غیر روایتی جنسی سرگرمی کی مدد سے قدامت پسند مردوں کو سوشلسٹ بنانے والی خاتون


روایتی طریقوں کے ساتھ ساتھ جدید دنیا میں غیر روایتی طور طریقوں سے بھی لوگوں کے سیاسی خیالات پر اثرانداز ہونے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ برطانیہ میں ایک خاتون غیر روایتی جنسی افعال کی مدد سے مردوں کے سیاسی خیالات تبدیل کر رہی ہے۔

میل آن لائن کے مطابق 27سالہ ریبا میبری نامی یہ خاتون پروفیشنل ڈومینیٹرکس (تشدد کے ذریعے جنسی تسکین حاصل کرنے والے مردوں کو اپنی خدمات فراہم کرنے والی عورت) ہونے کے ساتھ ساتھ سنٹرل سینٹ مارٹنز یونیورسٹی میں پولیٹیکل سائنس کی لیکچرر بھی ہے۔ وہ پرتشدد جنسی تعلق کے ذریعے دائیں بازو کے سفید فام مردوں کے سیاسی خیالات تبدیل کرتی اور انہیں سوشلسٹ بناتی ہے۔

ریبا میبری، جو بطور ڈومینیٹرکس مسٹریس رابیکا کے نام سے معروف ہے، کا کہنا ہے کہ وہ صرف سفید فام مردوں کو ہی خدمات فراہم کرتی ہے کیونکہ اس وقت دنیا کو سفید فام مرد ہی چلا رہے ہیں، چنانچہ ان کے سیاسی خیالات تبدیل کرنے کا مطلب عالمی سیاست کو تبدیل کرنے کے مترادف ہے۔

چنانچہ میرا ہدف دائیں بازو کے قدامت پرست سفید فام مرد ہی ہیں۔ دیگر قومیتوں کے مردوں کے ساتھ میں ایسا سلوک نہیں کر سکتی اور اس کی کئی وجوہات ہیں۔

جب میرے پاس کوئی سفید فام آتا ہے جو قدامت پسندانہ خیالات کا حامل ہوتا ہے تو میں کبھی اسے ان خیالات کے ساتھ واپس نہیں جانے دیتی۔ میں اسے سوشلسٹ بنا کر ہی واپس بھیجتی ہوں۔“

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں