2018 کا بولی وُڈ – کیا بولی وُڈ میں خانز کا عروج ختم ہونے کو ہے؟


سال 2018 میں بولی وُڈ میں 137 فلمیں ریلیز کی گئی۔ ہر سال کی طرح ان فلموں میں کچھ پر بہت پیسہ لگایا گیا اور کچھ نامل بجٹ کے ساتھ بنائی گئیں، کچھ میں بڑے اسٹارز نے اپنی اداکاری کے جوہر دکھائے اور کچھ کا حصہ درمیانے درجے کے اسٹارز تھے۔ میگا اسٹارز کی فلموں میں سلمان خان کی ریس تھری، عامر خان اور امیتابھ بچن کی ٹھگس آف ہندوستان، شاہ رخ خان کی زیرو اور اکشے کمار کی پیڈ مین شامل تھیں۔ بڑے اسٹارز کی فلموں میں رنبیر کپور کی سنجو، رنویر سنگھ کی پدماوت، اجے دیوگن کی ریڈ اور رشی کپور کی مُلک شامل تھیں۔ چھوٹے بجٹ کے ساتھ درمیانے درجے کے اسٹارز کی فلموں میں آیاشومان کھرانہ کی بدھائی ہو اور اندھا دھن، نوازالدین صدیقی کی منٹو اور راجکمار راؤ کی فنے خان شامل ہیں۔ ان تمام فلموں میں کچھ فلمیں بہت زیادہ توقعات کے باوجود فلاپ ہوئیں اور کچھ توقعات کے برعکس ہٹ ہو گئیں۔

اگر بزنس کے حساب سے دیکھا جائے تو سال 2018 کی سب سے کامیاب فلم رنبیر کپور کی فلم ”سنجو“ رہی۔ راج کمار ییرانی کی ہدایت کاری میں بننے والی اس فلم میں رنبیر کپور نے ادکار سنے دت کا کردار بہت ہی عمدہ طریقے سے نبھایا اس فلم نے باکس آفس پر 586 کروڑ کا بزنس کیا۔ دوسرے نمبر پر سجے لیلا بھنسالی کی ہدایت کاری میں بننے والی فلم ”پدماوت“ رہی۔ جس نے 585 کروڑ کا بزنس کیا۔ اس فلم میں ادا کار رنویر سنگھ نے برِصغیر کے حکمران علاوالدین خلِجی کا کردار بہت عمدہ طریقے سے نبھایا۔

ان کے ساتھ فلم میں اداکارہ دیپیکا پڈوکون نے رانی پدماوتی کا کردار ادا کیا۔ اس فلم کی ریلیز میں اس کے خلاف احتجاج کی وجہ سے تاخیر بھی ہوئی۔ تیسرے نمبر پر سلمان خان اور انیل کپور کی ”ریس تھری“ رہی۔ جس نے 303 کروڑ کا بزنس کیا۔ یہ یش راج فلمز کی ریس سیریز کا تیسرا حصہ تھی۔ باقی کچھ فلمیں جنھوں نے اچھا بزنس کیا ان میں رانی مکھرجی کی گلم ”ہچکی“، آشومان کھرانہ کی ”بدھائی ہو“ اور اکشے کمار کی فلم ”پیڈمین“ شامل ہیں۔ ان سب فلموں نے دو سو کروڑ سے زیادہ بزنس کیا۔ ان کی خاص بات یہ تھی کہ ان پر پیسہ بہت کم لگایا گیا اور ان کے موضوع بہت اچھوتے تھے۔

