امریکہ میں گرمی کی لہر: کیلی فورنیا اور نیواڈا کی ریاستوں میں ریکارڈ توڑ گرمی کی پیش گوئی

Sprinklers cool off a walker in North Hollywood on 28 June 2021.
Getty Images
امریکہ میں گرمی کی شدت میں انتہائی اضافے کے بعد کی مغربی ریاستوں کیلیفورنیا اور نیواڈا میں ریکارڈ درجہ حرارت کی پیش گوئی کی گئی ہے۔ چند ہفتے پہلے شمالی امریکہ میں ایک خطرناک ہیٹ ویو آچکی ہے اور اس خطے میں ریکارڈ گرم ترین جون کا گزرا ہے۔ کیلیفورنیا کی ڈیتھ ویلی میں جمعہ کو 54.4 ڈگری سینٹی گریڈ کی بلند ترین سطح ریکارڈ کی گئی، ہفتے کے آخر میں ایسی ہی گرمی برقرار رہنے کا امکان ہے۔

امریکہ میں لاکھوں افراد کو شدید گرمی کا انتباہ جاری کیا گیا ہے۔ قومی موسمی خدمات نے متاثرہ افراد کو مشورہ دیا ہے کہ وہ وافر مقدار میں پانی پییں اور ائیر کنڈیشنڈ عمارتوں میں رہیں۔جمعے کے روز ڈیتھ ویلی میں درجہ حرارت اگست 2020 میں ریکارڈ کیے گئے درجہ حرارت کے برابر تھا جس کے بارے میں لوگوں کا خیال ہے کہ یہ کرہ ارض پر ریکارڈ کیا گیا اب تک کا گرم ترین درجہ حرارت ہے۔

سنہ 1913 میں 56.7 ڈگری سینٹی گریڈ بھی ریکارڈ کیا گیا تاہم کچھ ماہرین اسے متنازع قرار دیتے ہیں۔

نیویڈا کے شمال میں، کیلیفورنیا کی سرحد کے قریب، سیرا نیواڈا کے جنگلاتی علاقے کے کچھ حصوں میں آسمانی بجلی گرنے سے جنگل کی آگ بھڑک اٹھی جہںا لوگوں کو گھروں سے منتقل کیا گیا۔

خطے میں جنگل کی آگ پر قابو پانے والے کی کوشش کرنے والے فائر فائٹرز کا کہنا ہے کہ ہوا اتنی خشک ہے کہ آگ کو روکنے کے لیے ہوائی جہاز کے ذریعہ گرایا گیا پانی کا زیادہ تر زمین تک پہنچنے سے پہلے ہی بخارات میں تبدیل ہو جاتا ہے۔

موسم کی پیش گوئی کرنے والوں کا کہنا ہے کہ لاس ویگاس میں درجہ حرارت 47.2 سینٹی گریڈ کی ریکارڈ حد بھی عبور کرسکتا ہے۔اوریگون میں فریمونٹ وینما نیشنل فارسٹ میں تیز ہواؤں سے پھیلنے والی جنگل کی آگ کے بعد انخلاء کے مزید احکامات جاری کیے گئے۔

Fire officer near Gorman. Pasadena, California

Getty Images
کیلی فورنیا میں گرمی کی شدت سے آگ بھی لگ گئی
the Oregon Convention Center in Portland

AFP
اورگان میں گرمی سے متاثرہ افراد کے لیے کولنگ سنٹر بنایا گیا ہے

آگ کیلیفورنیا کے لیے بجلی کی ترسیل کرنے والی بجلی کی تاروں کے لیے خطرہ بن رہی تھی۔ کیلیفورنیا میں پاور گرڈ آپریٹرز نے صارفین سے اپیل کی ہے کہ وہ اپنے برقی سامان کا استعمال کم کرکے بجلی بجائیں اور جب شام میں شمسی توانائی کم ہوجائے یا اب دستیاب نہ ہو تو ترموسٹیٹس کو اونچا رکھیں۔

یہ بھی پڑھیے

ڈیتھ ویلی: ‘دنیا کے گرم ترین مقام’ پر زندگی کیسی ہے؟

کینیڈا میں 486 افراد ہلاک، گرمی کی لہر مشرقی علاقوں کی طرف بڑھنے لگی

’گرم ترین سال‘ 2020 کے بعد کیا اب رواں برس گرمی مزید بڑھے گی؟

آپ پانی کے بغیر کتنی دیر تک زندہ رہ سکتے ہیں

اڈاہو میں، گورنر بریڈ لٹل نے جنگل کی آگ کی ایمرجنسی کا اعلان کیا اور ریاست کے نیشنل گارڈ کو متحرک کیا تاکہ بجلی کے باعث لگنے والی آگ سے لڑنے میں مدد ملے۔

کینیڈا بھی شدید گرمی کی لپیٹ میں ہے، غیر متوقع طور پر گذشتہ ماہ کے آخر میں وہاں درجہ حرارت انتہا تک پہنچ گئے۔ برٹش کولمبیا کے گاؤں لٹن میں درجہ حرارت 49.6 سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا تھا، یہ ملک کا سب سے زیادہ درجہ حرارت تھا۔

Castaic Lake Lagoon, California

Getty Images

ہیٹ ویو کے دوران اچانک اموات اور گرمی کے باعث ہونے والی بیماریوں کی وجہ سے ہسپتالوں جانے والے مریضوں میں اضافہ دیکھا گیا۔ماہرین کا کہنا ہے کہ موسمیاتی تبدیلیوں کے باعث امکان ہے کہ ہیٹ ویو کی طرح سے شدید موسمی صورتحال میں اضافہ ہوجائے۔ لیکن کسی بھی واقعے کو گلوبل وارمنگ سے جوڑنا پیچیدہ ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words