میڈیا انڈسٹری کے مالکان کے نام کھلا خط

آج کئی روز کے بعد خود کو ہلکا پھلکا محسوس کررہا ہوں کہ پریس کلب کے صدر ارشد انصاری بیرون ملک سے وطن واپس پہنچ گئے ہیں۔ آج میرے کندھوں سے قائم مقامی کا بوجھ بھی اتر گیا ہے تو یہ ضروری سمجھتا ہوں کہ اپنے خیالات کا کسی رکھ رکھاؤ کے بغیر آزادی سے اظہار کرسکوں۔

میڈیا ہاؤسز سے صحافی کارکنوں کی چھانٹیوں کا سلسلہ جاری ہے۔ میڈیا مالکان سیکڑوں صحافیوں اور دیگر کارکنوں کے معاشی قتل کی وجہ مالی بحران بتا رہے ہیں، یہ بات درست ہے کہ ملک میں اقتصادی شرح نمو 5.8 فیصد سے گر کر 2.4 فیصد پر آگئی ہے، اشتہارات کے ریٹس کم ہوگئے ہیں اور مارکیٹ سکڑ گئی ہے مگر دوسری طرف مالکان کا پندرہ پندرہ ہزار روپے ماہانہ تنخواہ والے کارکنوں کو نکال کر خسارے کم کرنے کا عمل زمینی حقائق سے دور کا بھی واسطہ نہیں رکھتا۔

Read more