مجھے کوئی عید مبارک نہ کہے

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  


مجھے کوئی عید مبارک نہ کہے، مجھے کسی کی طرف سے عید مبارک قبول نہیں کیونکہ یہودی کتوں نے انبیا کی سرزمین کو مقتل بنا دیا ہے، جگہ جگہ لاشیں بکھری پڑی ہیں، میرے مسلمان بہن بھائیوں کے گھر اجڑ گئے، میرے معصوم بچوں پر کتے چھوڑے جا رہے ہیں، بے بسی برس رہی ہے، انسانیت ترس رہی ہے، ہرطرف آگ اور خون کا کھیل ہے، میرے اجداد نے بھی جنگیں کی تھیں مگر بچوں، عورتوں اور بزرگوں کا احترام ہر حال میں ملحوظ خاطر رکھا تھا مگر ان یہودی کتوں کو تو جنگوں کے اصول بھی یاد نہیں۔

میرے فلسطینی بہن بھائیوں کے گھر مسمار ہو گئے، بہت سے بچے یتیم ہو گئے، بہت سے بچوں کی جان محض مسلمان کے باعث لے لی گئی، بہت سے پھول سے بچوں کے چہروں پر کتے طمانچے مار رہے ہیں، سرزمین فلسطین مسلمان حکمرانوں کی بے غیرتی پر رو رہی ہے، یہ مقتل گاہ مسلمان ملکوں کے بزدل، بے غیرت اور غلام حکمرانوں کے نوحے لکھ رہی ہے۔

یروشلم میں میرے بے بس بہن بھائی آسمان کی طرف دیکھتے ہیں تو گولے برستے ہیں، زمیں کو دیکھتے ہیں تو گولیاں اور خون نظر آتا ہے، فضا کا رخ کرتے ہیں تو بارود کی بو آتی ہے۔

ایسی زندگی سے موت ہزار ہا درجے بہتر ہے جس کی جھولی میں ذلت کے سوا کچھ نہ ہو، کچھ ایسی ہی زندگیاں مسلمان حکمرانوں کی ہیں، حیران ہوں مسلمان یہ کیوں بھول گئے کہ جینا حسین کی طرح چاہیے

دنیا بھر کے مسلمانو! ڈوب مرو، مرجاؤ کہ تمہیں کوئی خیال نہیں کہ ایک نہ ایک دن تمہیں خدا اور رسولٌ کے سامنے پیش ہونا ہے، تم کون سا چہرہ کروگے ان کے سامنے، یاد رکھو مومن کی شان بزدلی نہیں، اپنے حکمرانوں میں سے مومن تلاش کرو، بہادری مسلمان کی آبرو ہے۔

میں اپنے فلسطینی بہن بھائیوں کی آہوں، سسکیوں اور لاشوں کے درمیان کیسے عید کی مبارکباد وصول کروں؟ میں بہادروں کی اولاد میں سے ہوں، میں تو لڑوں گا، بولوں گا اور لکھوں گابھی، میں کسی یہودی کتے کے خوف سے چپ نہیں رہوں گاکیونکہ بزدلی اور غلامی سے موت ہزار درجے بہتر ہے۔ مظہر برلاس


  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

Facebook Comments - Accept Cookies to Enable FB Comments (See Footer).

Subscribe
Notify of
guest
0 Comments (Email address is not required)
Inline Feedbacks
View all comments