جھوٹ+جھوٹ=جھوٹ

حسن نثار صاحب نے کیا خوب کہا ’’لوگ، لوگوں کے ساتھ جھوٹ بولیں، ہم وہ بدنصیب جو خود اپنے ساتھ جھوٹ بول رہے‘‘۔ کہانی یہ سنائی جا رہی تھی، میاں صاحب کا علاج نہیں کروایا جا رہا، علاج کے نام پر تضحیک کی جا رہی، جان بوجھ کر اسپتالوں میں پھرایا جا رہا، یہ ذہنی…

Read more

سابق وزیراعلی کی مراعات ، سائیں کی پھرتیاں

اِدھر بل دستخطوں کیلئے گورنر کو بھجوایا گیا، اُدھر رنگ میں بھنگ پڑ گئی، کیسے، کہانی شروع سے سنیں، 3سوا تین ہفتے پہلے اسمبلی ممبران کی تنخواہوں، الاؤنسز میں اضافے پر کام جاری تھا، ایک روز سائیں آ دھمکے، فرمایا، وزیراعلیٰ کا ریٹائرمنٹ پیکیج ہونا چاہئے، پوچھا گیا، کیا ہونا چاہئے، بولے، سوچ کر بتاتا…

Read more

کچھ گاؤں کی صبحوں نے بھی ہم کو نہ پکارا

اسلام آباد کا موسم پھر خوشگوار ،صبح بارش ،دوپہر بادلوں بھری ،شام خنکی بھری دھند، پھر سے پنڈ(گاؤں) یاد آرہا، پتا نہیں موسم خوشگوار ہو ،ڈوبتا سورج دیکھ لوں، چڑھتے سورج پر نظر پڑ جائے، پنڈ کیوں یادآئے، مٹی کی کشش، بچپن کی یادیں ،کچھ تو ہے ،دیکھوں تو پنڈ میں کچھ نہ رہا، ماں…

Read more

سیاسی قیادت: یہ سب دیکھنے سے تو بچ جاتا!

کبھی کبھی سوچوں، کہاں پھنس گئے، جعلی لوگ، جعلی باتیں، ہر رشتے میں ٹھگ بازیاں، بات بات میں ہیر پھیر، قدم قدم پر فریب، منہ پر کچھ اور، بعد میں کچھ اور، کتنا اچھا ہوتا گاؤں میں ہی رہ جاتے، اس سب سے تو بچ جاتے، 1995 ء میں اسلام آباد آئے، کوئی پوچھتا، بڑے فخر سے بتاتے اسلام آباد رہ رہے، سڑکیں، پارک، قومی اسمبلی، سینیٹ، وزیراعظم ہاؤس، ایوانِ صدر، جہاں جاتے، اچھا لگتا، قومی اسمبلی پریس گیلری میں بیٹھ کر ممبران کی تقریریں سنتے، پھولے نہ سماتے، ایک ایک لفظ سچ لگتا، خیال آتا یہ نہ ہوتے تو ملک کا کیا بنتا، سیاستدان، کھلاڑی، فنکار ہاتھ ملاتے وقت سانسیں پھول جاتیں، مجھے یاد 90 کی دہائی کے آخر میں اسلام آباد، گرد و نواح میں آئے روز فلموں کی شوٹنگز ہوا کرتیں، سارا سارا دن شوٹنگز دیکھتے، ایک بار اداکارہ ریشم گھوڑے سے گری، ساری رات نیند ہمیں نہ آئی، ریمبو، صاحبہ کو آپس میں گپیں مارتے دیکھا، کئی دن خمار میں ہم رہے، شمیم آرا کو سلام کیا، انہوں نے ہاتھ ملا لیا، بے ہوش ہوتے ہوتے بچے۔

Read more

معاملہ پونے دو ارب انسانوں کا، کچھ کر لیں، کہیں دیر نہ ہوجائے

وزیراعظم سیکرٹریٹ کا چھٹا فلور، دربا ر ہال، 35صحافی، عمران خان بولے، خراج تحسین اپنے میڈیا کو، جنگی ماحول میں امن کی بات کی، آج ملنے کی ایک وجہ یہی، شکریہ ادا کر سکوں آپ سب کا، وزیراعظم اڑھائی منٹ بولے، پھر سوال جواب شروع ہوگئے، اس بار میرے لئے کچھ حیرانیاں تھیں، جیسے عمران…

Read more

گیڈر کی سوسالہ زندگی …!

پلوامہ جھوٹ سے واہگہ بارڈر سچ تک، بالاکوٹ حملے سے بھارتی طیارے گرانے تک، ابھینندن سے شاکر اللہ تک، عمران نوبیل امن انعام ٹرینڈ سے گو مودی گو ٹرینڈ تک، بھارت ہر محاذ پر ہارا، پاکستان ہر محاذ پر جیتا، کشیدگی برقرار، خطرہ ٹلا نہیں، دو ایٹمی طاقتیں آمنے سامنے، کچھ بھی ممکن، مگر جنگ…

Read more

“Better sense should prevail”

کیا قسمت ہے پونے دو ارب انسانوں کی، انتہا پسند نریندر مودی کے رحم و کرم پر، جس کی سیاست، اٹھان، کامیابی، قتل و غارت، خون خرابہ، دنگا فساد،2014 کے انتخابات، وعدے تو تھے، سالانہ دو کروڑ ملازمتیں دوں گا، کاشتکاروں کے منافع میں 50فیصد اضافہ ہو گا، ملک سے لوٹا پیسہ واپس لاؤں گا،…

Read more

اگر اس بار …!

استادِ محترم حسن نثار نے کیا خوب کہا’’ کبھی کبھی ایک واقعہ ، سانحہ ، المیہ قوموں کی اجتماعی نفسیات تباہ کر دے ،جیسے ہیرو شیما سانحہ ،جاپانی آج بھی اسکے اثر سے نہ نکل سکے ،جیسے سقوطِ ڈھاکہ ،یہ المیہ آج بھی ہمارے شعور، لاشعور میں موجود اور جیسے اب احتساب کا عمل،اگر اس…

Read more

ہے نہ مزے کی بات!

ہے نہ مزے کی بات، 5اکتوبر 2018ء شہباز شریف گرفتار ہوئے، 14فروری2019ضمانت ہو گئی، بظاہر 132دنوں کی قید، 64دن نیب حراست میں، گو کہ اس میں بھی اسمبلی اجلاسوں میں آئے، گئے، لیکن نیب ریمانڈ ختم ہوا تو صرف 5دن کوٹ لکھپت جیل میں، باقی 63دن منسٹر کالونی کے بنگلے میں فزیو تھراپیاں ہوتی رہیں۔…

Read more

اس دور میں کہاں سے لائیں اچھی اچھی باتیں

ڈھلتی سہ پہر، اسلام آباد، کافی شاپ، دونوں ہاتھوں سے قہوے کا کپ پکڑے، دھندلے شیشوں سے باہر برستی بارش دیکھتے وزیر صاحب، میں نے پوچھا ’’تبدیلی کا سر نظر آ رہا نہ کوئی پیر، یہ بے برکتی یا نالائقی‘‘ قہوے کا گھونٹ بھر کر طنزیہ مسکراہٹ پھینکتے ہوئے وزیر صاحب بولے ’’3دہائیوں کا گند…

Read more