؛شکریہ۔ باس!

کالم کا آغاز جناب مستنصر حسین تارڑ کی ایک تحریر سے شروع کرتے ہیں۔ اکثر و بیشتر مطالعہ کے دوران کچھ تحریریں آپ کے دل میں گھر کرجاتی ہیں۔ مطالعہ کے دوران مستنصر صاحب کی ایک تحریر میں گِدھوں کو گدھے کی پیٹھ میں سوراخ کرنے اوراس کی بوٹیاں نوچنے کا منظر پڑھا۔ اور اس…

Read more

پولیس قانون کیوں اپنے ہاتھ میں لیتی ہے؟

گزشتہ چند ہفتوں سے بڑے عجیب تر واقعات سامنے آرہے ہیں۔ کبھی کسی بزرگ کی موت کی خبر، کبھی کسی جوان کی اور کبھی معصوم بچوں کی۔ افسوس کی بات یہ ہے کہ ان لوگوں کی موت طبعی نہیں۔ یہ سب جانتے ہیں کہ ان کو مارا گیا ہے۔ مرنے والے کے لواحقین اپنے عزیز…

Read more

جگجیت کور (عائشہ ) کی کہانی، امبانی، مودی اور پاکستانی میڈیا!

چند دن پہلے کا واقعہ ہے کہانی ہے ننکانہ صاحب کے محلہ بالیلہ کی جگجیت کور (عائشہ ) کی۔ معاملہ کچھ یوں ہے کہ عشق و محبت کی داستان ہے۔ جگجیت کور (عائشہ ) جس کی عمر انیس سال ہے مسلمان لڑکامحمد حسان اور جگجیت کور (عائشہ) ایک دوسرے سے محبت کرتے تھے۔ جگجیت کور نے مذہب اسلام قبول کیا اور محمد حسان سے اٹھائیس اگست کو نکاح کرلیا۔ اس کے بعد یہ خبر جنگل میں آگ کی طرح پھیل گئی۔ اور پاکستان سمیت بھارت، امریکہ، برطانیہ وغیرہ میں سکھ کمیونٹی تک جاپہنچی۔

Read more

گورنر پنجاب چوہدری سرور کے ساتھ ایک نشست !

ریاست پاکستان اور پاکستان تحریک انصاف کی حکومت کو اس وقت بہت سارے ملکی اور بین الا اقوامی چیلنجر کا سامنا ہے۔ ملکی سطح پہ بات کی جائے، تو سب سے بڑا عذاب مہنگائی کا ہے۔ سیاسی معاملات کی بات جائے، تو اس وقت ملکی قانون بھی اپوزیشن جماعتوں کے لئے سونامی بنا ہوا ہے۔…

Read more

ایک مقابلہ، تین ونر، تین لُوزر

آج کل ایک ایسا مقابلہ ہورہا ہے جس میں اگر جیت ہوئی، تو تمام فریقین جیتیں گے، ہارے تو سب ہی ہار جائیں گے۔ مقابلہ امن کی صدا کو بلند کرنے کا ہے، محاذ کابل کا ہے، جیت کا سہرا سر پہ سجانے کے لئے پاکستان، امریکہ اور افغان طالبان کوشاں ہیں۔

Read more

بابا بشیرا اور وزیراعظم عمران خان

چند دن پہلے لاہور کے ایک نواحی گاؤں میں ایک باریش آدمی سے ملاقات ہوئی۔ دوپہر کا قت تھا، درجہ حرارت پینتالیس ڈگری کو چھو رہا تھا۔ آسمان پر پرندے تک نظر نہیں آرہے تھے۔ ایسے میں  پسینے سے شرابور اور پرنم آنکھوں والا ایک بزرگ آدمی دکھائی دیا۔ جب یہ منظر دیکھا تو عجیب سی کیفیت ہوئی نہ رہا گیا اور اس بوڑھے آدمی سے ہاتھ ملایا جس کی عمر قریبا ستر سال کے لگ بھگ تھی۔

جب اُس بزرگ سے حال احوال پوچھا تو اس کا سیدھا ہی جواب تھا (کہ بیڑا غرق ہوگیا اے ایس حکومت دا) ۔ پھر پوچھا بابا جی کون ہیں آپ، کیوں پریشان ہے؟ اس بزرگ نے اپنا نام بشیر حسین بتایا اور گاؤں والے بابا بشیرا پکارتے ہیں۔ بشیر حسین کو جیسے بس تھوڑا پوچھنے کی دیر تھی اس کے اندر کا غبار باہر آنا شروع ہوگیا اور کہا کہ میں غریب آدمی ہوں بمشکل مہینے کا بارہ سے پندرہ ہزار کماتا ہوں سارا دن سائیکل پہ سبزی فروخت کرتا ہوں۔ اور گھر میں کمانے والا بھی اور کوئی نہیں۔

