اردو کتابوں کے ذخیرے میں بیش بہا اضافہ

اردو کتابوں کی دنیا میں ایک کمال کا اضافہ ہوا ہے۔ بیشمار شعری مجموعوں، افسانوں، ناولوں اور سفر ناموں کے بعد سائنس اور فلسفے پر تازہ کتاب شائع ہوئی ہے۔ طلسمِ حیات کے نام سے یہ کتاب سرکردہ ریسرچ اسکالر سید شبیہ الحسن زیدی نے لکھی ہے۔ وہ خالص سائنس اور فلسفے کے آدمی ہیں۔ ان کی فکر حیات و کائنات کے گرد گھومتی ہے۔ یہ کتاب ہاتھ میں آنے سے پہلے ڈر تھا کہ اس پر دین کی چھاپ ہوگی اور سائنس کی تمام دریافتوں کے بارے میں بڑی بڑی تاویلیں پیش ہوں گی کہ دین پہلے ہی یہ سب کچھ ثابت کر چکا ہے۔

Read more

جعل سازی کے امکانات روشن ہوگئے

میری جوانی اخبار نویسی میں گزری۔ اس دوران کیسے کیسے منظر دیکھے، بیان کرنا مشکل ہے۔ ایک بات جو ہر روز سننے میں آتی تھی وہ یہ کہ لوگ ایک روز بیان جاری کرتے اور اگلے روز مُکر جاتے۔ یہ ایک معمول سا بن گیا تھا۔ اُس کے بعد جو جملہ سننے میں آتا تھا…

Read more

قدرت کا انتباہ کان کھول کر سنئے

ابھی کسی نے بتایا کہ لوگ ماچس کی ایک تیلی بچانے کے لئے گیس کا چولہا کھلا چھوڑ دیتے ہیں۔ یہ کیسا غضب ہے۔ لوگ کب سمجھیں گے کہ گیس، پانی اور بجلی ہمیشہ نہیں رہے گی۔ یہ سارے قدرتی وسائل محدود ہیں، دھیرے دھیرے ختم ہو جائیں گے۔ پانی پر تو پہلے ہی برا…

Read more

جب لوگوں نے ہاتھ ملانا چھوڑ دیے

میں وہ دن کبھی نہیں بھول سکتا جب یہاں مغرب میں ایچ آئی وی کی دہشت کی لہر آئی تھی۔ وہ بھی کیا نفسا نفسی کے دن تھے کہ لوگوں نے ہاتھ ملانا چھوڑ دیے تھے۔ بس یا ریل گاڑی میں اس طرح بیٹھتے تھے کہ بدن ایک دوسرے کے بدن چھو نہ جائیں۔ لوگ کاغذ یا پلاسٹک کے برتن اور چھری کانٹے استعمال کرنے لگے تھے کہ دوسروں کے جھوٹے برتن کے استعمال سے ایچ آئی وی اور آخر ایڈز لگ جائے گی۔ مجھے ٹیلی وژن کا وہ پروگرام یاد ہے جس میں بتایا جارہا تھا کہ آنکھ کے آنسو سے بھی ایچ آئی وی لگ سکتی ہے، لعاب دہن کا تو ذکر ہی کیا۔ انسانی تھوک سے بھی لوگوں کو خوف آنے لگا تھا۔ اس وقت عام تصور یہ تھا کہ ایچ آئی وی یا ایڈز کا کوئی علاج نہیں۔ یہ ایک بار جسم میں داخل ہو جائے تو زندگی بھر پیچھا نہیں چھوڑتے۔

Read more

جماہی آنے کا سبب معلوم ہوا

جماہی کیا ہے؟ کیا بڑا سا منہ کھولنے کا نام جماہی ہے؟ کیا یہ ہماری روزمرہ زندگی میں ہم پر اس طرح طاری ہوتی ہے کہ ہمیں احساس تک نہیں ہوتا کہ ہم جماہی لے رہے ہیں یا ہم یقین سے نہیں کہہ سکتے کہ آج ہم نے کتنی بار جماہی لی۔ بس آجاتی ہے،…

Read more

ہلاکتوں میں اتنا اضافہ کیوں ہورہا ہے

ساری زندگی خبریں ہی میرا اوڑھنا بچھونا رہی ہیں۔ جب سے میں نے پڑھنا سیکھاہے، اخبار پڑھ رہا ہوں، اخبار بنا رہا ہوں اور اخبار پڑھ کر سنا رہا ہوں۔ لیکن اس پوری عملی زندگی کے دوران میں نے ہلاکتوں کی اتنی خبریں کبھی نہیں پڑھیں جتنی آج کل پڑھنے میں آرہی ہیں۔ کتنے حادثے ہورہے ہیں، کتنی اموات ہو رہی ہیں، اب تو حساب رکھنا مشکل ہوگیا ہے۔ اس کا ایک سبب یہ ہے کہ موت ایسا موضوع ہے کہ ذہن میں یادداشت کا خانہ اس کی چھان پھٹک مسلسل کرتا رہتاہے۔ ہلاکتوں کی خبروں کا ذہن سے محو ہوجانا ایک فطری عمل ہے، یوں ہی ہوتا آیا ہے اور ہوتا رہے گا۔

Read more

باڈی لینگویج، بدن کی بولی

کیفی اعظمی باکمال شاعر تھے۔ بہت کم لوگوں کو احساس ہوگا کہ انہوں نے فلموں کے لئے بہت ہی دل کش نغمے لکھے۔ ان نغموں میں، جو اگرچہ گیت کے ڈھنگ پر لکھے جاتے تھے،لیکن کیفی صاحب نے ان میں غزل کی نفاستوں کی ایسی آمیزش کی کہ ہم ہی جانتے ہیں۔ان کے لکھے ہوئے…

Read more

ریڈیو پاکستان پر کلہاڑی چل گئی

وہی ہوا جس کا اندیشہ تھا۔ کسی عاقبت نااندیش نے ریڈیو پاکستان پر کلہاڑی چلا دی۔ سنا ہے کہ کچھ علاقائی نشرگاہیں بند کردی گئی ہیں اور اسلام آباد میں پورے ملک کے لئے ریڈیو کا جو تربیتی ادارہ ہے اُس پر بھی بھاری بھرکم قفل لگا دیا گیا ہے۔ میرا ماتھا اُسی وقت ٹھنکا…

Read more

ایسی عید کسی اور کو نصیب نہیں

ہم ابھی ایک چاند دیکھنے کے مرحلے سے گزرے ہیں کہ دوسرا چاند دیکھنے کا مرحلہ درپیش ہے۔ سال کے سال اس موقع پر عجب بات ہے کہ ایک کشیدگی کی کیفیت ہوتی ہے، مباحثے ہوتے ہیں، شہادتوں پر جھگڑے ہوتے ہیں، اوپر سے جو اختلاف سامنے آتا ہے وہ تو دل دکھاتا ہی ہے…

Read more

کتاب سے محبّت کرو

ابھی کچھ روز ہوئے دنیا نے کتاب کا دِن منایا۔ ہم نے ملک تیونس کی ایک تصویر دیکھی، یومِ کتاب کے موقع پر تعلیمی اداروں کے لڑکے لڑکیاں تیونس کی شاہراہ بو رقیبہ کے درمیانی فٹ پاتھ پر بیٹھ کر کتابیں پڑھتے ہیں۔ ذرا تصور کیجئے، یہاں سے وہاں تک، تاحدِ نگاہ جوان لڑکے لڑکیاں…

Read more