وزیر اعظم کے مشیر رزاق داؤد  کی کمپنیوں کو فائدہ دیا جا رہا ہے: محمد مالک

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  

سینئر صحافی محمد مالک نے انکشاف کیا ہے کہ حکومت اپنے پاور پرچیزنگ ایگریمنٹ میں آئی پی پیز کے ساتھ ترمیم کرنے جا رہی ہے اب حسن اتفاق یہ ہے کہ اس میں کچھ آئی پی پیز ہیں جن کا جھگڑا چل رہا ہے اور اس میں دو کمپنیاں بھی سامنے آئی ہیں جن کے نام روش پاور لیمیٹڈ اور آلٹن انرجی لیمیٹڈ ہے۔

نجی ٹی وی کے پروگرام میں خصوصی گفتگو کرتے ہوئے محمد مالک نے بتایا کہ سی پی پی ان دو کمپنیوں کی خاطر اپنی پالیسی تبدیل کرنے جا رہی ہے جس میں وزیر اعظم کے اہم مشیر شراکت دار ہیں۔ روش پاور 3 سو میگا واٹ کا پراجیکٹ ہے، ان کا جھگڑا چل رہا تھا، یہ پہلے گیس پر تھے۔ پھر ان کی گیس کی سپلائی واجبات ادا نہ کرنے پر سوئی گیس نے کاٹ دی۔ یہ کیس چلتا رہا اور اس میں کچھ اور کمپنیاں بھی شامل ہو گئیں تاہم اب کنٹریکٹ میں ترمیم کرنے جارہے ہیں۔ اس کمپنی میں ڈیسکون انجینئرنگ کے 58 فیصد حصص ہیں اور ڈیسکون پی ٹی آئی کے مشیر تجار ت رزاق داﺅد کی ملکیت ہے ۔

محمد مالک کا کہنا تھا کہ دوسری کمپنی آلٹن انرجی پاکستان ہے جسے فائدہ دینے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ 2017 کے ریکارڈ مطابق مشیر تجارت رزاق داﺅد اس کمپنی کے چیئرمین اور تیمور داود اس کے چیف ایگزیکٹو تھے۔ محمد مالک کے مطابق یہ سارے فیصلے سی پی پی کی کابینہ کمیٹی کرنے جا رہی ہے، اس کے سربراہ مشیر تجارت ہیں جبکہ اس میں ندیم بابر بھی خصوصی دعوت پر جاتے ہیں ۔

سینئر صحافی کا کہناتھا کہ کچھ ہفتے پہلے ان کے کنٹریکٹ میں بھی ترمیم کی گئی اور پالیسی تبدیل کرتے ہوئے انہیں گیس سے ایل این جی پر منتقل کر دیا گیا۔ جس کا مطلب ہے کہ حکومت پر اب یہ لازم ہو گا کہ ان سے بجلی خریدیں۔ انہوں نے مزید انکشاف کیا کہ نئی پالیسی سے دیگر کمپنیاں بھی مستفید ہوں گی۔ ان کا کہنا تھا کہ اس حکومت کے مشیر ناقابل یقین طور پر اپنے مفادات حاصل کر رہے ہیں۔ سینئر صحافی نے کہا لگ رہا ہے کہ وزیراعظم کے خاص مشیر تو ترقی کر رہے ہیں لیکن ملک کی معیشت تباہ ہو رہی ہے۔

Comments - User is solely responsible for his/her words

  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •  
  •