کی بات بھی کی جا رہی ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 18851 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp