لاٹری جیت کر آدھی رقم خیرات کرنی والی خاتون جو آسائشوں پر بھاری رقم خرچ کرنا غلط سمجھتی ہیں


کونولی
PA Media
فرانس میں گیارہ کروڑ پچاس لاکھ پاونڈ کی لاٹری جیتنے خوش نصیب خاتون نے نصف سے زیادہ انعامی رقم رشتہ داروں اور مستحق افراد میں بانٹنے کے بعد کہا کہ انھیں لوگوں کی مدد کرنے کی عادت ہے۔

55 سالہ فرانسس کونولی اور ان کے شوہر پیٹرک نے ہر سال ایک مخصوص رقم خیرات کرنے پر اتفاق کر رکھا تھا لیکن اب تک وہ سنہ 2032 تک کی طے شدہ رقم سے بھی زیادہ خیرات کر چکی ہیں۔

برطانیہ کے ہارٹل پول ٹاون سے تعلق رکھنے والے جوڑے نے 2019 میں ’یورو ملینز‘ لاٹری جیتی تھی اور فوری طور پر انھوں نے دوستوں اور اہل خانہ کو نقد رقم دے دی۔

مسز کونولی نے کہا کہ دوسروں کی مدد کرنا ’آپ کو ایک سکون دیتا ہے اور یہ ایک نشہ ہے۔‘

انھوں نے کہا کہ وہ اس کی عادی ہیں۔

کونولی، جو سابق سماجی کارکن اور استاد ہیں، نے دو خیراتی فاؤنڈیشن قائم کر رکھی ہیں: ایک ان کی والدہ کیتھلین گراہم کے نام پر ان کے آبائی علاقے شمالی آئرلینڈ میں، اور دوسری PFC ٹرسٹ جو ان کے آبائی شہر میں مقامی طور پر دیکھ بھال کرنے والے نوجوانوں، بزرگوں اور پناہ گزینوں کی مدد کرتا ہے۔

ان کا اندازہ ہے کہ انھوں نے تقریبا 60 ملین پاؤنڈ دیے ہیں لیکن ان کے پاس باضابطہ کوئی حساب نہیں۔ انھوں نے مذاق کرتے ہوئے کہا کہ اگر ان کے 57 سالہ شوہر نے ایسا حساب دیکھا تو وہ پریشان ہو جائیں گے۔

لاٹری جیتنے والے فرانسس اور پیٹرک کونولی

PA Media
لاٹری جیتنے والے فرانسس اور پیٹرک کونولی

جب جوڑے نے 2019 میں جیک پاٹ جیتا تو انہوں نے دوستوں اور خاندان والوں کو بڑی مقدار میں نقد رقم دی۔

مسز کونولی کی فلاحی کاموں کی پرانی تاریخ ہے۔ انھوں نے بچپن میں سینٹ جان ایمبولینس کے ساتھ رضاکارانہ طور پر کام کیا اور بیلفاسٹ میں طالب علمی کے دوران ایڈز ہیلپ لائن قائم کی۔

اب وہ مقامی کمیونٹی گروپس کی مدد کرتی ہیں جو لوگوں کو ملازمتیں حاصل کرنے، پناہ گزینوں اور نوجوان کی دیکھ بھال کرنے والوں کی مدد کرنے، اور بوڑھے لوگوں کے لیے الیکٹرانک ٹیبلٹس فراہم کرنے میں مدد کرتے ہیں تاکہ وہ اپنے خاندانوں سے رابطہ کر سکیں۔

مسٹر کونولی اپنا پلاسٹک کا کاروبار بھی چلا رہے ہیں۔

ان دونوں کا سب سے بڑا ذاتی خرچ کاؤنٹی ڈرہم میں سات ایکڑ اراضی کے ساتھ چھ بیڈ روم کا مکان تھا، جب کہ مسٹر کونولی استعمال شدہ ایسٹن مارٹن چلاتے ہیں۔

مسز کونولی آسائشوں پر پیسہ خرچ کرنے کے خیال کو غلط سمجھتی ہیں جیسا کہ کوئی بہت قیمتی اور پر آسائش کشتی۔ انھوں نے کہا کہ کسی کے شیمپین کی بوتل پر 25,000 پاونڈ خرچ کرنے کی خبروں نے ان کو یہ سوچنے پر مجبور کیا کہ اس رقم سے کسی نوجوان کو گھر خریدنے میں مدد مل سکتی تھی۔

یہ بھی پڑھیے

ہائے ری قسمت: ‘دو کروڑ 60 لاکھ ڈالر کا لاٹری ٹکٹ پینٹ میں ’دھل‘ گئی

تیسری بار لاٹری جیتنے والا کینیڈین جوڑا

اگر آپ کی 170 ملین پاؤنڈ کی لاٹری نکلے تو آپ کیا کریں گے؟

پیٹرل کونولی

PA Media
فرانسس اور پیٹرک کونولی 30 سال قبل کاؤنٹی ڈاون کے مویرا سے ہارٹل پول منتقل ہو گئے تھے۔

پی اے نیوز کے پوچھے جانے پر کہ وہ اتنا کچھ دے کر خوش کیوں ہیں، انھوں نے کہا: ’کیوں نہ ہوں؟ میں نے ساری زندگی یہی کیا ہے۔‘

’اگر میں اتنے سالوں میں دی گئی تمام رقم واپس لوں تب بھی میں ایک کروڑ پتی ہوتی۔‘

مسز کونولی نے کہا کہ بہت زیادہ رقم جیتنا کسی شخص کی زندگی بدل سکتا ہے لیکن اس سے شخصیت میں کوئی تبدیلی نہیں آتی۔

’اگر آپ پیسہ حاصل کرنے سے پہلے بیوقوف ہیں، تو آپ بعد میں بھی بیوقوف رہیں گے۔‘

’کسی بھی لاٹری جیتنے والے کے لیے میرا ایک ہی مشورہ ہے۔ پیسہ آپ کو وہ شخص بننے میں مدد دیتا ہے جو آپ ہمیشہ سے بننا چاہتے تھے۔‘


Facebook Comments - Accept Cookies to Enable FB Comments (See Footer).

بی بی سی

بی بی سی اور 'ہم سب' کے درمیان باہمی اشتراک کے معاہدے کے تحت بی بی سی کے مضامین 'ہم سب' پر شائع کیے جاتے ہیں۔

british-broadcasting-corp has 24045 posts and counting.See all posts by british-broadcasting-corp

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments (Email address is not required)
Inline Feedbacks
View all comments