شکر ہے عزت بچ گئی!

ایک دفعہ پھر وہی انگریز کمشنر پینڈرل مون‘ اس کی اسی برس قبل لکھی گئی کتاب Strangers in Indiaاور اس کا گورا ماتحت افسر گرین لین یاد آئے۔ بعض لوگوں کو خدا نے کتنی ذہانت دی ہوتی ہے کہ وہ اُڑتی چڑیا کے پر تک گن لیتے ہیں۔ اس گورے افسر گرین لین ہی کو…

Read more

اور میں نے خواجہ آصف کو غروب ہوتے دیکھا

قومی اسمبلی میں پیرکے روز پریس گیلری سے نیچے ہال میں جاری کارروائی دیکھ کر خیال آیا کہ اس اسمبلی کا اگر کوئی سنہری دور تھا ’جو میں نے اٹھارہ برس پارلیمنٹ کی رپورٹنگ میں دیکھا تو وہ 2002 ء سے 2007 ء تک تھا‘ جب جنرل مشرف ملک چلا رہے تھے۔ ان پانچ سالوں…

Read more

The Winter of Discontent

سردیوں کا موسم شروع ہوتے ہی ایک عجیب سی اُداسی آپ کو اپنی گرفت میں لے لیتی ہے۔ دل چاہتا ہے سارا دن دھوپ میں لیٹے رہیں کسی چارپائی پر‘ آنکھوں پر ایک ہاتھ رکھے اور دوسرا ہاتھ سر کے نیچے یا پھر ہاتھوں میں کتاب ہو‘ لتا‘ محمد رفیع کے پرانے گانے کسی ریڈیو…

Read more

ZIM

فیس بک پر شاہین قریشی صاحب کی وال پر ظفراقبال مرزا کی لاہور میں وفات کی خبر پڑھی تو ماضی کی یادوں کا ایک دریچہ کھل گیا۔ نئی نسل ان کے نام تک سے واقف نہیں ہوگی۔ سب انہیں ان کے نام کے مخفف ZIM سے جانتے تھے۔بعض لوگ آپ کو پہلی دفعہ زندگی میں…

Read more

اپنی مرضی کا ڈکٹیٹر

لگتا ہے پھر وہی دن آ گئے ہیں جو ہم تیس سال سے دیکھ رہے ہیں۔ ویسے تو آپ کہہ سکتے ہیں کہ جو کچھ اب پڑھیں گے‘ بہتّر سال سے یہی حالت ہے۔ وزیر اعظم عمران خان اس وقت غصے میں ہیں اور ان کا غصہ سمجھ میں بھی آتا ہے۔ وہ پاکستان کے…

Read more

نہ انجن کی خوبی نہ کمالِ ڈرائیور

سپریم کورٹ آف پاکستان میں آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی مدتِ ملازمت میں توسیع کے معاملے پر تین دن تک جاری رہنے والی سماعت کے دوران بہت کچھ سیکھنے اور سمجھنے کو ملا۔ اس سے زیادہ حکومت کی لیگل ٹیم‘ جس کے سربراہ اٹارنی جنرل انور منصور اور سابق وزیرقانون فروغ نسیم ہیں‘…

Read more

مہاتیر محمد جیسی جرأت کون کرے؟

اسد عمر دوبارہ وزیر بن گئے ہیں۔ اس بار منصوبہ بندی کی وزارت دی گئی ہے۔ ان کی ٹی وی پر پریس کانفرنس چل رہی تھی۔ مجھے ان کی ایک بات نے اپنی طرف متوجہ کر لیا۔ مجھے لگا یہ بات میں نے بیس سال پہلے بھی سنی تھی اور آج بھی سن رہا ہوں۔…

Read more

Those who love us

اسلام آباد کے ایچ الیون قبرستان میں ہلکی بارش اور فضا میں بڑھتی ہوئی سردی کے درمیان میں نے دور دور تک پھیلی سفید ماربل میں لپٹی قبروں کو دیکھا اور اپنے اندر دور تک تنہائی اور اداسی کو محسوس کیا۔ اگرچہ دوپہر تھی لیکن بادلوں اور بارش کی وجہ سے لگ رہا تھا جیسے…

Read more

ایک اسلام آباد شہر تھا , وہ بھی رہنے کے قابل نہیں رہا! 

محفل ارشد شریف کے گھر پر برپا تھی اور اس دفعہ دوستوں کے اس گینگ میں ہمارے محترم کالم نگار ایاز امیر شریک تھے۔ خاور گھمن‘ ضمیر حیدر‘ عدیل راجہ‘ علی‘ شاہد بھائی ... وہی پرانا گینگ اور پرانے دوست۔ ایاز امیر اب لاہور کی بجائے اسلام آباد سے دنیا ٹی وی کے پروگرام تھنک ٹینک…

Read more

بلی اور کبوتر کا کھیل شروع ہو گیا ہے

حالات بڑی تیزی سے بدل رہے ہیں۔ شاید عمران خان صاحب کو بھی اندازہ نہیں ہوگا کہ ان کے ہاتھ سے معاملات نکل سکتے ہیں۔  ابھی صحافیوں اور اینکرز سے ان کی جو آخری ملاقات ہوئی تھی اس میں وہ بڑے اعتماد سے بتا رہے تھے کہ پاکستان کی تاریخ میں پہلی دفعہ یہ ہورہا…

Read more