Read more

حضور صدائے حق بلند ہونے دیں

گزشتہ چند ہفتوں میں حکومتی ایوانوں سے، حزب اختلاف کی محفلوں سے، ججز کے احتساب، چیرمین نیب کی مبینہ رومانوی گفتگو، ویڈیو سین اور لاکھوں شہداوں اور غازیوں کی وردی کو داغدار کرنے والوں کے حوالے بہت اہم خبریں سامنے آئیں۔ حکومت نے پوسٹر بوائے سے لے کر پیرا شوٹرز تک کو تبدیل کیا اور نہ چاہتے ہوئے بھی غیروں کو گلے لگایا۔ مقصد نظام کو بہتر کرنا تھا۔ جب اسد عمر وزیر خزانہ تھے تو کہا گیا کہ یہ نالائق آدمی ہے اس کے بس کی بات نہیں۔ وہ تبدیل ہوئے تو حفیظ شیخ صاحب آئے، پھر یہ کہا گیا کہ یہ آئی ایم ایف کے ایجنٹ ہیں۔

Read more

ہنڈرڈ ملین ڈالرز ٹیکنالوجی ورسز ہنڈرڈ ڈالرز ٹیکنالوجی

آج یہاں موجودہ حکمران جدید وسائل کا رونا روتے ہیں، لیکن اس سے زیادہ بد قسمتی یہ ہے کہ اگر کہیں ٹیکنالوجی دستیاب بھی ہے، تو اس کو چلانے والے ایکسپرٹس کی کمی ہے۔ کیا پاکستان آزادی کے چند سالوں کے بعد زیادہ خوشحال تھا یا آج؟ کیا انیس سو پچاس سے ساٹھ تک یا دو ہزار سے دوہزار دس تک؟ کیا انیس سو ساٹھ سے ستر تک یا دو ہزار دس سے لے کر آج کے دن تک؟ تب تو وسائل کی بھی کمی تھی، سسٹم بھی رننگ میں نہیں تھا، پاکستان اٹامک پاور بھی نہیں تھا۔ تب تقریباً ہر ادارہ بہتری کی طرف تھا۔ آج جدید ٹیکنالوجی جدید دنیا کے مقابلے میں تونہیں، لیکن گزر بسر بہتر ہو رہی ہے۔ آج ادارے بھی ہیں۔ سربراہان بھی ہیں۔ پاکستان اٹامک پاور بھی ہیں۔ سب سے بڑی بات ملک کے وزیر اعظم بھی عمران خان ہیں، پھر خوف کے سائے کیوں ہیں؟ غربت کیوں ہے؟

Read more

آل تو جلال تو، آئی بلا کو ٹال تو

گزشتہ چند دنوں میں ہونے والی تبدیلیوں کے بعد حکومتی ٹیم میں سب گھبرائے ہوئے ہیں اور گہرے سائے کے بادل چھائے ہیں۔ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان کے بعد پارٹی کا دوسرا بڑا چہرہ سابق وزیر خزانہ اسد عمر تھا۔ عوام کو ان کے بڑے دعووں سے بہت سی امیدیں وابستہ تھیں…

Read more

بدقسمتی تو دیکھیں !

بھارت میں عام انتخابات کا مرحلہ وار آغاز ہوچکا ہے تقریباً نوے کروڑ سے زائد رجسٹرڈ وٹرز ہیں اور اکیس مئی کو عام انتخابات سات مرحلے طے کرکے مکمل ہوگا۔ تئیس مئی کو حتمی نتائج سامنے آئے گے۔ دنیا کی تاریخ میں یہ سب سے بڑا انتخاب ہوگا۔ وزیراعظم عمران خان نے بیان دیا کہ اگر بی جے پی جیت جاتی ہے تو امید ہے کہ مسئلہ کشمیر کے پرامن حوالے سے کوئی بات چیت ہوسکے۔وزیراعظم عمران خان کا بیان سرحد کے دونوں طرف اہل علم کے لیے حیران کن تھا کیونکہ بھارتی جنتاپارٹی کی ساری الیکشن کمپین پاکستان مخالف تھی۔ بھارتی وزیراعظم اپنے ہر جلسے میں یہی راگ الا پتے رہے

Read more