چین کے 38 جنگی طیاروں کی تائیوان کے دفاعی زون میں پروازیں

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

طیارے
Getty Images
فائل فونو
تائیوان نے کہا ہے کہ جمعے کے روز 38 چینی فوجی طیاروں نے اس کی دفاعی زون میں پروازیں کی ہیں، جو بیجنگ کی طرف سے اب تک کا ’سب سے بڑا حملہ‘ ہے۔

وزارت دفاع نے کہا کہ یہ طیارے، جن میں ایٹمی صلاحیت رکھنے والے بمبار طیارے بھی شامل تھے، دو مرحلوں میں تائیوان کی فضائی دفاعی شناختی زون (ADIZ) میں داخل ہوئے۔

تائیوان نے اپنے جیٹ طیاروں اور میزائل سسٹم کے ساتھ اپنا دفاع کیا۔

واضح رہے کہ چین تائیوان کو اپنا حصہ سمجھتا ہے جبکہ تائیوان خود کو ایک خود مختار ریاست سمجھتا ہے۔

تائیوان ایک سال سے زائد عرصے سے اس جزیرے کے قریب چینی فضائیہ کے مشنوں کے بارے میں شکایت کر رہا ہے۔

تائیوان کے وزیر اعظم سو سینگ چانگ نے ہفتے کے روز نامہ نگاروں کو بتایا کہ ’چین فوجی جارحیت میں علاقائی امن کو نقصان پہنچا رہا ہے۔‘

چین کی جانب سے اس بارے میں ابھی کوئی تبصرہ سامنے نہیں آیا لیکن وہ اس سے پہلے تائیوان اور امریکہ کے درمیان ’ملی بھگت‘ کو نشانہ بناتے ہوئے یہ کہہ چکا ہے کہ ایسی پروازیں اس کی خودمختاری کی حفاظت کے لیے ہیں۔

تائیوان کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ ’پیپلز لبریشن آرمی (پی ایل اے) کے 25 طیارے دن کے اوقات میں اے ڈی آئی زیڈ ( AIDZ) کے جنوب مغربی حصے میں داخل ہوئے۔‘

’اس کے بعد جمعے کی ہی شام کو پی ایل اے کے مزید 13 جہاز اسی حدود میں داخل ہوئے، جنھوں نے تائیوان اور فلپائن کے درمیان پانی پر پرواز کی۔‘

وزارت دفاع نے کہا ہے کہ چینی طیاروں میں چار H-6 بمبار بھی شامل تھے، جو ایٹمی ہتھیار کی نقل و حمل کرتے ہیں جبکہ ان کے ساتھ ہی ایک اینٹی سب میرین طیارہ بھی تھا۔

یہ بھی پڑھیے

چین اور تائیوان کی تقسیم کا اصل معاملہ کیا ہے؟

شی جن پنگ: ’تائیوان چین میں ضم ہو کر رہے گا‘

فضائی دفاعی شناختی زون کسی بھی ملک کے علاقے اور فضائی حدود سے باہر کا علاقہ ہوتا ہے لیکن یہاں آنے والے غیر ملکی طیاروں کو شناخت، نگرانی اور قومی سلامتی کے مفاد میں کنٹرول کیا جاتا ہے۔

اسے علاقے کا تعین یہ ملک خود کرتا ہے اور یہ تکنیکی طور پر بین الاقوامی فضائی حدود کہلاتی ہے۔

بیجنگ اکثر تائیوان کے تبصروں پر ناراضگی ظاہر کرنے کے لیے اس طرح کے مشن کا آغاز کرتا رہتا ہے تاہم یہ واضح نہیں کہ حالیہ مشن کی وجہ کیا ہے۔


چین اور تائیوان کے تعلقات

چین اور تائیوان کے برے تعلقات کی وجہ کیا؟

چین اور تائیوان سنہ 1940 کی دہائی میں خانہ جنگی کے دوران تقسیم ہوئے لیکن بیجنگ کا اصرار ہے کہ اگر ضرورت پڑی تو اس جزیرے کو کسی وقت طاقت کے ذریعے دوبارہ حاصل کیا جائے گا۔

تائیوان پر حکومت کیسے کی جاتی ہے؟

اس جزیرے کا اپنا آئین ہے اور جمہوری طریقے سے منتخب رہنما ہیں جبکہ اس کی مسلح افواج میں فوجیوں کی تعداد تقریباً تین لاکھ ہے۔

تائیوان کو کون سے ملک تسلیم کرتے ہیں؟

صرف چند ہی ممالک تائیوان کو تسلیم کرتے ہیں اور زیادہ تر بیجنگ میں موجود چینی حکومت کو ہی تسلیم کرتے ہیں۔ امریکہ کا تائیوان کے ساتھ کوئی باضابطہ تعلق نہیں لیکن اس کے پاس ایک قانون ہے جس کے تحت وہ اس جزیرے کو اپنے دفاع کے لیے ذرائع فراہم کرتا ہے۔



  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Facebook Comments - Accept Cookies to Enable FB Comments (See Footer).

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 21236 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments (Email address is not required)
Inline Feedbacks
View all comments