سرینگر: ’لوگوں میں غصہ اور مایوسی ہے‘: رتول جوشی کی رپورٹ

جموں اور کشمیر کی پولیس میں بھی بے چینی کے پائے جانے کے آثار ہیں ؛ اور اس معاملے میں انتظامیہ میں بھی ڈر پایا جاتا ہے کہ کوئی بغاوت نہ ہو جائے۔ اسی لیے، انتظامیہ بہت احتیاط برت رہی ہے۔ اسی لیے ہر پولیس سٹیشن میں سیکورٹی کی اوپری تہہ ’سی آر پی ایف‘ کی ہے، جو نیم فوجی فورس ہے۔ جہاں بھی جموں و کشمیر پولیس ڈیوٹی دے رہی ہے وہاں ان کے ساتھ ’سی آر پی ایف‘ بھی موجود ہے۔ یہی حال ہمارے ہوٹل میں بھی تھا۔ دوسری جانب، جموں کشمیر پولیس کی تنخواہیں، ان کے الاؤنسز جن میں رسک الاؤنس، گھر کا کرایہ اور میڈیکل پیرا ملٹری فورسز کے برابر کر دیا جائے گا۔ یہ ان کی تنخواہوں میں خاطر خواہ اضافہ ہے اور کسی قسم کے غصے کو ختم کرنے میں معاون ہو سکتا ہے۔ اس کے کیا نتائج ہو سکتے ہیں یہ وقت ہی بتائے گا۔

Read more