عمران فاروق کیس کے بے گناہ ملزم معظم علی کا زندہ درگور گھرانہ کیسے جشن آزادی منائے؟

چودہ اگست کی آمد آمد ہے۔ سڑکوں پہ جگہ جگہ سبزہلالی پرچم بیچنے والوں نے رونق لگارکھی ہے۔ کئی مرتبہ تو میں نے بھی سوچا کہ گھر پہ لگانے کو ایک جھنڈا خرید لوں اور ایک بیچ بھی تاکہ اپنے دل کے عین اوپر لگا سکوں۔ آج دل نے مجبور کیا کہ اپنے ارادے کو…

Read more

زنانہ کمزوری: مایوسی گناہ ہے

جب نرس نے باہر آکر بتایا مبارک ہوآپ کے لڑکی پیدا ہوئی ہے تو نرس کو باہر نکلتے دیکھ کر جو گھر والوں کے چہرے پہ مسکراہٹ آئی تھی بجھ سی گئی۔ کوئی مانے یا نا مانے کہ لڑکی کی پیدائش پہ وہ خوشی نہیں ہوتی جوایک لڑکے کی پیدائش پہ ہوتی ہے۔ اسے یوں…

Read more

کھڑکی کے شیشے پر بادل اور بارش کی تحریریں

بارش تیز ہوتی جارہی تھی۔ شیشے کی کھڑکیاں بادلوں کی گرج سے کھڑکھڑارہی تھیں۔ بوندیں شیشوں سے ٹکراٹکرا کر بہ رہی تھیں۔ وہ دبے قدموں اپنے بستر سے اٹھ کر کھڑکی کے پاس آکھڑی ہوئی۔ موسم میں خنکی تھی اپنی شال کندھے پہ لپیٹ کر اسے کچھ گرماہٹ محسوس ہوئی۔ برسات میں بوندیں شیشے سے…

Read more

نصیب کی صلیب بیٹی ہی کے لئے کیوں؟

آنگن میں شام اترتے ہی ماں لالٹین کی بتیاں اوپر کر دیتی۔ ہوا میں ہلکی ہلکی خنکی بڑھ رہی تھی۔ سردیاں دبے پاؤں آرہی تھیں۔ موسم کی تبدیلی گھر میں پہلے ہی پتا چل جاتا تھا ابا کی کھانسی جو شددت اختیار کرلیتی تھی۔ ابا جو عرف عام میں شیرو مشہور تھا اب ایک چارپائی…

Read more

یہ شہر ہے یہاں بات محبت سے آگے کی ہے

بات محبت سے بہت آگے کی تھی یہ وہ سمجھاہی نہیں۔ وہ سمجھ بھی نہیں سکتاتھا گاؤں کے ماحول میں بڑاہوا جہاں اس نے عورت زات کو صرف خاموشی سے محنت کرتے دیکھا کبھی مرد کے آگے کوئی فرمائش تودور کی بات اونچی آواز میں بولتے نہیں دیکھاتھا۔ آنگن میں بچیاں کھیلتی ہوں یاگھراور کھیتوں…

Read more

میں ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس کے ملزم معظم علی کی بیوی ہوں اور انصاف مانگتی ہوں

اکثر لوگ پوچھتے ہیں آپ حکومت کے خلاف اتنا کیوں لکھتی ہیں۔ آج کوشش کرتی ہوں کہ جواب دے سکوں۔ دو ہزار آٹھ کو اللہ پاک نے مجھ سے پورے نو ماہ کی بچی واپس لے لی۔ آپریشن سے مردہ بچی کی پیدائش بہت بڑی آزمائش تھی اور شکر اس مالک کا کہ مجھے میرے…

Read more

فحاشی کالائسنس

گھر میں ہر طرف چہل پہل تھی کوئی ہسپتال جارہاتھا تو کوئی ہسپتال سے آرہا تھا۔ بے چینی وقت کے ساتھ بڑھتی جارہی تھی اور کیوں نہ بڑھتی آخر رئیس کے گھر پانچ سال بعد پہلے ننھے مہمان کی آمد تھی۔ رئیس کی ماں بڑے چاؤ سے اپنے بیٹے کی بے چینی دیکھ رہی تھی دل ہی دل میں خوش تھی اولاد کی اولاد ہونا شاید ہے ہی خوشی کی بات۔
انتظار کی گھڑیاں ختم ہوئیں اور ایک چاند سے بیٹے کی نوید گھر آئی خوشی نے بالآخر رئیس کی کواڑ بھی کھٹکھٹادی۔ پورا گھر رئیس کی خوشی میں خوش تھا۔ وقت کا پہیہ کھومتا رہا اور رئیس کا بیٹا چھ سال کا ہوگیا۔ خوب صورت معصوم بچہ سب کی نظروں کاتارا تھا۔ اب تو وہ گلی میں بڑے بہن بھائیوں کے ساتھ کھیلنے نکل جاتا تھا۔

Read more

آخر اس طرح مارنے کی ضرورت کیوں پیش آئی

ایک حاملہ عورت ہاتھ ہلا ہلا کر زندگی کی بھیک مانگتی رہی لیکن ظالموں نے ترس نہیں کھایا اور دنیا میں آنے سے پہلے ہی اس بچے کو ماں کے ساتھ اس کی کوکھ میں ہی موت کی نیند سلادیا گیا۔ یہ واقعہ ہے اخروٹ آباد کوئٹہ کا ہے جہاں ایف سی نے ایک خودساختہ…

Read more

جی مجھے یہ رشتہ منظور ہے

لیجیے جناب ہاں تو کہ دی ہم نے رشتے کے لئے اب بتائیے شادی کرنے کے بعد کیا ماں باپ سے تعلق بالکل ختم ہوجائے گا؟
شروع میں تو الگ گھر کی آزادی بہت اچھی لگے گی۔ دل بھر کر سونے کا سسرال سے الگ رہ کر جو مزا ہے واقعی ایسا مزہ سسرال میں کہاں۔ سسرال میں توصبح صبح دروازہ پیٹا جاتا ہے کہ چلو بھئی آکر سب کے ساتھ ناشتہ کرلو۔ ابھی ہٹے نہیں ناشتے سے کہ ساس سسر کے احکامات جاری۔ اور ساس سسر کی خدمت وہ الگ۔

اب اکیلے گھر میں جو دن چڑھے اٹھنا، اٹھنے کے بعد برنچ یعنی نا ناشتہ نا دوپہر کا کھانا کا وقت ہے اس لئے برنچ کیجیے پھر اپنے گھر کی چار دیواری ہو تو کس کو فکر کام کاج کی جب چاہے کیا کیا نہیں کیا تو نہیں کیا۔ شام کو باہر گھومنے کابھی خوب ٹائم ہے جناب جہاں دل چاہے پہنچ جائیے پیچھے کون انتظار کررہا ہے واپس آتے ہوئے کھانا بھی باہر سے کھالیا۔ آزادی ہی آزادی نہ کوئی روک ٹوک نا پابندی۔

Read more

زینب میری بیٹی ہے

میں جانتی ہوں آج جس موضوع کو شامل تحریر کر رہی ہوں اس پہ لکھنا آسان نہیں۔ جس معاشرے کامیں حصہ ہوں وہ اتنا جذباتی ہوچکاہے کہ شائد ہی کچھ لوگ اس تحریر کوسمجھ پائیں۔ کبھی آپ نے جنگل میں جانورں کا اپنے بچوں کی ایسے حفاظت کرتے دیکھا ہے کہ کہیں دوسرا جانور اس…

Read more