میرے فیصلوں پر عمل ہوتا تو پنجاب میں دوتہائی اکثریت ملتی: گورنر پنجاب چوہدری سرور

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کہتے ہیں کہ میرے فیصلوں پر عمل کیا جاتا تو پنجاب میں پاکستان تحریک انصاف کو دو تہائی اکثریت ملتی۔

لاہور میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے گورنر پنجاب چوہدری سرور نے کہاکہ وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار، اسپیکرپنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الٰہی اور وزیر اعظم عمران خان سے اختلافات کی خبروں میں کوئی صداقت نہیں، جو لوگ سمجھ رہے ہیں کہ میں استعفیٰ دے رہا ہوں وہ سن لیں کہ اب میدان سے بھاگا نہیں جا سکتا، کابینہ یا انتظامی تبدیلیوں اور ردوبدل سے کسی کو کسی قسم کی تشویش نہیں ہونی چاہیے۔

گورنر پنجاب نے بیرون ملک جمع کیے گئے فنڈز آب پاک اتھارٹی کو دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ جب تک گورنر ہوں سرور فاؤنڈیشن کی فنڈنگ میں شرکت نہیں کروں گا، میرے لیے ہر فلاحی ادارہ اتنا ہی اہم ہے جتنا میرا ادارہ ہے، حلف لینے کے بعد کہا تھا کہ پاکستان کو کچھ دینے کے لیے آیا ہوں، 2013ء میں گورنر بنا تو کسی نے مفادات میں ٹکراؤ کا واویلا نہیں کیا،اب گورنر بنا ہوں تو مفادات کے ٹکراؤ کا شور کیا جا رہا ہے۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ ہم نے 4 سال محنت کی، لوگوں سے وعدے کیے، اب ان وعدوں کو پورا کرنے کا وقت ہے۔ میں سرور فاؤنڈیشن کا اب چیئرمین بھی نہیں رہوں گا۔ میرے اختلافات کی خبریں دینے سے اخبار زیادہ بکتا ہے یا ٹی وی شو زیادہ چلتا ہے تو کرتے رہیں، پنجاب کو 100 فیصد وزیراعلیٰ عثمان بزدار چلا رہے ہیں۔ کوئی یہ سمجھتا ہے کہ عثمان بزدار کی طاقت شہباز شریف سے کم ہے تو وہ اُس کی بھول ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •