چاچے کے بیٹے کی شادی اور او ائی سی

دنیا پوسٹ انڈسٹریل دور میں داخل ہو چکی ہے۔ انفارمیشن ٹیکنالوجی کا دور ہے۔ سارے ممالک اپنے فیصلے اپنے مفادات اور کو دیکھ کر کرتے ہیں۔ کوئی بھی اب اپ کی خوشنودی کی خاطر خام مال بننے کے لئے تیار نہیں۔ ایک طرف اپ امن کا پیغام دینے کے لئے مودی جی کو فون کر رہے ہیں۔ مذاکر ات کے لئے بھی اپ تیار ہیں۔ او آئی سی میں شرکت نہ کرنے کا مقصد؟ وہاں سشما سوراج ہی ا رہیں تھیں۔ شرکت بھی کی تقریر بھی کی اپنا موقف بھی دیا۔شاہ محمودقریشی اپنے ٹی وی پر بیٹھ کر بھی باتیں کرتے ہیں۔ اپنا موقف دیتے ہیں مدلل بات کرتے ہیں۔ او آئی سی میں جا کر بھی اسی امن کے ہیغام کا اعادہ کرتے۔ وہی موقف ششما سوراج کے سامنے مسلم امہ کے سامنے رکھتے۔ اپ کا پیغام تو امن تھا کون اپ کو برا کہتا۔ ایک بڑے پلیٹ فارم سے اپ کی آواز زیادہ دنیا تک جاتی۔ پلیٹ فارم کی افادیت کتنی ہے الگ موضوع ہے۔ اپ کا وجود تو ہوتا وہاں۔ انڈیا کو موقع ملا اس نے ضایع نہں کیا شرکت کی۔

Read more

جنگیں ہمیشہ ہی ناگزیر کیوں رہیں؟

دورانِ جنگ انسانوں کی درجہ بندی ان کی دشمنوں کو تباہ کرنے کی اہلیت سے کی جاتی ہے جبکہ عام حالات میں انسانوں کو ان کی پیداواری صلاحیتوں سے ناپا جاتا ہے جنگیں تاریخ ِ انسانی میں ایک مستقل حثیت رکھتی ہیں مستند انسانی تاریخ تقریباً ساڑھے تین ہزار سال پر محیط ہے اس دوران…

Read more

جنسی ادویات، ضرورت یا عیاشی

کون اس بات پر متفق نہیں کہ ہمارے ملک میں باقاعدہ دو طرح کے قانون ہیں۔ خواہ ائین کی کسی کتاب میں ایسا نہیں لکھا شراب عام ادمی کے لئے حرام ہے لیکن کلبوں فائیو سٹارز ہوٹلز میں نہیں ایسے ہی جب ایلیٹ کلاس کو کچھ باقی سہولیات خود کو میسر ہوں تو عوام کا سوچنے کی فرصت کسے۔ شراب کو تو چھوڑ دیتے ہیں۔ لیکن ایک دوسرا ایشو دیکھتے ہیں۔ جو کہ نہ عیاشی ہے نہ کوئی مذہبی قدغن۔

Read more