ماہ رمضان اور ہم سب

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

دُنیا بھر میں ماہ رمضان کی آمد کے ساتھ ہی حالات، واقعات و موضوعات بدل جاتے ہیں۔ اللہ کریم نے فرمایا، ”میرا مہینا ہے، اس میں برکت، رحمت و مغفرت ہے؛ اس مہینے میں شیطان جکڑ دیے جاتے ہیں، جنت کے دروازے کھول دیے جاتے ہیں اور دوزخ کے دروازے بند کردیے جاتے ہیں۔“

ہم بھی موضوع بدل رہے ہیں۔ جیسا کہ اوپر حوالہ دیا گیا ہے کہ شیطان جکڑ دیے جاتے ہیں تو یقینا جکڑ دیے جاتے ہوں گے لیکن کیا کچھ شیطان نہیں بھی جکڑے جاتے؟ میں نے سوشل میڈیا پر مولانا صاحب انجینئر محمد علی مرزا کی گفتگو سنی، فرما رہے تھے ”یہ مدرسے لواطت خانے ہیں“، بات عجیب تھی لیکن رات سوشل میڈیا پر سنی ہوئی تقریر صبح سچ ثابت ہوئی۔ ماہ مبارک رمضان کے پانچویں روزے کو ایک مدرسے کے مولوی نے روزے کی حالت میں اپنے ہی مدرسے کے بچے کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ اس ظلم کے باعث بچے کی حالت بگڑ گئی۔ اگر شیطان جکڑا ہوا تھا تو یہ کون سا شیطان غالب آ گیا تھا ؟

خیر میں یہ تو نہیں کہتا کہ اس کا شیطان نہیں جکڑا گیا تھا۔ ہاں! اس سماج و انسانیت دشمن نے جا کر اپنے شیطان کو خود ضرور آزاد کروایا ہوگا، کہ میرا اس کے بغیر کوئی چارہ نہیں؛ کیوں کہ ہر انسان کے ساتھ ایک شیطان کو مقرر کیا گیا۔

موضوع بدلتے ہیں۔ ماہ رمضان میں دیکھا گیا ہے کہ بہت سے لوگ نمازی بن جاتے ہیں، تو ان پر تنقید کی جاتی ہے کہ ایک ماہ کے نمازی، کوئی داڑھی بڑھا لے، تو بھی تنقید۔ کوئی لڑکی اسکارف لینا شروع کر دے، تو بھی اس کو عجیب و غریب کمنٹس سننے کو ملتے ہیں۔ کوئی روزہ رکھنے لگ جائے تو بھی تنقید، ارے بھائی اگر ایک ماہ کے لیے ان کے شیطان جکڑے گئے ہیں تو آپ کو کیا مسئلہ۔ جکڑے رہنے دیجیے۔ ہوسکتا ہے، یہی تیس دن کارگر ثابت ہوں اور اس کی زندگی بدل جائے۔ نہ بھی بدلے تو بھی ایک ماہ تو اس کو اپنے خدا سے قربت کے لمحے گزارنے دیے جائیں۔

ایک بار پھر موضوع بدلنے کی اجازت دیجیے۔ یہ ماہ رمضان کی بابرکت ساعتوں کا اثر تجارت کرنے والی غیر مسلموں پر، مسلمانوں کی نسبت زیادہ کیوں ہوتا ہے؟ آپ دیکھیں گے کہ ماہ رمضان کے  پندرہ دن گزرنے کے بعد سارے غیر مسلم برانڈز پر تو سیل لگی ہوگی لیکن ساتھ ہی پندرہ روزے گزرنے کے بعد عید منانے کے لیے پہناووں سمیت دیگر لوازمات کی قیمتیں، آسمانوں سے باتیں کرتی نظر آئیں گی۔ مرغ فروش سے لے کر چوڑیاں بیچنے والے تک، سبھی ماہ رمضان کی متبرک گھڑیوں سے کئی گنا زیادہ کماتے ہیں۔ اس سے یہ تو معلوم ہوا کہ صرف ثواب ہی زیادہ نہیں کمایا جاتا، بلکہ منافع بھی اس مہینے کئی گنا زیادہ کمایا جاتا ہے۔ میرا نہیں خیال کہ اس میں بھی شیطان کا عمل دخل ہے۔ ہاں! انسان کا کچھ کہہ نہیں سکتے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

وقار حیدر

وقارحیدر سما نیوز، اسلام آباد میں اسائمنٹ ایڈیٹر کے فرائض ادا کر رہے ہیں

waqar-haider has 32 posts and counting.See all posts by waqar-haider