کیا سنی لیونی اپنی بیٹیوں کو فحش فلموں میں کام کرنے کی اجازت دیں گی؟

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

بالی ووڈ اداکارہ سنی لیونی کا کہنا ہے کہ انہوں نے فحش فلموں میں آنے کا فیصلہ اس لیے کیا کیونکہ اس وقت یہ ان کے لئے بہترین تھا۔ اداکارہ نے کہا کہ اگر ان کی بیٹیاں بھی فحش فلموں میں کام کرنا چاہیں گی تو وہ اس بارے میں تذبذب کا شکار ہیں۔

سنی لیونی نے ارباز خان کے پروگرام ’پنچ‘ میں شرکت کی ، اس پروگرام میں اداکاروں سے سوشل میڈیا پر کیے جانے والے سوالات یا ٹرولنگ کے حوالے سے گفتگو کی جاتی ہے۔ سنی لیونی کے بارے میں ایک ٹوئٹر صارف نے لکھا تھا کہ ’ سنی لیونی کو پتا تھا کہ فحش فلموں پر پابندی لگنے والی ہے اس لیے انہوں نے یہ کام چھوڑ کر بالی ووڈ میں انٹری دے دی‘ ۔ صارف کی اس بات پر سنی لیونی نے کہا کہ لوگ اپنی زندگی میں ایسے فیصلے کرتے ہیں جو ان کے لئے اس وقت بہترین ہوتے ہیں اور انہوں نے بھی اپنی زندگی میں وہی فیصلے کیے جو اس وقت ان کے لئے اچھے تھے ۔

’ اصل سوال یہ ہے کہ کیا مجھ میں بہتری آئی تو اس کا جواب ہاں ہے، کیا میں اپنی زندگی میں آگے بڑھ چکی ہوں تو اس کا جواب بھی ہاں میں ہے‘۔ انہوں نے اس طرح کے سوالات اٹھانے والے لوگوں کے بارے میں کہا کہ یہ وہ لوگ ہیں جو میری فحش فلموں کو بار بار دیکھتے ہیں لیکن پھر کہتے ہیں کہ مجھے ایسا نہیں کرنا چاہیے تھا۔ فحش فلموں میں کام کرنے والوں کے مقابلے میں ان لوگوں کی تعداد کہیں زیادہ ہے جو یہ فلمیں دیکھ کر ہمیں سٹار بناتی ہے۔

جب اداکارہ سے یہ سوال پوچھا گیا کہ کیا وہ اپنی بیٹیوں کو فحش فلموں میں کام کرنے کی اجازت دیں گی تو اس پر سنی لیونی نے کہاکہ ان کی بیٹیاں چاہیں تو ان کا کاسمیٹکس یا پرفیوم کا کاروبار سنبھال سکتی ہیں۔ ’میں اپنی بیٹیوں کو اچھا انسان بناﺅں گی، وہ انٹرٹینمنٹ انڈسٹری میں جا سکتی ہیں، وکیل، ڈاکٹر یا سیاستدان بن سکتی ہیں لیکن اگر وہ فحش فلموں میں کام کرنا چاہیں تو میں اس بارے میں تذبذب کا شکار ہوں‘۔

image_pdfimage_print
Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •