صدر ٹرمپ کا ایشیائی دسترخوان کیسا تھا اور ان کھانوں کا مطلب کیا تھا؟

ٹرمپ

EPA

جب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو امریکہ کی عمر سے بھی زیادہ پرانا سویا ساس پیش کیا گیا تو یہ خیال ذہن میں ابھرا کے ایشیائی لیڈران امریکی صدر کو دعوت طعام پر کیسا سفارتی پیغام دینا چاہ رہے تھے۔

صدر ٹرمپ کے دورہ ایشیا کے بارے میں مزید پڑھیں

’ہمیں مت آزمائیں‘، ٹرمپ کی شمالی کوریا کو تنبیہ

ٹرمپ: امریکہ مزید ’جانبدارانہ تجارت‘ برداشت نہیں کرے گا

صدر ٹرمپ کا طویل ایشیائی دورہ اور اس سے جڑی مشکلات

ابتدائیہ:

جاپانی وزیر اعظم شنزو آبے نے اس بات کو کسی سے نہیں چھپایا ہے کہ وہ صدر ٹرمپ کے قریبی ترین دوست بننا چاہتے ہیں اور اب جب امریکی صدر کو انھوں نے جاپان کے دورے میں امریکہ سے در آمد کیے ہوئے گوشت سے بنا ہیم برگر کھلایا تو اس سے پیغام صاف ظاہر تھا۔

خبروں کے مطابق امریکی صدر کو ویل ڈن سٹیکس بہت پسند ہیں اور کچی مچھلیاں سخت ناپسند ہیں۔ تو اسی مناسبت سے جاپان پہنچنے کے بعد ان کو سب سے پہلے پیش کیے جانے والے کھانوں میں سٹیکس اور چاکلیٹ آئس کریم شامل تھے۔

مین کورس:

جنوبی کوریا کے دورے میں جب امریکی صدر سیول پہنچے تو کھانے کی میز پر انھیں سیاست بھی یاد کرائی گئی۔ وہاں ان کو ڈوکڈو اور ٹاکےشایما جزائر کے قریب سے پکڑے گئے جھینگے پیش کیے گئے تھے۔ یہ وہی جزائر ہیں جن پر دونوں جاپان اور جنوبی کوریا اپنی ملکیت کا دعوی کرتے ہیں۔

یہ واضح نہیں ہے کہ صدر ٹرمپ نے وہ جھینگے کھائے یا نہیں لیکن یہ ضرور معلوم ہے کہ جاپانی اس کھانے سے خوش نہیں تھے۔

ٹرمپ

AFP
صدر ٹرمپ جاپان میں کھانا نوش کرتے ہوئے

ان کھانوں کے علاوہ صدر ٹرمپ نے اپنی پسندیدہ چیزوں کی مدد سے بھی سیاست کی جب انھوں نے امریکی اور جنوبی کوریائی فوجیوں کے ساتھ امریکی فوج کے اڈے کیمپ ہیمفریز پر ٹاکو، بریٹیو اور فرنچ فرائز کھائے اور کہا کہ یہ ‘اچھا کھانا’ ہے۔

چین کے دارالحکومت بیجنگ میں صدر ٹرمپ کو بہت پرتعیش طریقے سے خوش آمدید کیا گیا لیکن کھانے میں ان کو روایتی چینی کھانے پیش کیے گئے جن میں خاص کھانا کنگ پاؤ چکن بھی پیش کیا گیا۔

اس پر چین میں سوشل میڈیا پر یہ بحث چھڑ گئی کہ کیا سی چوان صوبے کی مخوص ڈش کنگ پاؤ چکن صدر ٹرمپ کو پیش کرنے کا مقصد یہ تھا کہ وہ صدر ٹرمپ کو دیے جانے والے چینی عرفیت ‘چوانپو’ کی یاد دلائے؟

لیکن صدر ٹرمپ کو پیش کیے جانے والے کھانوں پر لوگوں کی خیالات میں رائے متفق نہیں تھی۔ کچھ کا خیال تھا کہ انھیں محتاط انداز سے چینی کھانے سے متعارف کیا گیا جبکہ کچھ کا خیال تھا کہ یہ کھانے زیادہ پرتعیش ہو سکتے تھے۔

ٹرمپ

AFP
صدر ٹرمپ کی نواسی آرابیلا کشنر نے چینی زبان میں گانے اور نظم پڑھی

میٹھا:

چین میں مین کورس کے بعد صدر ٹرمپ کی نواسی آرابیلا کشنر کی ویڈیو نشر کی گئی جس میں انھوں نے چینی زبان میں گانے گائے۔ پانچ سالہ آرابیلا چین میں اپنی ویڈیوز کی وجہ سے بہت مقبول ہیں جہاں وہ چینی زبان میں گانے گاتی ہیں اور چینی نظمیں پڑھتی ہیں۔

اپنے دورے کے اختتام پر امریکی صدر جب ان مختلف نوعیت کے کھانے کھانے کے بعد وطن واپس جانے کے لیے اپنے طیارے پر بیٹھیں گے تو ان کے لیے ان کی من پسندیدہ ڈش موجود ہوگی۔

Comments - User is solely responsible for his/her words