آٹھ مہینوں میں لاہور میں ستتر بچیوں کے ساتھ جنسی زیادتی کا انکشاف

میں طوائف کو برا کیوں سمجھوں جب تک ہمارے معاشرے میں عمران علی جیسے کرداروں کی کمی نہ ہو۔ جب تک ہمارے کوڑے کرکٹ کے ڈھیروں سے زینب جیسی کلیوں کی لاشیں تڑپتی دکھائی نہ دیں۔ جب تک ہم سے کفن میں لپٹی لاشیں محفوظ نہ ہوں۔ جب تک فریال جیسی تین سال کی معصوم بچی درندگی سے بچ نہ پائے۔ تب تک ہاں تب تک میں کوئی حق نہیں رکھتا طوائف کو برا کہنے کا۔ لوگ سوچیں گے کے یہ شخص پاگل ہو گیا ہے؛ ہاں میں پاگل ہو گیا ہوں۔ فرشتوں کی عزت پامال ہوتے دیکھ کر۔

چھوڑو زینب کو چھوڑو فریال کو یہ تو ایک عدد بچی کے بارے میں ہم جانتے ہیں۔ آئیے اب تھوڑا سا روایتی سچ بھی جان لیجیے۔ آصف چودھری کے رپورٹ کے مطابق (10 اگست 2018 ڈان نیوز)

Read more