سال 2018 میں بولی وُڈ کے تینوں خانز، عامر خان، شاہ رُخ خان اور سلمان خان کی فلمیں ریلیز ہوئی، مگر حیرت کی بات یہ تھی کہ ہمیشہ کی طرح بہت زیادہ توقعات ہونے کے باوجود تینوں کی فلمیں ہی کامیاب نہ ہو سکیں۔ گو کہ سلمان خان کی فلم ”ریس تھری“ نے تین سو کروڑ کا بزنس کیا، مگر سب سے زیادہ بزنس کرنے والی فلموں ”سنجو“ اور ”پدماوت“ سے یہ آدھا بزنس تھا۔ اسی طرح عامر خان کی فلم ”ٹھگس آف ہندوستان“ جس میں ان کے ساتھ امیتابھ بچن بھی تھے، بہت زیادہ پیسہ اور بھرپور کاسٹ کے باوجود بھی کامیاب نہیں ہو سکی۔

یہی حال شاہ رخ کی ”زیرو“ کا ہوا۔ جس سے لوگوں کو کافی توقعات تھی۔ کیونکہ اس میں شاہ رُخ نے ایک بونے انسان کا کردار ادا کیا۔ عام طور پر سب خانز کی فلمیں بہت کامیاب ہوتی ہیں۔ اور سال 2018 میں تو تینوں کی اکٹھی فلمیں ریلیز ہوئیں مگر اس کے باوجود بھی کامیاب نہ ہو سکیں جس سے یہ ظاہر ہوتا ہے شاید اب بولی وُڈ میں خانز کا راج ختم ہونے کو ہے۔

اب اگر سب سے زیادہ بزنس کرنے والی فلموں کی بات کریں تو یہ بات سامنے آتی ہے دونوں فلموں ”سنجو“ اور ”پدماوت“ میں جو باتیں مشترک تھیں وہ مضبوط اسکرپٹ اور عمدہ ہدایت کاری تھیں۔ کیونکہ اداکاروں سے کام لینے والا ہی کامیاب ہدایت کار ہوتا ہے اور راج کمار ہیرانی اور سنجے لیلا بھنسالی، دونوں ہی اس میں کامیاب رہے۔ جس سے دونوں فلموں کی کامیابی یقینی ہو گئی۔ تینوں خانز کی فلمیں فلاپ ہونے کی وجہ بھی کمزور اسکرپٹ اور سطحی ہدایتکاری تھی۔

اسی طرح ”بدھائی ہو“، ”ہچکی“، پیڈ مین ”، اندھا دھن“ اور ”منٹو“ جیسی فلمیں بھی اس وجہ سے کامیاب ہوئی کیونکہ ان کے موضوعات اچھوُتے تھے جس کی وجہ سے نہ صرف ان فلموں نے بزنس اچھا کیا بلکہ فلمی نقاد کی طرف سے بھی ان کو بہت پذیرائی ملی۔ اس سب سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ اب لوگوں کی سوچ بولی وُڈ کی فلموں کے حوالے سے بدل رہی ہے۔ اب لوگ سٹارڈم، رومانس اور ایکشن سے آگے سوچ رہے ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ عامر خان، سلمان خان اور شاہ رخ خان کے سٹارڈم، کے سامنے رنبیر کپور، رنویر سنگھ، آیاشومان کھرانہ، راج کمار راؤ اور نوازالدین صدیقی کی اداکاری زیادہ کامیاب ہو رہی ہے۔ اگر دیکھا جائے تو یہ ایک بہت اچھی تبدیلی ہے جس سے تخلیقی سوچ کو بڑھاوا ملے گا۔ اب اگر خانز نے بھی کامیاب ہونا ہے تو ان کو بھی کمرشلزم سے آگے نکل کر تخلیقی سوچ اپنانی ہو گی ورنہ وہ فلم انڈسٹری سے ہمیشہ کے لیے آوٹ ہو جائیں گے۔

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words


اگر آپ یہ سمجھتے ہیں کہ ”ہم سب“ ایک مثبت سوچ کو فروغ دے کر ایک بہتر پاکستان کی تشکیل میں مدد دے رہا ہے تو ہمارا ساتھ دیں۔ سپورٹ کے لئے اس لنک پر کلک کریں