سوتیلی بیٹی کو اغوا کر کے جنسی درندگی سے نو بچے پیدا کرنے والے باپ کو عمر قید کی سزا

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

امریکہ میں ایک لڑکی کے اپنے سوتیلے باپ کے ہاتھوں 29 برس تک جنسی درندگی کا نشانہ بننے والی 33 خاتون کی کہانی سامنے آئی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق یہ واقعہ امریکی ریاست اوکلاہوما کا ہے جہاں ہنری میشل پیٹے نامی 62 سالہ شخص نے 20 سال قبل اپنی 11 سالہ سوتیلی بیٹی کو اغوا کر کے گھر میں قید کر لیا اور اگلے بیس سال تک اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بناتا رہا اور اس سے نو بچے پیدا کر ڈالے۔ رپورٹ کے مطابق ہنری میشل پیٹے نے 1997ء میں روزالین مک گنیس نامی لڑکی کو اغواء کیا۔ اس نے اس وقت روزالین کی ماں سے شادی کر رکھی تھی لیکن کچھ عرصہ بعد خاتون کے پہلے شوہر سے پیدا ہونے والی 11 سالہ روزالین کو اغوا کر لیا۔

https://www.dailymail.co.uk/news/article-8051877/Man-held-stepdaughter-captive-fathered-9-children-sentenced-life-prison.html

ہنری روزالین کو کم ہی باہر لے جاتا تھا اور اکیلے کبھی بھی باہر نہیں جانے دیتا تھا۔ 2016ء میں وہ اسے اپنے ساتھ ایک سٹور میں لے گیا جہاں موقع پر کر روزالین نے اپنی کہانی ایک اجنبی میاں بیوی کو سنا دی۔ اس جوڑے نے گاڑی پر ہنری اور روزالین کا تعاقب کیا اور ان کا گھر دیکھ کر پولیس کو اطلاع دے دی۔ اس طرح روزالین کو 20سال کی بربریت سے نجات مل گئی۔

پولیس نے ہنری کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کر دیا جہاں سے اب اس کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے عدالت نے ہنری کو عمر قید کی سزا سنا دی ہے۔ روزالین کی عمر اس وقت 33سال ہے اور وہ میسوری میں رہائش پذیر ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *