معلوم کا دکھ

وہ مسلسل سوچے جا رہی تھی ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ خود تو لا مکاں سے مکاں کیطرف اور ہمیں نامعلوم سے معلوم کی جانب کیوں دھکیل دیا۔۔۔۔۔۔۔۔؟ ہر روز اس کی چارپائی برآمدے کے ایک ایسے کونے میں رکھ دی جاتی ' جہاں سے وہ سارا دن سورج طلوع ہونے سے غروب ہونے تک کا منظر بخوبی دیکھ…

Read more